150

این ٹی ڈی سی کی بجلی کی پیداواری استعداد میں توسیع کی منصوبہ بندی مکمل

Spread the love

این ٹی ڈی سی نے انڈیکٹو جنریشن کپیسٹی ایکسپنشن پلان تیار کرکے نیپرا کو جمع

کروا دیا ہے ۔ یہ پلان این ٹی ڈی سی کے شعبہ پاور سسٹم پلاننگ کی جانب سے

ترتیب دیا گیا ہے جو نیپرا گرڈ کوڈ 2005ء کے تحت جمع کروانا لازمی ہوتا ہے ۔

بلا شبہ یہ پلان پاور سیکٹر کیلئے ایک اہم کامیابی سے کم نہیں ۔ اس منصوبے کی

تیاری سے این ٹی ڈی سی نے جدید اور روشن پاکستان کی طرف ایک اہم قدم اٹھایا

ہے جہاں سستی، دستیاب، پائیدار اور مستحکم بجلی کی فراہمی عوام کی رسائی

میں ہوگی ۔الیکٹرک پاور سسٹم کا کا م دن رات بجلی کی مستحکم اور مسلسل فراہمی ہے جس کو یقینی بنانے کیلئے پاورسسٹم کے تینوں اجزاء یعنی پیداوار،

ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن کو رائج پالیسیز اور ریگولیشن کے تحت پرفارم کرنا
ہوتا ہے ۔بجلی کا پیداواری نظام فزیکل سہولیات پر مشتمل ہوتا ہے توانائی کے

ذرائع یعنی کوئلہ،تیل، یورینیم ، ہائیڈرو اور قابل تجدید ذرائع کو بجلی میں تبدیل کرتا ہے ۔ ٹرانسمیشن سسٹم اس بجلی کو لوڈ سنٹر تک منتقل کرتا ہے اور ڈسٹری بیوشن سسٹم کسٹمر کی طلب کے مطابق اس تک بجلی کی رسائی مہیاکرتا ہے ۔ لہٰذا لیکٹرک پاورسسٹم ایک متحرک اور مربوط سسٹم ہے جو بجلی کی طلب اور

رسد میں توازن قائم کرتا ہے ۔ بجلی کی طلب اور رسد کے منظر نامے کے پیش نظر اس پلان کا بنیادی مقصد جنریشن مکس کو نئی شکل دے کربجلی کی پیداوار کیلئے درآمدی تیل سے انحصار ختم کرنا ہے اور مقامی وسائل یعنی ہائیڈرو، قابل

تجدید توانائی، کوئلے اور نیوکلیئر کو بروئے کارلانا ہے۔ یہ منصوبہ کراچی کے علاوہ پورے ملک کیلئے تیار کیا گیا ہے کیونکہ کراچی شہر میں بجلی کا انتظام و انصرام کے ۔الیکٹرک کے ذمے ہے ۔