Imran Khan Prim minister Pakistan 34

عوام کو غربت سے نکالنا میرا مشن ہے،وزیراعظم

Spread the love

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مجھے ووٹوں کی

پرواہ نہیں ،حکومت کی اولین ترجیح اپنے عوام کو غربت سے نکالنا ہے اور یہی

میرا مشن ہے، غریب ممالک سے منی لانڈرنگ کے ذریعے پیسہ امیر ممالک میں

بھیجا جاتا ہے جس سے امیر ممالک امیر تر اور غریب ممالک غریب تر ہوجاتے

جارہے ہیں ، غریب ممالک میں انسانی زندگی مفلوج ہو چکی ہے ۔ان خیالات کا

اظہار انہوں نے اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وزیراعظم نے

کہا کہ ہم ہالینڈ کی ملکہ میکسیما کا احساس پروگرام میں دلچسپی لینے پر شکریہ

ادا کرتے ہیں۔وزیراعظم نے کہا کہ میں سیاستدان بننے سے پہلے سماجی کارکن

تھا اور سیاستدان میں آنے کی وجہ بھی سماجی خدمت ہی ہے ۔وزیراعظم نے کہا

کہ افسوس ہے عام آدمی ٹیکس دیتا ہے لیکن امیر طبقہ ٹیکس چوری کرتا ہے، آج

امیر ٹیکس چوری کرنے کے لیے آف شور کمپنیاں بناتا ہے۔عمران خان نے کہا کہ

غریبوں کے لیے الگ اور امیروں کے لیے الگ نظام تعلیم ہے، گزشتہ دہائی کے

دوران امیر اور غریب کے درمیان فرق بڑھا ہے، معاشرے میں تمام سہولتیں

امیروں کو ملی ہوئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ خواتین کی تعلیم کے بغیر معاشرے کی

ترقی ممکن نہیں ہے، پاکستان میں تین نظام تعلیم رائج ہیں، ہماری کوشش ہے کہ

پاکستان میں یکساں تعلیم نظام رائج کریں۔ انہوں نے کہاکہ چین نے 70 کروڑ افراد

کو غربت سے نکالنے کیلئے بہترین اقدامات کیے جس کے باعث اب وہاں بڑی

تبدیلیاں آچکی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ریاست مدینہ میں پہلی بار خواتین کو حقوق

دیئے گئے ،اس کے علاوہ یتیموں اور بیوائوں کوان کے حقوق دیئے گئے جو اپنی

مثال آپ ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کو ریاست مدینہ بنانے کیلئے عملی اقدامات

کا وقت آگیا ہے اور پاکستان میں خواتین کو تمام بنیادی حقوق حاصل ہیں۔تقریب

سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پروگرام کے خدو خال کو اجاگر کیا۔ انہوں نے کہا

کہ حکومت غربت کے خاتمہ کے لئے ٹھوس اقدامات کر رہی ہے، احساس پروگرام

معاشرے کے محروم طبقے کے لئے ہے۔ انہوں نے کہا کہ احساس پروگرام کا

مقصد احساس محرومی کے شکار افراد کی بحالی ہے، حکومت احساس پروگرام

کی کامیابی کے لئے انتہائی سنجیدہ ہے۔بعدازاں وزیراعظم عمران خان نے سعودی

شہزادہ سلطان بن سلمان سے ملاقات میں اسلاموفوبیا کا مقابلہ کرنے کیلئے ٹھوس

اقدامات اور موثر بیانیے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اسلامی تہذیب کو

اجاگر کرنے کیلئے نوجوانوں کی شمولیت یقینی بنانا چاہیے۔وزیراعظم عمران خان

کا کہنا تھا کہ معاشی تعاون اور مضبوط اقتصادی تعلقات کے اقدامات پر سعودی

قیادت کے شکر گزار ہیں۔ انہوں نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی بدترین

خلاف ورزیوں سے سعودی شہزادے کو آگاہ کیا اور بتایا کہ کشمیری بدترین لاک

ڈاؤن کا شکار ہیں۔ بین الاقوامی برادری معصوم کشمیریوں کی جدوجہد کا ساتھ

دے۔وزیراعظم عمران خان نے سعودی شہزادہ سلطان بن سلمان کی پاکستان میں

فلاحی کاموں پر تعریف کی اور کہا کہ سعودی عرب کے ساتھ مشترکہ مذہب،

ثقافت اور تاریخ پر مبنی تعلقات ہیں۔سعودی شہزادہ سلطان بن سلمان کا اس موقع پر

کہنا تھا کہ مسلم دنیاکو اسلام سے متعلق غلط فہمیوں کے خاتمے کیلئے کوششیں

کرنا ہونگی۔ علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان سے ہالینڈ کی ملکہ میکسیما زوری

گوئٹا نے ملاقات کی جس میں غربت کے خاتمے سمیت اہم سماجی امور پر تبادلہ

خیال کیا گیا ۔