افغانستان ٹی ٹی پی

آرمی چیف کو مزید توسیع دینے پرابھی سوچا نہیں ،عمران خان

Spread the love

آرمی چیف مزید توسیع

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت اتحادیوں کے

ساتھ مل کر 5 سال پورے کرے گی، آرمی چیف کو مزید توسیع سے متعلق ابھی سوچا نہیں۔وزیراعظم

عمران خان نے دنیا نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن تحریک عدم اعتماد لانا

چاہتی ہے تو ضرور لے آئے، آرمی چیف کو مزید توسیع سے متعلق ابھی سوچا نہیں، نومبر کافی دور

ہے، میرے فوجی قیادت کے ساتھ تعلقات مثالی نوعیت کے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت

کی سب سے بڑی ناکامی احتساب کا نہ ہونا ہے، تمام تر شواہد کے باوجود یہ لوگ بچ کرنکل رہے

ہیں، شہباز شریف کے خلاف ٹھوس ثبوت موجود ہیں، کیا کوئی شہباز شریف کی کرپشن سے انکار کر

سکتا ہے۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت کیلئے آئندہ 3 مہینے کافی اہم ہیں، مہنگائی کو کنٹرول

کرنا ہوگا، خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں شکست کی وجہ سے پارٹی کو بہت نقصان ہوا،

بلدیاتی انتخابات میں شکست پارٹی کی تنظیمی سطح پربڑی ناکامی ہے، اﷲ کا شکر ہے ہمارے ووٹ

بینک میں کوئی کمی نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت کی کارکردگی سے پوری طرح

مطمئن ہوں، ہمارے بہت سے اچھے کاموں کی تشہیر نہیں ہو رہی، پاکستان کے چین اور امریکا

دونوں کیساتھ اچھے تعلقات ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ غریب و متوسط طبقے کے

لیے کم قیمت گھروں کا جو وعدہ کیا تھا، اسے پورا کر رہے ہیں۔ اپنا گھر بنانے کے لیے 38ارب

روپے کے قرضے فراہم کیے جا چکے۔وزیر اعظم کی زیر صدارت قومی رابطہ کمیٹی برائے

ہاوسنگ، تعمیرات و ترقی کا اجلاس ہوا، اجلاس میں وفاقی وزراء شوکت ترین، فواد چودھری،

وزیراعظم آزاد کشمیر سردار عبدالقیوم خان نیازی، وزیر مملکت فرخ حبیب، معاون خصوصی شہباز

گل، گورنر سٹیٹ بینک، آزاد جموں کشمیر کے وزراء سرداد تنویر الیاس، خواجہ فاروق، چیئرمین

NAPHDA اور سینئر افسران نے شرکت کی۔اجلاس کو آگاہ کیا گیا کہ سی ڈی اے اور نیا پاکستان

ہاؤسنگ اتھارٹی ان فلیٹس کے لیے سبسڈی مہیا کرے گی جس سے ماہانہ قسطیں کم سے کم رکھی

جائیں گی ان فلیٹس میں تمام شہری سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ اوسطاً بینکوں سے قرضے حاصل

کرنے کی شرح میں قابل دید اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔ صرف پچھلے دو ہفتوں میں 6ارب روپے

کے اضافی قرضوں کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔ جنگلات اور قدرتی تنوع کے تحفظ کے لیے ہر

ممکن اقدامات اٹھائے جائیں۔ وزیر اعظم کو اجلاس میں بتایا گیا کہ آزاد کشمیر کا 63 فیصد حصہ

جنگلات پر مشتمل ہے جبکہ کشمیر کے کل رقبے کا 56.5 فی صد رقبہ سرکاری اراضی ہے۔ 10

اضلاع کی لینڈ یوز میپنگ مکمل کی جا چکی ہے۔ مہاجرین کی رہائش گاہوں کے لیے 5.6 ارب روپے

کی زمین حکومت آزاد جموں و کشمیر مہیا کرے گی۔ پہلے مرحلے میں 1300 گھرانوں کو گھر مہیا

کئیجائیں گے۔اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ غریب و متوسط طبقے کے لیے کم قیمت گھروں کا

جو وعدہ کیا تھا، اسے پورا کر رہے ہیں۔ ملک کی تاریخ میں پہلی دفعہ اسلام آباد کی کچی آبادیوں کے

رہائشیوں کے لیے 12,400 کم قیمت و معیاری فلیٹ مہیا کیئے جارہے ہیں۔اپنی بات کو جاری رکھتے

ہوئے انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں بین الاقوامی معیار کا کرکٹ سٹیڈیم تعمیر کیا جائے گا۔ اسلام آباد

کے مہنگے سیکٹرز میں سرکاری رہائش گاہوں پر پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کی بنیاد پر کمرشل

بلنڈنگز بنائی جائیں۔ اپنا گھر بنانے کے لیے 38ارب روپے کے قرضے فراہم کیے جا چکے۔عمران

خان کا کہنا تھا کہ ملک کے تمام شہروں کی حدود متعین ہونی چاہئیں تاکہ بے ہنگم پھیلاؤ کو روکا اور

سبزے کو بچایا جاسکے۔- آزاد کشمیر میں سیاحت کے فروغ کیلئے بے پناہ مواقع موجود ہیں جن سے

استفادہ حاصل کیا جائے، آزاد کشمیر میں غیر قانونی تعمیرات کو روکنے کیلئے سخت قوانین بنائے

جائیں۔ مقبوضہ کشمیر سے آئے مہاجرین کے لیے معیاری اور کم قیمت رہایش گاہیں جلد تعمیر کی

جائیں۔ وزیراعظم عمران خان سے مذہبی اسکالر مولانا طارق جمیل نے ملاقات کی جس میں قومی

رحمت اللعالمین اتھارٹی کے مجوزہ کردار سے متعلق امور پرتبادلہ خیال کیا۔ ملاقات میں حضرت

محمد صلی اﷲ علیہ وسلم کی ریاست مدینہ کے بنیادی اقداراورسیرت النبی صلی اﷲ علیہ وسلم کی

تعلیمات کی روشنی میں نوجوانوں کی کردار سازی پر بات کی گئی۔ دونوں رہنماں نے قومی رحمت

اللعالمین اتھارٹی کے مجوزہ کردار سے متعلق امور پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ وزیراعظم نے اس بات کا

اعادہ کیا کہ ہم بحیثیت قوم صرف حضور صلی اﷲ علیہ وسلم کی تعلیمات پرعمل پیرا ہو کر ہی ترقی

کرسکتے ہیں۔ مولانا طارق جمیل نے ریاست مدینہ کے فلاحی ماڈل کو نافذ کرنے کے ساتھ ساتھ

تعلیمات نبوی صلی اﷲ علیہ وسلم کی روشنی میں نوجوانوں کی کردار سازی پر زور دینے کے لیے

وزیر اعظم کی کاوشوں کو سراہا۔وز یر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ایکو ٹورازم کے ذریعے

مقامی لوگوں کو روزگار کی فراہمی اور قدرتی حسن کا تحفظ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل

ہے، حکومت آزاد کشمیر، شمالی علاقہ جات اور گلگت بلتستان میں سیاحت سے بھرپور فائدہ اٹھانے

کیلئے اقدامات کر رہی ہے۔ وز یر اعظم عمران خان سے وز یر اعظم آزاد جموں و کشمیر سردار

عبدالقیوم نیازی نے ملاقات کی جس میں آزاد کشمیر حکومت کے اہم امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا

گیا ، وزیر اعظم آزاد کشمیر نے وزیر اعظم عمران خان کوآزاد کشمیر میں رواں سال کے وسط میں

بلدیاتی انتخابات کے انعقاد سے متعلق آگاہ کیا جبکہ آزاد کشمیر میں سیاحت کے فروغ کے منصوبوں

کے حوالے سے بھی گفتگو کی گئی ۔ اس موقع پر وز یر اعظم عمران خان نے کہا کہ حکومت آزاد

کشمیر، شمالی علاقہ جات اور گلگت بلتستان میں سیاحت کے شعبے کی بے پناہ استعداد سے بھرپور

فائدہ اٹھانے کیلئے اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا ایکو ٹورازم کے ذریعے مقامی لوگوں کو

روزگار کی فراہمی اور ان علاقوں کے قدرتی حسن کا تحفظ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل

ہے۔وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ حکومت عوام کیلئے صحت، تعلیم، سستی رہائش، سماجی

تحفظ اور صاف پانی جیسی بنیادی سہولیات کی فراہمی کے منصوبوں کی تکمیل ترجیحی بنیادوں پر

یقینی بنا رہی ہے۔ جمعرات کو وزیرِ اعظم عمران خان سے گورنر پنجاب چوہدری سرور نے ملاقات

کی جس میں آبِ پاک اتھارٹی اور صوبہ بھر میں جاری ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت پر گفتگو کی

گئی ۔وزیر اعظم نے کہاکہ حکومت عوام کیلئے صحت، تعلیم، سستی رہائش، سماجی تحفظ اور صاف

پانی جیسی بنیادی سہولیات کی فراہمی کے منصوبوں کی تکمیل ترجیحی بنیادوں پر یقینی بنا رہی ہے۔

آرمی چیف مزید توسیع

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply