163

اسں لیے کھیل رہا ہوں کہ میں نے اپنی فٹنس کو قائم رکھا ہوا ہے،مصباح الحق

Spread the love

لاہور(سپورٹس رپورٹر)مصباح الحق کہتے ہیں کہ کسی بھی چیز کا جنون اور اس

سے محبت ختم ہو جائے تو پھر اس شعبے سے منسلک رہنا ٹھیک نہیں ہے، میں

مشکل صورتحال اور چینلجز کو آج بھی انجوائے کر رہا ہوں۔ایک پریس کانفرنس

میں دو سال پہلے ریٹائر ہونے والے مصباح الحق نے کہا کہ میں اسی لیے کھیل

رہا ہوں کہ میں نے اپنی فٹنس کو قائم رکھا ہوا ہے، مجھ میں آج بھی جذبہ ہے اور

رنز کی بھوک ہے، میں نے ٹریننگ نہیں چھوڑی اور محنت کر کے اپنے آپ کو

تیار کرتا رہا، کوئی بھی کھلاڑی کتنا اپنے آپ کو فٹ رکھتا ہے اس کا انحصار

اسی پر ہے۔مصباح الحق نے کہا کہ میں فرسٹ کلاس اور گریڈ ٹو کھیل کر یہاں آیا

ہوں۔قومی ٹیم کے سابق کپتان نے کہا کہ یہاں ہر ٹیم کے پاس اچھے بولرز ہیں اور

یہاں بولروں کے لئے کنڈیشن اچھی اور بیٹنگ کے لئے کنڈیشن آئیڈیل نہیں ہیں۔

مصباح نے کہا کہ پاکستان کے پاس بولر اچھے آرہے ہیں، یہی پاکستان کا مستقبل

ہیں۔ حسنین، موسیٰ خان، عمر خان اچھے بولر ہیں۔ ہر سال ایک دو اچھے کھلاڑی

مل جائیں تو اس سے پاکستان کرکٹ کو فائدہ ہو گا۔میچ جتوانے کے بعد اور پشاور

زلمی کو مشکل جیت دلوانے والے مصباح الحق ڈریسنگ روم میں واپس آئے تو

انہیں گلے لگانے میں پیش پیش پاکستان کے ایک اور عظیم بیٹسمین یونس خان

تھے۔مصباح الحق نے پی ایس ایل کی دفاعی چیمپین اسلام آباد یونائیٹیڈ کو اس لیے

خیر باد کہا تھا کہ اسلام آباد انہیں کھلاڑی کی حیثیت سے کھلانے کو تیار نہ تھے۔

مصباح الحق نے پشاور زلمی کو جوائن کیا اور اپنے مؤقف کو درست ثابت کر دیا

کہ ان کی کرکٹ ابھی ختم نہیں ہوئی ہے، مصباح 8 میچوں کے بعد زلمی میں آئے

اور چھا گئے۔میچ کے بعد انہوں نے کہا کہ انجری کے بعد ٹیم میں آنا اور

کارکردگی دکھانا مشکل ہوتا ہے۔،کم بیک مشکل ہوتی ہے، میں اس گراونڈ پر بہت

کرکٹ کھیل چکا تھا، اس لئے مجھے یقین تھا کہ اگر میچ آخری اوورز تک گیا تو

ہم جیت جائیں گے۔مصباح الحق نے کہا کہ میچ کے دوران قسمت نے بھی ہمارا

بھرپور ساتھ دیا اور 20رنز پر پانچ وکٹ گرنے کے بعد میں نے اپنے اعصاب کو

کنٹرول میں رکھا اور خراب گیندوں کا انتظار کیا۔