آزاد کشمیر، 3 ہزار اساتذہ کا آئندہ الیکشن میں حکومتی جماعت کےمحاسبے کا فیصلہ

آزاد کشمیر، 3 ہزار اساتذہ کا آئندہ الیکشن میں حکومتی جماعت کےمحاسبے کا فیصلہ

Spread the love

مظفرآباد (جے ٹی این آن لائن ایجوکیشن نیوز) آزاد کشمیر اساتذہ فیصلہ

آزاد کشمیر کے 3 ہزار اساتذہ نے حکومت پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے

آئندہ الیکشن میں انفرادی و اجتماعی سطح پر مسلم لیگ (ن) کے بجائے دیگر

جماعتوں کی حمایت کا فیصلہ جبکہ وزیر ہائیر ایجوکیشن پر الزامات کی بھرمار

کر دی- اساتذہ کا کہنا ہے وزیراعظم راجہ فاروق حیدر کے نوٹس میں متعدد بار

لایا کہ وزیر ہائیر ایجوکیشن کے ملازم کش اقدامات کا نوٹس لیں، اب حکومت

کیخلاف ووٹ ڈالنے کے سوا ہمارے پاس کوئی چارہ نہیں-

=-= یہ بھی پڑھیں: آزاد کشمیر میں اساتذہ کی قلم چھوڑ ہڑتال، تدریسی بائیکاٹ

جمعہ کو کالج ٹیچرز ایسوسی ایشن کے اجلاس سے خطاب میں مقررین پروفیسر

اشتیاق مصطفی، راجہ سردار طاہر، راجہ قاسم، راجہ سرفراز، چوہدری ارسلان،

شیخ امجد، میر شاہزیب سمیت دیگر نے کہا آزاد کشمیر کے وزیر ہائیر ایجوکیشن

وقار نور نے محکمہ کالجز کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے، بوائز کالجز میں

دھڑا دھڑ زنانہ سٹاف تعینات کرکے تباہی کی بنیادیں رکھ دی گئی ہیں، اگر کوئی

گڑ بڑ ہوئی تو وقار نور ذمہ دار ہوں گے، حال ہی میں گورنمنٹ ماڈل سائنس کالج

میں گریڈ 19 کی اسامی کو تنزلی کرکے گریڈ 18 کر دیا گیا جبکہ ایک خاتون کو

نوازنے کیلئے سروس سٹریکچر کا بیڑہ غرق کر دیا گیا، پہلے ہی محکمہ میں

سینئر آسامیوں کی شدید کمی ہے، پوسٹ گریجویٹ کالج مظفرآباد بوائز میں

معاشیات کی اسامی کو بھی ایک خاتون کیلئے تبدیل کیا جا رہا ہے، ماڈل سائنس

کالجز میں 50,50 کوٹہ ہے لیکن وقار نور کی مہربانی سے 90 فیصد خواتین اور

10 فیصد مرد ہیں، اگر وقار نور کو زیادہ خیال ہے تو وہ کابینہ سے آزاد کشمیر

کے تمام بوائز کالجز کو گرلز میں تبدیل کروا کر بوائز کالجز میں تعینات کالج

اساتذہ کو گھر بھیج دیں تاکہ بین بجے نہ بانسری-

=قارئین=: خبر اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

مقررین نے کہا کہ موجودہ دور میں کالج اساتذہ کا جتنا استحصال ہوا تاریخ میں اس

کی مثال نہیں ملتی، سیکرٹری کالجز شریف آدمی ہیں، وقار نور نے انھیں بھی بے

اختیار کیا ہوا ہے، ڈی پی آئی محکمہ کے سربراہ ہیں مگر ان جیسا کمزور آفیسر

کبھی نہیں دیکھا، اپنی کمیونٹی کا تحفظ کرنے میں ناکام ہو چکے ہیں، کسی جاندار

شخص کی ناظم اعلیٰ تعیناتی کی اشد ضرورت ہے، ہم سرکاری ملازم ہونے کے

ناطے احتجاج کا حق نہیں رکھتے، تاہم یہ فیصلہ کیا جا چکا ہے کہ آئندہ انتخابات

میں وقار نور کی ملازم کش پالیسیوں کے باعث مسلم لیگ (ن) سے ہٹ کر دیگر

جماعتوں کو ووٹ ڈالیں گے،3 ہزار کالج اساتذہ کا مطلب پوری ریاست میں 50

ہزار ووٹ ہیں۔

آزاد کشمیر اساتذہ فیصلہ

Leave a Reply