parliament 0

انتخابی اتحادیوں کے اعتراضات دور، پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس کل ہو گا

Spread the love

اتحادیوں کے اعتراضات دور

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے کہاہے کہ

الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے حوالے سے تمام اتحادی جماعتوں کے اعتراضات دور کر دیے ہیں،وزیر

اعظم سے ملاقات میں اتحادیوں کی لیڈرشپ کے اعتراضات کو تفصیل سے سنا گیا اور ان کو دور کیا

گیا ہے، بدھ کو پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس ہوگا،جس میں انتخابی اصلاحات کے بل پیش کیے جائیں

گے، تمام اتحادی حکومت کے پیچھے کھڑے ہیں،عدلیہ پر حملہ کرنا، ججوں پر الزامات لگانا، ویڈیوز

بنانا ن لیگ کی تاریخ رہی ہے،چیف جسٹس صاحب کے سوموٹو کا خیرمقدم کرتے ہیں، شاہد خاقان

عباسی اور خواجہ آصف نے سوموٹو نوٹس لینے کے بعد پریس کانفرنس کی اور پھر عدالتوں کو

سکینڈل بنانے کی کوشش کی،اسلام آباد ہائی کورٹ کو ان دونوں حضرات کو بھی اپنے سوموٹو نوٹس

میں بلانا چاہئے۔پیر کو اسلام آباد میں وزیرداخلہ شیخ رشید احمد اور وزیراعظم معاون خصوصی

شہبازگل کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ کا مشترکہ

اجلاس بدھ کو طلب کر لیا گیا۔فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ حکومت کی اتحادی جماعتوں عوامی مسلم

لیگ، جی ڈی اے، ایم کیو ایم، ق لیگ اور بلوچستان عوامی پارٹی کی قیادت کی وزیراعظم سے

ملاقات ابھی تھوڑی دیر قبل ختم ہوئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ اتحادیوں کی لیڈرشپ کے اعتراضات کو

تفصیل سے سنا گیا اور ان کو دور کیا گیا ہے۔فواد چوہدری نے بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ

تمام اتحادیوں نے پی ٹی آئی اور عمران خان کی قیادت پر اعتماد کا اظہار کیا ہے۔فواد چوہدری کا کہنا

تھا کہ اجلاس میں بدھ کو پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس طلب کر لیا گیا ہے۔ان کے مطابق انتخابی

اصلاحات کے بل پیش کیے جائیں گے، تمام اتحادی حکومت کے پیچھے کھڑے ہیں۔وزیراعظم نے

خود تمام پارٹیوں کی جانب سے کیے گئے سوالات کے جواب دیے، تمام اتحادی جماعتیں حکومت کے

ساتھ کھڑی ہیں۔فواد چوہدری نے سابق چیف جسٹس ثاقب نثار پر نواز شریف کو جیل میں رکھنے کی

ہدایت پر مبنی رپورٹ کو الزام قرار دیتے ہوئے کہا کہ عدلیہ پر حملہ کرنا، ججوں پر الزامات لگانا،

ویڈیوز بنانا ن لیگ کی تاریخ رہی ہے،کتنا مضحکہ خیز شگوفہ ہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان میرے

پاس آئے، ہم چائے پی رہے تھے، اچانک چیف جسٹس کو خیال آیا انہوں نے فون اٹھایا کہ فلاں جج کو

فون کردیں، میڈیا میں ایڈیٹوریل چیک ہونا بہت ضروری ہے، اس طرح کوئی خبر بڑے اخبار میں

بغیر ایڈیٹوریل نہیں لگ سکتی، اخبار نے یہ چیک کرنا مناسب نہیں سمجھا کہ جس جج کا نام لے

رہے ہیں وہ جج بینچ میں ہی شامل ہی نہیں ہے، بدقسمتی سے کسی جج کا نام لے کر اتنی بڑی ہیڈ

لائن لگا کر غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کیا گیا، چیف جسٹس صاحب کے سوموٹو کا خیرمقدم کرتے

ہیں،ن لیگ کے شاہد خاقان عباسی اور خواجہ آصف نے سوموٹو نوٹس لینے کے بعد پریس کانفرنس

کی اور پھر عدالتوں کو سکینڈل بنانے کی کوشش کی،اسلام آباد ہائی کورٹ کو ان دونوں حضرات کو

بھی اپنے سوموٹو نوٹس میں بلانا چاہئے، جب جج صاحبان نے نوٹس لے لیا تھا تو ان کا کام نہیں بنتا

کہ وہ اس پر پریس کانفرنس کرتے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن عدالتوں پر

اثرانداز ہونے کے حوالے سے اپنی تاریخ رکھتی ہے۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت حکومتی

رہنماؤں کا اجلاس ہوا، اجلاس میں گلگت بلتستان کے سابق جج کے بیان حلفی کے معاملے پر غور کیا

گیا، مشیر برائے داخلہ شہزاد اکبر اور بیرسٹر علی ظفر نے معاملے پر قانونی نکات کی بریفنگ دی۔

مشیر برائے داخلہ مشیر شہزاد اکبر نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ بظاہر لگتا ہے کہ اس پلان کے

پیچھے مسلم لیگ ن ہے، بیان حلفی کا مقصد مسلم لیگ ن کے قائدین کے خلاف کیسز کو متنازع بنانا

ہے۔بیرسٹر طفر علی نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ عدالتی کارروائی پر اثرانداز ہونے پر توہین

عدالت بنتی ہے۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مسلم لیگ ن عدالتوں پر اثرانداز ہونے

کے حوالے سے اپنی تاریخ رکھتی ہے، مسلم لیگ ن نے ہمیشہ رہاستی اداروں پر حملہ کیا۔ سیاسی

مافیا اپنے کیسز سے بچنے کے لیے کسی بھی حد تک جا سکتا ہے۔وزیراعظم عمران خان سے

پاکستان میں قطر کے سفیر شیخ سعود عبدالرحمن نے ملاقات کی۔تفصیلات کے مطابق قطر کے سفیر

نے وزیراعظم عمران خان کو قطر کی قیادت کی طرف سے نیک خواہشات کا پیغام پہنچایا۔وزیراعظم

عمران خان نے جواباً خیرسگالی جذبات کا اظہار کرتے ہوئے قطر کے ساتھ دوطرفہ تعلقات کو

مستحکم بنانے کیلئے پاکستان کی خواہش کا اعادہ کیا۔

اتحادیوں کے اعتراضات دور

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply