63

کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم ,چار ماہ میں پاکستانی سٹاک انڈیکس 40فیصدبڑھا ،کریڈٹ ریٹنگ منفی سے مستحکم ہوگئی ،موڈیز

Spread the love

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ چار سال کے عرصے میں پہلی مرتبہ پاکستان کا موجودہ اکائونٹنٹ

خسارے سے نکل کر اضافی ہوا ہے اور چار ماہ سے کم عرصے میں اس کے سٹاک انڈیکس میں

چالیس فیصد اضافہ ہوا ہے ۔ معیشتوں کی درجہ بندی کرنیوالے امریکی ادارے موڈیز نے پاکستان کی

کریڈٹ ریٹنگ بہتر کرتے ہوئے معاشی آؤٹ لْک کو منفی سے مستحکم کر دیا۔موڈیز کی جاری کردہ

رپورٹ کے مطابق پاکستان کی ریٹنگ بی تھری پر برقرار رکھی ہے تاہم پہلے مستقبل یعنی آؤٹ لْک

منفی تھا جسے اب موڈیز نے مستحکم کردیا ہے۔رپورٹ کے مطابق ادائیگیوں کا توازن مزید بہتر

ہونے کے پیش نظر آؤٹ لْک بہتر کیا گیا۔موڈیز کے مطابق اگرچہ زرمبادلہ کے ذخائر اب بھی کم ہیں

اور انہیں بہتر ہونے میں وقت لگے گا مگر پالیسی ایڈجسٹمنٹ اور آزادانہ شرح مبادلہ سے ادائیگیوں

کے توازن کی بہتری میں مدد ملے گی۔گزشتہ چار سال کے عرصے میں پہلی مرتبہ پاکستان کا

موجودہ اکائونٹنٹ خسارے سے نکل کر اضافی ہوا ہے اور چار ماہ سے کم عرصے میں اس کے

سٹاک انڈیکس میں چالیس فیصد اضافہ ہوا ہے ۔ یہ تازہ ترین جائزہ واشنگٹن کے معتبر ادارے ’’موڈیز

انوسٹرز سروس‘‘ کی طرف سے پیش کیا گیا ہے۔ جائزے میں مزید بتایا گیا ہے کہ موجودہ اور آئندہ

مالی سال میں کرنٹ اکائونٹ کا خسارہ کم ہو کر اوسطاً جی ڈی پی کے 2.2 فیصد تک پہنچ جائے گا

جبکہ گزشتہ برس یہ خسارہ جی ڈی پی کا 5 فیصد تھا۔