89

نواز حکومت میں ہی دہشتگردی میں کمی واقع ہوئی،مسلم لیگ ن

Spread the love

مسلم لیگ ن کے رہنما سینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف

عمران خان حکومت کے ساتھ تعاون کیلئے تیار ہیں نیشنل ایکشن پلان کا نوئے

فیصد کام نواز حکومت میں مکمل ہو چکاتھا اب حکومت پر منحصر ہے کہ وہ اس

کام کو نئے سرے سے شروع کرنا چاہتی ہے یا رکے کام کو آگے چلانا چاہتی ہے،

وہ بدھ کے روز پارلیمنٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے ۔ سینیٹر مشاہد اللہ

خان نے کہاکہ دہشت گردی کے خاتمے کیلئے حکومت کے ساتھ تعاون کیلئے تیار

ہیں نواز حکومت کی وجہ سے ہی دہشت گردی میں کمی واقع ہوئی ہے جس کی

وجہ سے آج پاکستان کے عوام سکون کی نیند سو رہے ہیں ۔ مسلم لیگ ن کے

مرکزی رہنما و رکن قومی اسمبلی دستگیر خان نے پارلیمنٹ کے باہر میڈیا سے

گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ کالعدم تنظیموں کو بین کرنا یا چیلنج کرنا مسئلے کا حل

نہیں بلکہ ضرورت اس امر کی ہے کہ جو ادارے مسلح ہیں اور دوسرے ممالک

کے لئے خطرہ ہیں ان کے ساتھ سختی سے نمٹنا چاہیے کہ اس سے ملکوں کے

درمیاں تعلقات خراب ہو تے ہیں۔ رکن قومی اسمبلی دستگیر خان نے کہاکہ پاکستان

پرامن ملک ہے اور وہ تمام مسائل کا حل ڈائیلاگ کے ذریعے چاہتا ہے۔ جب سے

انڈیا میں مودی حکومت آئی ہے اس نے انڈیا کے سیکولر آئین کو ہندوآئین میں

تبدیل کر دیا جس سے نہ صرف مسلمان بلکہ بدھ مت ، عیسائی اور دیگر مذاہب

کے ماننے والوں کیلئے دنیا تنگ کر دی گئی ۔