28

پنجاب میں بڑے پیمانے پر تبادلے،میجر (ر)اعظم سلیمان چیف سیکرٹری ،شعیب دستگیر آئی جی پنجاب تعینات

Spread the love

لاہور(جنرل رپورٹر) وفاقی حکومت نے یوسف نسیم کھوکھر کو تبدیل کر کے

وفاقی سیکرٹری داخلہ میجر (ر) اعظم سلیمان خان کو چیف سیکرٹری پنجاب جبکہ

کیپٹن (ر) عارف نواز خان کو تبدیل کر کے مینیجنگ ڈائریکٹر نیشنل پولیس

فائونڈیشن خرم دستگیر کو انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کے عہدے پر تعینات کر

دیا۔ نئے چیف سیکرٹری پنجاب ممکنہ طور پر آج ( بدھ ) کے روز اپنے عہدے

کی ذمہ داریاں سنبھال لیں گے۔ میجر (ر) اعظم سلیمان خان پنجاب میں سیکرٹری

سی اینڈ ڈبلیو، سیکرٹری آبپاشی، سیکرٹری خوراک، سیکرٹری داخلہ ،کمشنر لاہور

ڈویژن اورایڈیشنل چیف سیکرٹری ہوم کے فرائض سر انجام دے چکے ہیں جبکہ

نگراں دور حکومت میں انہیںچیف سیکرٹری سندھ تعینات کیا گیا تھا۔مو جودہ

حکومت نے میجر(ر) اعظم سلیمان کو وفاقی سیکرٹری داخلہ تعینات کیا تھا اور

انہیں اب پنجاب کے سب سے بڑے انتظامی عہدے پر تعیناتی دی گئی ہے دوسری

طرف چیف سیکریٹری پنجاب اعظم سلیمان نےکہا کہ پنجاب میں شفافیت اور میرٹ

کو فروغ دیا جائے گا۔ جو کام کرے گا وہ عہدے پر رہے گا اور اسے عزت دی

جائے گی ۔وفاقی حکومت نے کیپٹن (ر) عارف نواز خان کو تبدیل کر کے ان کی

جگہ پولیس سروس کے گریڈ 21کے افسر مینیجنگ ڈائریکٹر نیشنل پولیس

فائونڈیشن خرم دستگیر کو اسی پے اور سکیل پر انسپکٹرجنرل پولیس پنجاب

تعینات کر دیا ہے ۔ انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کے عہدے کیلئے شعیب دستگیر،

مشتاق مہر اور اوراحمد لطیف کے نام ارسال کئے گئے تھے جس میں قرعہ خرم

دستگیر کے نام نکلا۔اس سے قبل حکمران جماعت محمد طاہر خان اور امجد جاوید

سلیمی کو بھی بطور آئی جی پنجاب آزما چکی ہے جبکہ عارف نواز خان عام

انتخابات 2018 کے دوران بھی آئی جی پنجاب کے طور پر خدمات سرانجام دے

چکے تھے۔ذرائع کے مطابق چیف سیکرٹری پنجاب اور آئی جی پنجاب کی تبدیلی

کے بعد پنجاب میںجلد 11سیکرٹریز،17ڈپٹی کمشنرز اور دیگر افسران کے بھی

تقرر و تبادلے کئے جانے کا امکان ہے ۔