135

پاکستان کا ایک سال میں 78 ہزار حافظِ قرآن تیار کرنے کا ریکارڈ

Spread the love

کراچی(جے ٹی این آن لائن) پاکستان میں وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے زیرِ

تعلیم اب تک 10 لاکھ سے زیادہ بچے قرآن پاک کو اپنے سینوں میں محفوظ کر

چکے ہیں، جبکہ امسال 78 ہزار سے زیادہ بچے حافظِ قرآن تیار کرنے کا ریکارڈ

بنا لیا۔ وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے مطابق رواں سال وفاق المدارس کے تحت

تقریبا 14ہزار بچیوں نے قرآن پاک حفظ کیا۔ اس ضمن میں ملک کے تمام بڑے اور

چھوٹے شہروں سمیت گائوں میں بھی مدارس موجود ہیں جن کی تعداد 30 سے 35

ہزار بنتی ہے، جبکہ حفظ کرنے والے طلبہ کا تعلق مختلف شہروں سے ہوتا ہے۔

حفاظ بننے والے طلبہ کو سند وفاق المدارس کی طرف سے جاری کی جاتی ہے،

جس کے بعد بچے اپنی تعلیم جاری رکھتے ہیں اور اپنی قابلیت کی بنیاد پر ہی

مختلف شعبوں میں ملازمت کرتے ہیں۔ حفظ کرنے والے بچوں کی عمر عام طور

پر 4 سے 7 سال کے درمیان ہوتی ہے جبکہ کم سے کم 2 یا زیادہ سے زیادہ 3 سال

میں بچے حافظ قرآن بن جاتے ہیں۔ مدارس میں صبح فجر کے بعد یعنی 8 بجے

سے رات 9 بجے تک تعلیم جاری رہتی ہے جس میں ناشتے، کھانے اور نمازوں

کے وقفے کیے جاتے ہیں۔ وفاق المدارس کا قیام 1959 میں ہوا لیکن ادارے نے

حفاظ بچوں کا امتحان لینا 1982 میں شروع کیا، اگر امتحان لینا کا سلسلہ قیام کے

وقت سے شروع کیا جاتا تو یہ تعداد تقریبا 20 لاکھ ہوتی۔ تین سال قبل وفاق

المدارس کو پوری دنیا میں سب سے زیادہ حفاظ تیار کرنے پر ایوارڈ سے بھی

نوازا گیا تھا۔یہ تقریب سعودی عرب کے شہر جدہ میں ہوئی ۔ سعودی عرب میں

سالانہ 5 ہزار بچے قرآن حفظ کر پاتے ہیں۔ ماہ رمضان میں وجود میں آنے والے

اسلامی جمہوریہ پاکستان کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ ماہ رمضان میں نزول ہونے

والی سب سے عظیم کتاب قرآن پاک کو سالانہ ہزاروں بچے حفظ کر رہے ہیں۔