PPP- APC-20-09-20

پیپلز پارٹی کی اے پی سی، وزیراعظم مستعفی ہوں، پاکستان ڈیموکریٹک الائنس بنانے کا فیصلہ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اسلام آباد ( جے ٹی این آن لائن سٹاف رپورٹر) آل پارٹیز کانفرنس فیصلہ

پاکستان پیپلز پارٹی کی میزبانی میں ہوئی ملک کی تمام اپوزیشن جماعتوں کی آل

پارٹیز کانفرنس ( اے پی سی ) میں حکومت کیخلاف ملک گیر تحریک چلانے کا

فیصلہ کرتے ہوئے وزیرعظم عمران سے فوری استعفے اور نئے انتخابات کا

مطالبہ کر دیا گیا- آل پارٹیز کانفرنس میں 26 نکاتی مشترکہ اعلامیہ منظور کیا

گیا، اے پی سی میں ’ آل پاکستان ڈیموکریٹک الائنس ‘ کے نام سے نیا اتحاد قائم

کرنے کا فیصلہ کیا گیا-

… حکومت کو جنوری تک مہلت، اکتوبر میں تحریک چلانے کا فیصلہ

پاکستان تحریک انصاف حکومت مخالف تحریک کے تحت اکتوبر میں احتجاج اور

عوامی ریلیاں نکالی جائیں گی۔ دسمبر میں حکومت مخالف احتجاج اور جنوری

2021 میں اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ، حکومت کے نئے انتخابات نہ کرانے

پر دھرنا یا مارچ شروع کیا جائیگا جبکہ تحریک عدم اعتماد کا آپشن بھی ضرورت

پڑنے پراستعمال کیا جائیگا۔ اسمبلیوں سے مستعفی ہونا بھی آپشنز میں شامل ہے

جبکہ ٹروتھ کمیشن قائم کیا جائیگا جو 1947ء سے آج تک پاکستان کی تاریخ

پرحقائق سامنے لائے گا۔

… ’ میثاق پاکستان ‘ کی تیاری کیلئے کمیٹی بنا دی گئی

آل پارٹیز کانفرنس میں اپوزیشن جماعتوں نے ’ میثاق پاکستان ‘ کی تیاری کیلئے

کمیٹی بنا دی گئی، میثاق پاکستان ’ میثاق جمہوریت ‘ کی طرز پر ہو گا۔ اے پی

سی کے بعد سربراہ جمعیت علماء اسلام مولانا فضل الرحمان نے شہباز شریف

اور بلاول بھٹو زرداری سمیت دیگر رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کی۔ جس

میں مولانا فضل الرحمان نے مشترکہ اعلامیہ پیش کیا- مولانا فضل الرحمان نے

مزید کہا سلیکٹڈ حکومت کی تبدیلی کیلئے اپوزیشن پارلیمان کے اندر اور باہر تمام

جمہوری، سیاسی اور آئینی آپشنز استعمال کریگی-

… ہمارا مقصد حکومت گرانا نہیں، جمہوریت بحال، پاکستان بچانا ہے، زرداری

قبل ازیں اے پی سی سے خطاب میں پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین

سابق صدر آ صف علی زرداری نے کہا ہم صرف حکومت گرانے کیلئے نہیں

ملک بچانے جمہوریت بحال کرنے آئے ہیں، ہم نے کوشش کی دو سال میں

جمہوریت بچے، ناسمجھ سیاسی بونے سمجھتے ہیں وہ زیادہ ہوشیار ہیں، میں

سمجھتا ہوں اس تقریر کے بعد جیل جانیوالا پہلا بندہ میں ہی ہوں گا۔

یہ بھی پڑھیں: اپوزیشن کی بڑی بیٹھک، بڑا اعلان، وزراء معاونین بھی متحرک
———————————————————————————–

سابق وزیراعظم نواز شریف کی صحت کیلئے دعا کرنے کیساتھ کہا میرے خیال

میں یہ اے پی سی بہت پہلے ہونی چاہیے تھی۔ جب سے ہم سیاست میں ہیں

میڈیا پر اس طرح کی پابندیاں نہیں دیکھیں،حکومت اے پی سی کیخلاف ہتھکنڈے

استعمال کر رہی ہے یہی ہماری کامیابی ہے۔

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
————————————————————————————–

شہید بینظیر بھٹو نے نواز شریف کیساتھ مل کر میثاق جمہوریت پر دستخط کیے

اور پھر ہم آہنگی کے ذریعے مشرف کو بھیجا، 18 ویں ترمیم کے گرد ایک دیوار

ہے جس سے کوئی بھی آئین کو میلی آنکھ سے نہیں دیکھ سکتا۔ ہم نے پاکستان

بچانا ہے اور ہم ضرور جیتیں گے۔ مریم بی بی کو تکلیفیں برداشت کرنے پر سلام

کرتا ہوں، ہم آپکے ساتھ ہیں۔

… ہمارا مقابلہ عمران سے نہیں انکو لانے والوں سے ہے، نواز شریف

سابق وزیراعظم، قائد مسلم لیگ ( ن ) نواز شریف نے اے پی سی سے ویڈیولنک

خطاب میں کہا جو بھی انتخابات میں دھاندلی کے ذمہ دار ہیں ان سب کو حساب

دینا ہو گا، ہمارا مقابلہ عمران خان سے نہیں، ہماری جدوجہد عمران خان کو

لانیوالوں کیخلاف ہے، جنہوں نے اس طرح الیکشن چوری کر کے نااہل بندے کو

اس جگہ لا کر بٹھایا، عوام کے حق حکمرانی کو تسلیم نہ کرنے اور متوازی

حکومت کا مرض ہی ہماری مشکلات اور مسائل کی اصل جڑ ہے، ہمارے دفاع

کی مضبوطی اور قومی سلامتی کیلئے سب سے اہم یہ ہے کہ ہماری مسلح

افواج آئین پاکستان ‘ اپنے دستوری حلف اور قائد اعظمٌ کی تلقین کے مطابق خود

کو سیاست سے دور رکھیں اور عوام کے حق حکمرانی میں مداخلت نہ کریں-

… نیب اندھے حکومتی انتقام کا آلہ کار بن چکا ہے، قائد ن لیگ

نواز شریف نے کہا خارجہ پالیسی بنانے کا اختیار عوامی نمائندوں کے پاس ہونا

چاہئے، بھارت نے ایک غیر نمائندہ، غیر مقبول اور کٹھ پتلی پاکستانی حکومت دیکھ

کر کشمیر کو اپنا حصہ بنا لیا اور ہم احتجاج بھی نہ کر سکے، شاہ محمود

قریشی نے کس منصوبے کے تحت وہ بیانات دیئے جن سے ہمارے بہترین

دوست سعودی عرب کی دل شکنی ہوئی، خارجہ پالیسی کو بچوں کا کھیل بنا کر

رکھ دیا گیا ہے، وقت آگیا ہے تمام سوالوں کے جواب لئے جائیں، نیب اندھے

حکومتی انتقام کا آلہ کار بن چکا ہے، اس ادارے کا چیئرمین جاوید اقبال اپنے

عہدے اور اختیارات کا نازیبا اور مذموم استعمال کرتے ہوئے پکڑا جاتا ہے ،مگر

نہ تو کوئی انکوائری ہوئی اور نہ ایکشن لیا جاتا ہے، بہت جلد ان سب کا یوم

حساب آئے گا- ( آل پارٹیز کانفرنس فیصلہ )

… عوام کے حقوق پر ڈاکہ ڈالنا سنگین جرم، کیا کسی نے سوچا ؟

اے پی سی جو بھی حکمت عملی ترتیب دے گی ( ن ) لیگ اس کا بھرپور ساتھ

دے گی۔ پاکستان کی خوشحالی اور اسے صحیح معنوں میں ایک جمہوری

ریاست بنانے کیلئے ضروری ہے ہم ہر طرح کی مصلحت چھوڑ کر اپنی تاریخ

پر نظر ڈالیں اور بے باک فیصلے کریں۔ مولانا فضل الرحمن کی سوچ سے متفق

ہوں کہ رسمی طریقوں سے ہٹ کر اس کانفرنس کو بامقصد بنانا ہوگا ورنہ قوم

کو مایوسی ہوگی۔ بدقسمتی سے پاکستان کو اس طرح کے تجربات کی لیبارٹری

بنا کر رکھ دیا گیا ہے۔ آئین پر عمل کرنیوالے ابھی تک کٹہروں میں کھڑے ہیں

صرف ایک ڈکٹیٹر پر مقدمہ چلا اسے آئین و قانون کے تحت سزا سنائی گئی لیکن

کیا ہوا۔ یہاں یا تو مارشل لاء ہوتا ہے یا جمہوری حکومت میں متوازی حکومت

قائم ہو جاتی ہے۔ عوام کے حقوق پر ڈاکہ ڈالنا کتنا سنگین جرم ہے کیا کسی نے

سوچا ہے۔ ( آل پارٹیز کانفرنس فیصلہ )

… ملک میں اب صرف نام کی جمہوریت ہے، شہباز شریف

صدر مسلم لیگ ( ن ) شہباز شریف نے اے پی سی سے خطا ب میں کہا کہ یہ

کہنا غلط نہ ہو گا ملک میں جمہوریت صرف نام کی ہے، موجودہ حکومت کی

جانب سے قرضے لینے کے باوجود مہنگائی نے غریب کی کمر توڑ دی، ڈالر

کی قدر میں اضافہ ہورہا ہے جبکہ کووڈ 19 آنے سے پہلے پاکستانی معیشت

تباہ ہو گئی تھی، شوگر سکینڈل میں نیب اور ایف آئی اے کہیں نظر نہیں آ رہی

کیونکہ دونوں ادارے صرف اپوزیشن کیخلاف فعال ہیں۔ عمران خان نے کہا تھا

مر جائیں گے آئی ایم ایف کے پاس نہیں جائیں گے لیکن گئے. انتخابات میں

دھندلی بے نقاب کرنے کیلئے ہاؤس کی کمیٹی بنائی گئی لیکن آج تک اس کمیٹی

نے ایک انچ بھی کام نہیں کیا-

… ہمیں نئے میثاق پاکستان کو اپنا منشور بنا کر نکلنا ہو گا، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے اے پی سی سےخطاب میں کہا

ہمیں نئے میثاق جمہوریت کو اپنا منشور بنا کر نکلنا ہو گا، اس ملک میں اگر

جمہوریت نہیں ہو گی تو عوام کے حقوق پر ڈاکہ ڈالا جائے گا، ہمیں مطالبہ

کرنا ہو گا کہ انتخابات میں ایک جیسے مواقع دینا ہوں گے، ہمیں اپنے ایوانوں کو

آزاد کروانا پڑے گا اور اگر ہم یہ نہ کر سکے تو پھر ہم اپنی عوام کو کیسے

یقین دلائیں گے کہ ہم انہیں اس مصیبت سے نجات دلائیں گے۔ جب جمہوریت

نہیں ہوتی تو معاشرے کو ہر طرف سے کمزور کیا جاتا ہے، آج عوام ہماری

طرف دیکھ رہی ہے۔ ہم چاہتے ہیں ایک نیا میثاق جمہوریت ہو اور اس کو اپنا

منشور بنا کر نکلنا ہو گا۔

… اب زیانی نہیں بلکہ تحریری بات کرنی ہوگی، مولانا فضل الرحمن

جمعیت علماء اسلام ( ف ) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے آل پارٹیز

کانفرنس سے اپنے خطاب میں اسمبلیوں سے استعفے اور سندھ اسمبلی کو فوری

طور پر تحلیل کرنے کی تجویز دی اورکہا ہمیں فیصلہ کرنا ہوگا کہ ہم اسمبلیوں

سے مستعفی ہوں گے۔ وزیراعظم، اسمبلیاں اور سینیٹ چیئرمین سب جعلی ہیں-

ہمیں اب زیانی نہیں بلکہ تحریری بات کرنی ہوگی۔

آل پارٹیز کانفرنس فیصلہ

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply