Imran Khan Prim minister Pakistan 290

اداروں میں تصادم نہیں چاہتے،افواج پاکستان نے ملک کو پرامن بنانے کے لئے لازوال قربانیاں دیں، عمران خان

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ادارے اپنے آئینی اور قانونی دائرہ

اختیار میں رہتے ہوئے فرائض سرانجام دیں۔ اداروں کے درمیان کسی قسم کا تصادم پاکستان کے مفاد

میں نہیں حکومت اداروں میں تصادم نہیں چاہتی۔وزیراعظم عمران خان کے زیر صدارت پاکستان

تحریک انصاف کی کور کمیٹی کے اجلاس میں سابق صدر پرویز مشرف کیس سے متعلق عدالتی

فیصلے کا جائزہ لیا گیا جبکہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے معاملے پر بھی مشاورت

کی گئی۔کور کمیٹی اجلاس میں اداروں کے درمیان ہم آہنگی بڑھانے کے لئے کردار ادا کرنے اور

آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق لائحہ عمل پر مزید مشاورت کا فیصلہ کیا گیا۔اس

موقع پر اجلاس سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اداروں کے درمیان کسی قسم کا

تصادم پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے۔ حکومت قانون اور آئین کی بالادستی پر یقین رکھتی ہے۔ ادارے

اپنے آئینی اور قانونی دائرہ اختیار میں رہتے ہوئے فرائض سرانجام دیں۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا

تھا کہ حکومت آئینی اور قانونی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں معاونت کو یقینی بنائے گی۔ افواج پاکستان

نے ملک کو پرامن بنانے کے لئے لازوال قربانیاں دیں۔ بیرونی قوتیں پاکستان کو کمزور کرنے کے

لئے جن سازشوں میں مصروف ہیں، ان میں انھیں ناکامی ہوگی۔ ہمیں اتحاد اور یکجہتی سے قومی

مسائل کو حل کرنا ہوگا۔کور کمیٹی اجلاس کے دوران وزیراعظم عمران خان نے پارٹی رہنماؤں اور

وزرا کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ وہ خصوصی عدالت اور سپریم کورٹ کے فیصلوں پر بیانات

نہ دیں۔ کور کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وزیراعظم کی معاون خصوصی

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ انصاف کی فراہمی یقینی بنانا ہمارے منشور کا اہم جزو ہے،پاکستان

کے ادارے ریاست کا ستون ہیں،ریاست کا مفاد ہر حال میں مقدم ہے، قانون و آئین کے ساتھ کھڑے

ہونگے،عدالتی فیصلوں پر قانونی ٹیم مزید مشاورت کرکے قیادت و کابینہ کو آگاہ کرے گی،وزیراعظم

کے دورہ ملائشیا کے حوالے سے کچھ غلط معلومات میڈیا کی زینت بنے رہے،وزیراعظم نے ملائشیا

دورہ منسوخ کرنے کی وجوہات کور کمیٹی کو بتائیں،وزیراعظم نے پارلیمانی کمیٹی کو الیکشن کمیشن

کے مسلئے کو حل کرنے کے لیے ٹاسک سونپا ہے، مریم نواز کی بیرون ملک جانے کی خواہش کو

قانون کے مطابق دیکھا جائے گا،حکومت ذیلی کمیٹی کی سفارشات کے مطابق فیصلہ کرے گی

،خواہشات اور ارمانوں میں جکڑے قانون کو آزاد کریں گے۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ

کور کمیٹی کو سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف فیصلے پر قانونی ٹیم نے بریفنگ دی۔ انہوںنے

کہاکہ وزیراعظم نے کہا کہ انصاف کی فراہمی یقینی بنانا ہمارے منشور کا اہم جزو ہے،ہر خاص و

عام کے لیے یکساں قانون کی عملداری کو یقینی بنانا ہے۔ انہوںنے کہاکہ قانونی ٹیم نے مشرف کیس

کے فیصلے میں موجود قانونی سقم سے کور کمیٹی کو آگاہ کیا۔ انہوںنے کہاکہ وزیراعظم نے کہا

کہ پاکستان کے ادارے ریاست کا ستون ہیں،ریاست کا مفاد ہر حال میں مقدم ہے، قانون و آئین کے ساتھ

کھڑے ہونگے،عدالتی فیصلوں پر قانونی ٹیم مزید مشاورت کرکے قیادت و کابینہ کو آگاہ کرے گی ۔

انہوںنے کہاکہ وزیراعظم کے دورہ ملائشیا کے حوالے سے کچھ غلط معلومات میڈیا کی زینت بنی

رہیں،وزیراعظم نے ملائشیا دورہ منسوخ کرنے کی وجوہات کور کمیٹی کو بتائیں ،او آئی سی کے

پلیٹ فارم سے 57 مسلم ممالک جڑے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان امت مسلمہ کو یکجا کرنے کا کردار

ادا کرنا چاہتا ہے۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان کسی ایک ملک کے ساتھ نہیں بلکہ پوری امہ کے مفاد کے

ساتھ کھڑا ہوگا،پاکستان مسئلہ کا حصہ بننے کے بجائے مسلئے کا حل نکالنے کا کردار ادا کرنا چاہتے

ہیں،اس سے پہلے ملائشیا میں ہونے والی چار کانفرنس میں پاکستان مدعو نہیں تھا۔ انہوں نے کہاکہ

پاکستان تمام مسلمان بھائیوں کو اکھٹا کرنے میں کلیدی کردار ادا کرے گا،الیکشن کمیشن کا معاملہ

مسلسل تاخیر کا شکار ہورہا ہے،وزیراعظم نے پارلیمانی کمیٹی کو الیکشن کمیشن کے مسلئے کو حل

کرنے کے لیے ٹاسک سونپا ہے۔انہوںنے کہاکہ ریگولیٹر کی تعیناتی کسی کی خواہش پر نہیں ہونی

چاہیے،دو جماعتوں کا مل بیٹھ کر الیکشن کمشنر لگانا غیر منصفانہ ہے۔ انہوںنے کہاکہ افراد سے زیادہ

ادارہ اہم ہونا چاہیے،انصاف لائرز ونگ کو فعال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ،جہاں جہاں لاء آفیسرز کی

آسامیاں خالی ہیں وہاں تعیناتیاں کی جائیںگی۔ انہوںنے کہاکہ چیف آرگنائزر نے پارٹی کی تنظیم سازی

سے متعلق آگاہ کیا۔ انہوںنے کہاکہ مریم نواز کی بیرون ملک روانگی کی درخواست پر بھی کور کمیٹی

میں بات ہوئی،وزیراعظم اور کور کمیٹی نے کہا ہے قانون سے بالاتر اور مقدس گائے کوئی نہیں۔

انہوںنے کہاکہ مریم نواز کی بیرون ملک جانے کی خواہش کو قانون کے مطابق دیکھا جائے

گا،حکومت ذیلی کمیٹی کی سفارشات کے مطابق فیصلہ کرے گی ،خواہشات اور ارمانوں میں جکڑے

قانون کو آزاد کریں گے، کور کمیٹی بھارت کی جانب سے سٹیزن ایکٹ میں ترمیم کے مکروہ عمل کی

مذمت کی۔ انہوںنے کہاکہ وزیراعظم نے ہندوستان حکومت کا بھیانک چہرہ دنیا کے سامنے رکھا ۔

انہوںنے کہاکہ انتہا پسندی کی سوچ کو ریاست کے لبادے میں چھپا کر اقلیتوں کو ٹھکانے لگانے کی

سازش کو بے نقاب کیا۔ انہوںنے کہاکہ کور کمیٹی نے کشمیر کے مسلئے پر وزیراعظم کی کاوشوں کو

خراج تحسین پیش کیا ،وزیراعلی پنجاب نے دل کے ہسپتال پر حملے سے متعلق پیش رفت سے آگاہ

کیا۔وزیراعظم نے کہا ہے کہ کسانوں کو مناسب قیمتیں اور مارکیٹ تک رسائی بہتر بنانی ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کسان ڈے پر

چھوٹے کسانوں کی پیداوار میں اضافے کے عزم کا اعادہ کرتے ہیں، ہم صحت انصاف کارڈز تک

رسائی کو یقینی بنا رہے ہیں، احساس پروگرام کے تحت تعلیمی وظائف یقینی بنائیں گے۔

Leave a Reply