157

بھارتی حکمران جماعت کی ایک اور جگ ہنسائی ،اجلاس میں ’جوتا اسٹرائیک‘

Spread the love

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک )پاکستان پر سرجیکل اسٹرائیک کا جھوٹا دعویٰ

کرنیوالی بھارت کی ہندو انتہا پسند حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے

پی) کے اجلاس میں ’جوتا اسٹرائیک‘ ہو گئی۔بی جے پی کا لکھنؤ میں اجلاس

جاری تھا کہ پارٹی کے لوک سبھا کے رکن شرد تریپاتھی اور مقامی اسمبلی کے

رکن راکیش سنگھ کے درمیان کسی معاملے پر تلخ کلامی ہو گئی جس کے بعد

معاملہ گالم گلوچ سے آگے بڑھ گیا اور شرد تریپاتھی نے پارٹی کے رکن پر جوتا اسٹرائیک کر دی جس کے بعد پورا اجلاس ہی ریسلنگ رنگ میں تبدیل ہو گیا۔

ارکان نے ایک دوسرے پر لاتوں اور مکوں کی بارش کر دی اور اس دوران انہیں

چھڑانے والے بھی اسٹرائیک کا حصہ بنے اور پھر وہاں موجود سکیورٹی

اہلکاروں کو بیچ بچاؤ کرانا پڑا ۔لوک سبھا کے رکن کے ہاتھوں مقامی رکن اسمبلی کی پٹائی پر بھارتیہ جنتا پارٹی کے کارکن بھی بپھر گئے اور پٹنے والے رکن کے

ہمراہ مجسٹریٹ دفتر کے باہر احتجاج کیا۔