islamabad

اسلام آباد فضائی آلودگی گڑھ، صحت کیلئے خطرناک، پاک ای پی اے کی تصدیق

Spread the love

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن پاکستان نیوز) اسلام آباد فضائی آلودگی

وفاقی دارالحکومت کی فضاء صحت کیلئے انتہائی خطرناک ہو گئی، پاک ای پی

اے کی ماہانہ رپورٹ نے تصدیق کردی، حالیہ تحقیقی رپورٹ میں فضائی آلودگی

سے مرد و خواتین میں بانجھ پن کاخطرہ 20 فیصد بڑھنے کا انکشاف ہوا ہے۔فضاء

میں زہریلے ذرات کی مقدار خطرناک حد تک بڑھ گئی جو کسی صورت

35ug/m3 سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے، زہریلے ذرات PM2.5 کی مقدرمقررہ

حد سے تجاوز سانس کی بیماریاں، پھیپھڑوں کا کینسر اور ہارٹ اٹیک بھی ہو

سکتا ہے۔ یہ زیریلے ذرات گاڑیوں اورفیکٹریوں میں فوصل فیول کے جلنے سے

خارج ہوتے ہیں۔

==-== یہ بھی پڑھیں : لاہور آلودہ ترین شہر،اے کیو آئی لیول 516 سے تجاوز

پیر کو پاک ای پی اے نے فضائی آلودگی کی ماہانہ رپورٹ جاری کی۔ وفاقی

دارالحکومت اسلام آباد کی فضاء میں آلودہ زرات PM2.5 کی مقدار مقررہ حد

سے تجاوزکر گئی ہے مقررحد 35ug/m3 ہے جبکہ پورے ماہ ان کی مقدار

50.32ug/m3 تک اوسط بتائی گئی ہے، فروری میں زیادہ سے زیادہ سرکاری

رپورٹ کے مطابق اوسط 79ug/m3 تک گئی۔ حالیہ پیکنگ یونیورسٹی کے سینٹر

فار پروڈکٹیو میڈیسین کی معروف جریدے جرنل انوائرمینٹل انٹرنیشنل میں شائع

ہونیوالی تحقیق کے مطابق فضائی آلودگی سے مردوں اورخواتین دونوں میں بانجھ

پن کا خطرہ نمایاں حد تک بڑھ جاتا ہے- طبی تحقیق کے دوران فضائی آلودگی

سے آبادی کیلئے بڑھنے والے خطرات کا تجزیہ کیا گیا۔

==-== مرد وخواتین میں بانجھ پن کا خطرہ بڑھ گیا
—————————————————————-

ماہرین نے چین کے 18 ہزار جوڑوں کے اعداد و شمار کا تجزیہ کرنے پر دریافت

ہوا ایسے علاقے جہاں چھوٹے ذرات کی آلودگی کی شرح زیادہ ہو تو ان علاقوں

میں بانجھ پن کا خطرہ 20 فیصد تک بڑھ جاتا ہے- تحقیق میں یہ تعین نہیں کیا جا

سکا کہ فضائی آلودگی کس طرح بانجھ پن کاباعث بن سکتی ہے مگر یہ پہلے سے

معلوم ہے کہ آلودہ ذرات سے جسم میں ورم بڑھ جاتا ہے جس سےمردوں اور

خواتین کا تولیدی نظام متاثر ہوسکتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق بانجھ پن دنیا بھر

میں لاکھوں جوڑوں کی زندگی کو متاثرکرتا ہے مگر اس حوالے سے فضائی

آلودگی کے اثرات پر اب تک کچھ خاص کام نہیں ہوا ہے۔

==-== شہری باہر نکلتے وقت ماسک لازمی پہنیں، طبی ماہرین

فضائی آلودگی سے قبل از وقت پیدائش اور پیدائش کے قت کم وزن جیسے مسائل

کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔ ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ زہریلی ذرات PM2.5

کی مقداراگر 35ug/m3 سے بڑھ جائے تویہ انسانی صحت کیلیے انتہائی نقصان

دہ ہوتے ہیں اس سے سانس کی بیماریوں میں اضافہ ہوتا ہے اور خاص کردمہ کے

مریضوں کو سانس لینے میں دشواری ہوتی ہے، آنکھ ناک اورگلے میں سوزش،

پھیپھڑوں کا کینسر، دل کی دھڑکن کی بے ترتیبی اورہارٹ اٹیک بھی ہوسکتا ہے۔

ماہرین نے ہدایت کی ہے کہ شہری گھروں سے باہرنکلتے وقت ماسک لازمی

استعمال کریں۔

اسلام آباد فضائی آلودگی

=—–= قارئین =-: خبر اچھی لگے تو شیئر کریں، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
=—–=ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )

Leave a Reply