اسرائیلی بمباری، مزید 24 فلسطینی شہید، اسلامی یونیورسٹی، متعدد عمارتیں تباہ

اسرائیلی بمباری، مزید 24 فلسطینی شہید، اسلامی یونیورسٹی، متعدد عمارتیں تباہ

Spread the love

غزہ (جے ٹی این آن لائن انیٹرنیشنل نیوز) اسرائیلی بمباری فلسطینی شہید

غزہ پر اسرائیلی بمباری جاری ہے، جس کے نتیجے میں مزید 24 فلسطینی شہید

ہو گئے، جبکہ اسرائیلی وزیراعظم نے پوری طاقت سے حملے جاری رکھنے کا

بھی اعلان کیا ہے۔ غزہ پر صیہونی فورسز کی بمباری سے ہر طرف تباہی کے

مناظر ہیں، اسلامی یونیورسٹی سمیت متعدد عمارتیں کھنڈرات میں تبدیل ہو چکی

ہیں۔ صیہونی فورسز کے حملوں میں خواتین اور بچوں سمیت فلسطینی شہید ہوتے

جا رہے ہیں۔

=-= دنیا بھر سے مزید تازہ تریں خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

اسرائیل کی مسلسل آٹھویں روز بمباری سے فلسطین کے مہاجر کیمپ میں موجود

ایک ہی خاندان کے دس افراد شہید ہو گئے۔ یتیم خانہ بھی دھماکے سے تباہ ہو گیا۔

ہسپتال زخمیوں سے بھر گئے ہیں۔ طبی سہولیات کا فقدان ہے۔ فلسطینی وزارت

صحت نے مسلسل ہونیوالی بمباری کی وجہ سے شہادتوں میں اضافے کے خدشے

کا اظہار کیا ہے۔ غزہ کے رفاہ بارڈر سے کئی شدید زخمیوں کو مصر منتقل کیا گیا

جن میں بچے بھی شامل ہیں۔ سرحدی ذرائع کے مطابق تین بسوں کے ذریعے 263

فلسطینی غزہ چھوڑ گئے۔ اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ غزہ پٹی میں جاری اسرائیلی

فضائی حملوں کے سبب 38 ہزار سے زائد فلسطینی گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہو

چکے ہیں۔ ان میں سے اڑھائی ہزار ایسے افراد ہیں، جن کے مکانات صہیونی

فضائی کارروائیوں میں تباہ ہو گئے۔ اقوام متحدہ کے ادارہ برائے فلسطینی مہاجرین

کے مطابق یہ افراد 48 سکولوں میں پناہ لیے ہوئے ہیں۔ غزہ پٹی میں بجلی کی

ترسیل کو چھ سے آٹھ گھنٹے روزانہ تک محدود کیا جا چکا ہے۔ اسرائیلی حملوں

میں غزہ میں 41 تعلیمی مراکز کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

فلسطینی وزیرخارجہ نے بچوں سے متعلق اقوام متحدہ کے مندوب کو خط لکھ دیا

ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ بچوں کیخلاف اسرائیل کے جنگی جرائم کو

روکے، فلسطینی بچوں کے پاس پناہ کیلئے کوئی جگہ نہیں۔ دوسری طرف غزہ

میں نہتے فلسطینیوں پر جاری اسرائیلی وحشیانہ بمباری کے باعث بڑھتے ہوئے

عالمی اور ڈیموکریٹک ارکان کے دباؤ کے بعد امریکی صدر جو بائیدن نے

اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کو ٹیلی فون کال میں غزہ میں جنگ بندی کی حمایت

کرتے ہوئے کہا امریکا مصر اور دیگر ممالک کیساتھ مل کر کشیدگی کم کرنے

اور جنگ بندی کروانے پر کام کر رہا ہے۔ وائٹ ہاؤس کی جانب سے جاری بیان

میں امریکی صدر نے جنگ بندی کی حمایت ضرور کی تاہم اسرائیل کیخلاف

سخت زبان استعمال کرنے سے نہ صرف گریز کیا گیا بلکہ اسرائیل کو فوری طور

پر جنگ بندی کیلئے بھی نہیں کہا گیا۔

=-.-= عالمی برادری اسرائیل فلسطین کشیدگی ختم کرائے، ولادیمیر پوتن

روسی صدر ولادیمیر پوتن نے ان بڑھتی ہوئی آوازوں میں اپنی آواز شامل کرتے

ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ اسرائیل اور فلسطین تنازع میں جاری کشیدگی اور پر تشدد

واقعات کو فوراً روکا جائے جن کے بارے میں انہوں نے کہا انہی واقعات کی وجہ

سے بڑی تعداد میں پر امن افراد کی جانیں گئی ہیں جن میں کئی بچے بھی شامل

ہیں، اقوام متحدہ، امریکہ اور برطانیہ سمیت بین الاقوامی برادری نے اسرائیلی

حملوں کے بعد پھنسے شہریوں کی زندگیاں بچانے کے لئے مزید اقدامات اٹھانے

کا مطالبہ کیا ہے۔غزہ میں ملبے کے نیچے سے بچوں کی نکالنے کی تصاویر کے

ساتھ ساتھ اسرائیل میں شہریوں کی محفوظ پناہ گاہ کے لیے بھاگتے ہوئے تصاویر

پر عالمی برادری نے ردعمل کا اظہار کیا، غزہ میں اسرائیلی حملوں سے اسلامی

یونیورسٹی تباہ ہو گئی، یونیورسٹی کی خلیل بلڈنگ ملبے کا ڈھیر بن گئی ہے۔

اسرائیلی بمباری فلسطینی شہید

Leave a Reply