0

اسلام آباد ہائی کورٹ،نوازشریف نے اضافی دستاویزات کیلئے اجازت مانگ لی

Spread the love

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن) سابق وزیر اعظم نواز شریف نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں اضافی دستاویزات جمع کرانے کی اجازت طلب کرنے کی متفرق درخواست میں انکشاف کیا ہے کہ سپرنٹنڈنٹ جیل لاہور کی جانب سے جمع کرائی گئی دستاویزات مکمل نہیں۔

پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے تین رکنی میڈیکل بورڈ کی جانب نواز شریف کی ایکو کارڈیا گرافی کے بعد تین بڑے ہسپتالوں کے کلینیکل الیکٹرو فزیولاجسٹ اورسینئر کارڈیالوجسٹس پر مشتمل لارجر سپیشل میڈکل بورڈ بنانے کی سفارش کی جسے عدالت میں پیش ہی نہیں کیا گیا

سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنے وکیل خواجہ حارث کے ذریعے العزیزیہ سٹیل ملز ریفرنس میں سزا معطلی کی درخواست کیساتھ اضافی دستاویزات جمع کرانے کیلئے اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کر لیا ۔

متفرق درخواست میں کہا گیا سپرنٹنڈنٹ جیل لاہور کی جانب سے میڈیکل بورڈ کی رپورٹس سمیت 9 مختلف دستاویزات جمع کرائی گئیں جس میں اہم دستاویز شامل نہیں۔

درخواست کے مطابق 23جنوری کو پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی نے نواز شریف کے طبی معائنے کے بعد سفارشات جاری کیں۔

نواز شریف کی ایکوکارڈیوگرافی سمیت متعدد ٹیسٹ کے بعد لارجر سپیشل میڈیکل بورڈ بنانے کی تجویز دی گئی۔

اے ایف آئی سی، آر آئی سی اور پی آئی سی کے کلینکل الیکٹروفزیولاجسٹ اورسینئر کارڈیالوجسٹس پر مشتمل لارجر سپیشل میڈکل بورڈ بنانے کی سفارش کی گئی۔

میڈیکل بورڈ کی جانب سے دی گئی اس تجویز اور سفارش کو عدالت میں پیش ہی نہیں کیا گیا ، ہمیں متعلقہ دستاویز پیش کرنے کی اجازت دی جائے۔

آج طبی بنیادوں پر سزا معطلی کیس کی سماعت جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل ڈویڑن بنچ کرے گا گزشتہ سماعت میں عدالت نے جناح ہسپتال کی میڈیکل رپورٹ طلب کی تھی ۔

Leave a Reply