32

چوبرجی ، رکشے میں ریموٹ کنٹرول بم دھماکہ ، خاتون سمیت 10 افراد زخمی

Spread the love

لاہور( کرائم رپورٹر ) ایک بار پھر لاہور بڑی تباہی سے بچ گیا، ملتان روڈ پر چوبرجی کے قریب

رکشے میں پراسرار دھماکہ، ڈرائیور سمیت 10 افراد زخمی ہوگئے۔ایک زخمی کی حالت تشویشناک

بتائی جارہی ہے، اطلاع ملتے ہی ڈی آئی جی آپریشنز اشفاق خان ایس ایس پی پولیس کی بھاری نفری

کے ہمراہ موقع پر پہنچے جبکہ سی ٹی ڈی فرانزک بم ڈسپوزل اور کرائم سین سمیت پولیس ٹیموں نے

جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرکے تحقیقات کا آغاز کر دیا۔ بم ڈسپوزل کے مطابق دھماکے میں 4

کلو گرام کے قریب بارودی مواد استعمال ہوا ہے۔ بم ڈسپوزل سکواڈ کو جائے وقوعہ سے بال بیئرنگ

اور بارودی مواد ملے ہیں۔ ابتدائی تحقیقات کے مطابق شیراکوٹ سے ایک شخص رکشے میں بیٹھا جو

سمن آباد اتر گیا، اس کے پاس کچھ سامان تھا لیکن اترتے وقت ایک شاپنگ بیگ وہ رکشے میں ہی

چھوڑ گیا، جو بعد ازاں دھماکے کی وجہ بنا۔ پولیس نے رکشہ ڈرائیور اور ایک مشکوک شخص کو

گرفتار کر لیا ہے۔ واضح رہے کہ رکشے میں آئی ڈی لگنے سے متعلق خدشات سے حساس ادارے

پہلے ہی متعلقہ اداروں کو خبردار کر چکے تھے۔سی ٹی ڈی لاہور نے رکشہ میں دھماکہ کا مقدمہ

اقدام قتل، ایکسپلوڑیو ایکٹ، دہشتگردی ایکٹ سمیت دیگر دفعات کے تحت درج کرکے تحقیقات شروع

کردیں۔

زخمیوں میں رکشہ ڈرائیور رمضان، عالم، سلمان، جاوید، اسد، فخر عباس، قاسم رضا، علیم، محمد

عظیم اور صدف شامل ،4 زخمیوں کو طبی امداد فراہم کرنے کے بعد ہسپتال سے فارغ ،ایک

زخمی کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ دوسری جانب وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے آئی جی پنجاب

سے چوبرجی دھماکے کی رپورٹ طلب کرلی۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے شہر میں امن و امان کی

صورتحال کو بہتر بنانے کی ہدایت جاری کردی۔ وزیراعلیٰ پنجاب نے جلد ذمہ داران کا سراغ لگاکر

کارروائی کرنے کا حکم جاری کیا۔