87

قادیانیوں کا فروغ مذہب کیلئے دوشیزاؤں کا استعمال، 909، رابعہ اور فائزہ

Spread the love

دوشیزاؤں کا استعمال
جماعت احمدیہ کا سربراہ مرزا مسروراپنے الاحمدیہ ٹی وی چینل کو یورپ میں زیادہ سے زیادہ مقبول بنانے کیلئے سرگرم ہو چکا تھا، چینل پر دکھائے جانیوالے تمام پروگرامزسے پہلے و آخر میں درود پاک پڑھا جاتا تھا، مکمل نماز دہرائی جاتی تھی، قرآن پاک کی مختلف آیات کا ترجمہ کیا جاتا تھا، ہر چیز ویسے ہی دکھائی جاتی تھی جیسے خالص مسلمانوں کا چینل ہوتا ہے، نماز، روزہ، زکٰوۃ سے متعلق آیات پر زور دیا جاتا تھا، نماز میں ثناء سے سلام پھیرنے تک ہر لفظ وہی تھا، دیکھنے والا مسلمان دنگ رہ جاتا تھا کہ آخر قادیانیوں اور مسلمانوں میں فرق کیا ہے؟ دوشیزاؤں کا استعمال

یہ بھی پڑھیں : قادیانیت کی پاکستان میں دہشت گردی کیلئے فنڈنگ

Kingston College London

قادیانی بچے بہتر تعلیم وتربیت کے باعث انتہائی سچے اور معصوم

اس بات میں کوئی شک نہیں کہ اقلیت میں ہونے، بہتر تربیت اور دولت کی ریل پیل کے باعث احمدی جماعت سے تعلق رکھنے والے بچے جھوٹ نہیں بولتے تھے، ان کی تربیت میں سادگی اور معصومیت جھلکتی تھی، انہی خصوصیات کا فائدہ ان کے 24 سال گزرنے کے بعد اٹھایا جاتا تھا تاکہ وہ سرکشی کے مرتکب نہ ہوسکیں، یہی وجہ ہے کہ قادیانیوں میں کوئی بھی نوجوان باغی پن کا شکار نہیں ہوتا تھا، فائزہ اور علی احمد دو بہن بھائی تھے، دونوں 909 کے اچھے دوست تھے، دونوں کی عمریں 18 اور20 کے درمیان تھیں، دونوں Kingston کالج میں زیر تعلیم تھے، Sutton میں رہائش پذیر تھے۔ وہ مقامی ریستوران میں ملازم تھے۔ یہ وہی ریستوران تھا جہاں 909 بطور منیجر کام کرتا تھا اور ان دونوں بہن بھائیوں سے خاصا لگائو رکھتا تھا، جب اسے معلوم ہوا کہ یہ دونوں بہن بھائی قادیانی ہیں تو اس کو جھٹکا لگا- وہ ان کے اور بھی قریب ہو گیا اور پھر اسی رابطے کے ذریعے اس کو ان میں گھسنے کا موقع ملا۔ اکثر ان کی والدہ یا پھرحجاب پہنے ان کی بڑی بہن رابعہ انہیں گاڑی میں لینے آتی تھی-

Laibrary

رابعہ انتہائی خوبصورت تھی، سرمئی آنکھیں، سرخ و سفید رنگت، گلابی ہونٹ

رابعہ انتہائی خوبصورت تھی، سرمئی آنکھیں، سرخ و سفید رنگت، گلابی ہونٹ، اس کے حسن کا عجب دلکش نظارہ تھا، وہ لگ بھگ 30 سال کی تھی اور اسے طلاق ہو چکی تھی اب وہ مقامی کمیونٹی سنٹر میں بطور لائبریرین کام کرتی تھی، 909 اس کی طلاق کی وجوہات جاننا چاہتا تھا، اس نے ایک دو مرتبہ بریک ٹائم فائزہ سے باتوں باتوں میں تھوڑا بہت اگلوا لیا تھا، اس کومعلوم ہوا کہ اس کی آپی کو کتابوں سے بہت رغبت ہے جبکہ اسے ہر طرح کا لٹریچر پڑھنا اچھا لگتا ہے لیکن ابا اس کے سخت خلاف ہیں اور وہ شادی سے پہلے بھی آپی کے کمرے کی تلاشی لیتے تھے اور غیر ضروری کتابوں کو اٹھا کر باہر پھینک دیتے تھے، آپی روتی دھوتی ان کو اکٹھا کرکے واپس لائبریری میں جمع کروا دیتی تھی، شادی کے بعد رابعہ کا کتاب بینی کا شوق اور بھی سر چڑھ کر بولنے لگا، فائزہ کے بقول ایک مرتبہ وہ ایک انگریزی ناول پڑھنے میں مصروف تھی گھر میں مہمان آ گئے، شوہر نے انکی خاطر تواضع کیلئے کہا تو اس نے انکار کر دیا یوں آہستہ آہستہ دونوں میں اختلافات بڑھتے گئے، آخر کار رابعہ کو طلاق ہو گئی اور واپس اپنے باپ کے گھر آ گئی، اب ابا رابعہ کو کچھ نہیں کہتے تھے، نہ اس کی سرگرمیوں پر نظر رکھتے تھے- دوشیزاؤں کا استعمال

rabia and 909

909 کو اسے دیکھ کر تڑپ محسوس ہوتی تھی، واقعی جوانی گُھل رہی تھی

909 کو اسے دیکھ کر تڑپ محسوس ہوتی تھی، واقعی جوانی گُھل رہی تھی اور ایک بے بنیاد مذہب کے ہاتھوں برباد ہو رہی تھی، ادھر فائزہ بھی ہر وقت سہمی سہمی سی رہتی تھی، اس کے اندر کا طلاطم اتنا ہی بھڑک رہا تھا جتنا کہ رابعہ کا جوانی میں، فائزہ انیسویں برس کو لگ رہی تھی اس کی سہیلیاں اسے کالج ٹائم کے بعد اکثر گھومنے پھرنے کیلئے زور لگاتی تھیں لیکن اس کا بھائی آڑے آتا تھا اور وہ اسے سیدھا بس میں بٹھا کر سیدھا گھر پہنچاتا تھا، یہی اس کی ڈیوٹی میں شامل تھا، 909 مہینے میں ایک دو مرتبہ ان کے گھر ضرور جاتا تھا اور ہر مرتبہ اس کی والدہ سے سیرو تفریح کی خاطر اجازت مانگتا لیکن اس کے والد کی سخت طبعیت کے باعث اس کی والدہ اجازت نہیں دیتی تھی-

rabia and faiza

رابعہ اس کے بھائی اور فائزہ کی سکاٹ لینڈ یاترا

ایک مرتبہ سکاٹ لینڈ میں مینجمنٹ ٹریننگ کے حوالے سے کنگسٹن کالج کی طرف سے ٹرپ کا اعلان ہوا، دونوں بہن بھائیوں نے رخت سفر باندھ لیا، وہاں جانا ضروری تھا، اسی دوران 909 ان کے گھر چلا گیا اوراسی بہانے دونوں بہن بھائیوں کی چھٹیوں کے حوالے سے درخواست پر ان کی والدہ سے بات چیت بھی کی کہ کمپنی دونوں کی چھٹیوں کی مد میں 50 فیصد کاٹے گی، 909 نے ان کی والدہ سے کہا کہ فائزہ ابھی چھوٹی ہے وہاں اس کو اسسٹنٹ کی ضرورت پڑ سکتی ہے، کالج کی لڑکیوں میں وہ کھل کر نہیں رہ سکتی اسلئے بہتر ہو گا کہ رابعہ کو بھی ان کیساتھ بھیج دیا جائے وہ اپنے خرچے پر ان کیساتھ رہ سکتی ہے اور کالج کی طرف سے بھی اسکی اجازت ہے تو اسکی والدہ کی جیسے آنکھوں میں چمک عود آئی اس نے فوراً ہاں کر دی- ادھر 909 نے فائزہ اور علی احمد کو رابعہ کو ساتھ لیجانے کے فوائد سے آگاہ کیا کہ کس طرح دونوں دوستوں کے ہمراہ گھومنے پھرنے جا سکتے ہیں اور اگر گھر والوں کا فون آئے گا بھی تو وہ رابعہ سے ہی بات چیت کرکے مطمئن ہو جائیں گے، تم دونوں کی ٹینشن ہی ختم ہو جائے گی اس لئے آپی کو ساتھ لیجانے کیلئے راضی کرو-

scotland

909 کی پلاننگ اور چھٹیاں

بات دونوں بہن بھائیوں کی سمجھ میں آگئی تھی وہ واقعی سکاٹ لینڈ گھومنا پھرنا چاہتے تھے اور ایسا اسی صورت ممکن تھا کہ آپی گھر والوں کو سب اچھا کی رپورٹ کرے، دو دن بعد پتہ چلا کہ رابعہ جانے پر رضامند ہے اورا س نے کمیونٹی سنٹر سے 7 چھٹیاں بھی لے لی ہیں، ٹرپ سکاٹ لینڈ کے شہر Stirling جا رہا تھا جہاں دنیا کی عظیم سٹرلنگ یونیورسٹی تھی، وہ یونیورسٹی کیا تھی پورا ایک شہر تھا، 909 کو سٹرلنگ ویسے بھی بہت پسند تھا اس شہر میں داخلے سے باب پر درج ہے’’Living,Breathing,Stirling‘‘ یعنی دنیا میں اگر کسی نے رہنا ہے اور سانس لینی ہے تو یہ سٹرلنگ ہے۔909 نے اپنے طور پر کمپنی ہی کے کام کی غرض سے پلاننگ کی اور چھٹیاں لے لیں، ادھر فائزہ ،علی احمد اور رابعہ سکاٹ لینڈ کو نکلے، ادھر 909 گلاسکو پہنچ گیا، اس نے اپنے طور پر فائزہ اور علی احمد کے کالج فون کرکے شیڈول حاصل کر لیا تھا، پھر اس نے کسی طرح رابعہ کی رہائش کا بھی پتہ کیا تو معلوم ہوا کہ مہمان گیسٹ کیلئے یونیورسٹی ہی کی جانب سے اسے ایک ہوسٹل کا کمرہ الاٹ ہوا ہے اور اس کے کچھ چارجز اسے ادا کرنا ہوں گے- دوشیزاؤں کا استعمال

909 calling rabia

’’Who is there‘‘ 909

کالج کے طالبعلم کورس کے سلسلے میں صبح 9 بجے ہی یونیورسٹی پہنچ گئے، رابعہ ابھی کمرے میں تھی جب 909 وہاں استقبالیہ پر جا پہنچا اور رابعہ کے کمرے کا فون ملایا، وہ سوئی آواز میں بولی’’Who is there‘‘ 909 نے فوراً اپنا تعارف کروایا اور اسے بولنے کا موقع دئے بغیر صرف اتنا کہا کہ 30 منٹ میں تیار وہ کر نیچے چلی آئو، تمھیں دنیا کا سب سے زبردست بک ہائوس دکھانا ہے، یہ کہہ کر اس نے سیاہ رنگت والا بڑا سا روایتی کریڈل رکھ دیا، 20 منٹ کے بعد رابعہ نیچے آگئی، وہ فٹ نظر آ رہی تھی لیکن اس سے زیادہ اس کی موجودگی پر حیران تھی، 909 اسے دیکھتے فوراً بولا کہ اسے حیران ہونے کی ضرورت نہیں، وہ کمپنی کے ایک کام کے سلسلے میں یہاں آیا ہے، فائزہ اور علی احمد کو ہیلو ہائے کرنا تھا لیکن وہ تو یونیورسٹی جا چکے ہیں، رابعہ بہت سیانی اور برٹش لڑکی تھی، وہ جان گئی تھی کہ وہ اس میں دلچسپی رکھتا ہے، وہ صرف اتنا بولی’’Lets Go‘‘۔ 909 نے گاڑی سٹارٹ کی تو وہ حیران رہ گئی اور کہا کہ لندن سے سڑلنگ کا سفر گاڑی میں؟- 909 نے اسے بتایا کہ گاڑی کا پٹرول کمپنی کی طرف سے ہے اور ویسے بھی یہ نئی کار ہے اسلئے سفر آسانی سے طے ہو گیا ہے- دوشیزاؤں کا استعمال

rabia in car with 909waitress-taking-order from rabia and 909

909 And my Mom Too

رابعہ حجاب کیساتھ فرنٹ سیٹ پر بیٹھ گئی، 909 نے گاڑی چلا دی، تھوڑی دیر بعداس نے گاڑی ایک کیفے کے سامنے جا کر روک دی اورخاموشی سے باہر نکل آیا، رابعہ اس کے پیچھے پیچھے چلی آئی، وہ اس سے قبل کئی مرتبہ 909 کیلئے گھر آنے پر چایتی اور کھانا بنا چکی تھی لیکن اس نے آج تک ہیلو ہائے کے سوا اس سے کبھی بات نہیں کی تھی، یہ پہلا موقع تھا کہ 909 اور وہ آمنے سامنے ایک ٹیبل پر بیٹھے تھے، نیلی آنکھوں والی ایک چوکس ویٹرس ان کے پاس آئی، 909 نے چائے، شہد، مکھن، انڈے، بریڈ اورابلے آلو کا آرڈر دیا، ویٹرس پندرہ منٹ کا کہہ کر چلی گئی، اس دوران رابعہ شرم کے مارے ادھر ادھر جھانک رہی تھی اس کا سانس پھول رہا تھا، 909 نے اسے مخاطب کرتے ہوئے کہا تمھیں یہاں لانے کیلئے میں نے ہی فائزہ اور علی احمد کو اکسایا تھا، وہ فوراً بولی ’’And my Mom Too‘‘909 کھلکھلا کر ہنس پڑا، وہ بھی مسکرا کر رہ گئی۔ 909 نے اس سے 10 منٹ مانگے اور پھر اپنے متعلق بتانے لگا اس دوران اس نے فضول باتوں میں وقت ضائر کرنے کی بجائے درجنوں کتابو ں کا مرکزی خیال اوران کے نام اسے گنوا دیئے اور کہا کہ اگر واقعہ وہ کچھ پڑھنا چاہتی ہے تواس سے رابطہ کرے، ایسا سب کچھ کرنے کا مقصد کوئی پیار محبت یا شادی نہیں بلکہ ایک اچھی دوستی ہے- دوشیزاؤں کا استعمال

909 پر دوران سفر رابعہ کا اپنے بارے میں اہم انکشافات کرنا اور رونا

رابعہ روایتی نہیں بلکہ جدید ملک کی منجھی ہوئی لڑکی تھی اسے یقیناً روایتی محبت اور افسانوں سے نفرت تھی اس لئے وہ بولڈ سٹائل پسند کرتی تھی، اس نے بولنا شروع کیا اور باتوں ہی باتوں میں اپنے شوق کے بارے بتانے لگی، اس دوران 909 پر انکشاف ہوا کہ وہ احمدی جماعت کیلئے بچوں کی اصلاح و بہبود پر مبنی سکرپٹ بھی لکھتی ہے اور اسے اس کام کا باقاعدہ معاوضہ بھی دیا جاتا ہے، اس نے بتایا کہ اب وہ ڈائریکشن کے شعبہ میں کام کرے گی۔ اس سلسلے میں وہ کمیونٹی سنٹر میں باقاعدہ کلاسز لے رہی ہے، اس نے بتایا تربیت حاصل کرنے کے بعد اپنے ہی ٹی وی چینل پر ڈائریکشن اور کیمرہ مین کے فرائض سر انجام دے گی، 909 درمیان میں بول اٹھا ’’Is It For What They Have Done To You?‘‘ یعنی کہ یہ سب کچھ وہ اسلئے کر رہے ہیں کہ انہوں نے تمھارے ساتھ کیا کیا ہے؟ اس کی آنکھوں میں اچانک آنسو آ گئے، وہ خاموش ہو گئی اور اپنے حجاب کی لڑیوں سے کھیلنے لگی-

waitress-displaying meal in front of rabia and 909

نیلی آنکھوں والی چوکس ویٹرس، 909 کو گھورتے ہوئے واپس

اس دوران نیلی آنکھوں والی چوکس ویٹرس آگئی، اس نے بھرپور مسکراہٹ کیساتھ ناشتہ میز پر لگایا، برتن رکھے، ایک بھرپور نظر رابعہ پر ڈالی اور ناراضی کے انداز میں 909 کو گھورتے ہوئے واپس چلی گئی، 909 ہنستے ہوئے بولا ویٹرس نے مجھ سے خوامخواہ ناراضی کا اظہار کیا ہے، کرے کوئی بھرے کوئی، رابعہ مسکرا دی اور آہستہ سے بولی سوری فار ڈیٹ، پھر دونوں نے ناشتہ شروع کر دیا، 909 نے کائونٹر پر جا کر بل ادا کیا تو رابعہ بھی پیچھے پیچھے آ گئی اس نے بل کا آدھا دس پائونڈ 909 کو تھما دئے، اس نے خاموشی اور بے اعتنائی سے انہیں اپنی جیب میں ڈال لیا اور دونوں وہاں سے چل پڑے، اسی ویٹرس نے جاتے ہوئے گڈ بائے کہا تو 909 نے دس پائونڈ نکال کر اسے پکڑا دئے اور بولا’’I did none‘‘رابعہ نے یہ دیکھ کر ویٹرس سے کہا اس کی سروس بہت اعلیٰ تھی بہت بہت شکریہ‘‘ ویٹرس نے انتہائی پیار سے رابعہ سے کہا کہ وہ اسے ہمیشہ مس کریگی،اس کے دوبارہ آنے کی دعا کرے گی، یہ سب کاروباری انداز تھے جو سر انجام پا رہے تھے اس میں احساسات کا ذرا بھی شائبہ نہ تھا بلکہ ایک شاندار روایت تھی اور کچھ نہیں۔ دوشیزاؤں کا استعمال

agent909-car-drive-jtnonline

کپڑوں کا بڑا شاندار بازار اور رنگ برنگی سکاٹش کلچر کی کتابیں

909 نے گاڑی گلاسکو کی جانب موڑ دی، وہاں کپڑوں کا بڑا شاندار بازار لگتا تھا اور رنگ برنگی سکاٹش کلچر کی کتابیں اور روایتی گانوں پر مبنی کتابیں بھی ملتی تھیں، 909 کو دو چار سکاٹش نغمے بھی یاد تھے اس نے وہ گنگنانا شروع کر دئے، رابعہ کی مادر ی زبان ہی انگریزی تھی، 909 سے بہتر اور روانی میں انگریزی بولتی تھی کہیں کہیں اردو بھی بولتی تھی اور بہت صاف گفتگو کرتی تھی یہ سب اس کے مدرسے کا کمال تھا۔ احمدی جماعت کی تمام تعلیمات کا ماخذ ہی اردو تھا۔ تھوڑی دیر بعد 909 نے پروین شاکر کے اشعار پڑھنا شروع کر دئے، رابعہ اس پر یکدم چونکی اور اس کے ذہن کو ایک جھٹکا سا لگا، وہ فوراً بولی کہ اس نے یہ پڑھ رکھا ہے، لیکن بھول چکی ہے، 909 نے رابعہ سے پوچھا کہ پروین شاکر کا وہ کون سا شعر ہے جس میں وہ پیار کی بازی کسی شرط پر کھیلتی ہے؟ رابعہ سوچ میں پڑ گئی، تھوڑی دیر بعد بولی نہیں معلوم،’’You Tell Me‘‘ 909 نے اسے شعر پڑھ کر سنا دیا اور پھر اس کیساتھ ساتھ پوری نظم آہستہ آہستہ توقف کیساتھ پڑھنا شروع کر دی، رابعہ اس کے اشعار کی گہرائیوں میں ڈوب گئی- دوشیزاؤں کا استعمال

مزید پڑھیں : اورایجنٹ 909 نے اپنا کہا سچ کر دکھایا

پڑھنا بند ہوا تو رابعہ نے کہا کہ ایک دوبارہ پڑھ کر سنائو، پلیز! اس دوران وہ بازار آ گیا جہاں 909 رابعہ کو لیجانا چاہتا تھا، 909 نے گاڑی پارک کی اور دونوں نے دکان دکان پھرنا شروع کر دی، 909 نے ہر اس چیز کو خریدنا شروع کر دیا جس سے رابعہ کو رغبت تھی اس میں گڑیا، سپرمین، ٹینک اور خوبصورت بالوں کی پن شامل تھی، رابعہ خریداری دیکھ کر بولی’’ یہ سب کس کیلئے ہے، تم سب وہ کیوں خرید رہے ہو، جو مجھے پسند ہے کیونکہ یہ سب تمھیں پسند نہیں ہو سکتا، ضرور فائزہ نے تمھیں میری پسند ناپسند کے بارے میں بتایا ہے-‘909 نے کہا کہ یہ جو کچھ تمھیں پسند ہے پاکستان کا بچہ بچہ اسے پسند کرتا ہے اور یہ سب ان بچوں کیلئے ہے تمھارے لئے نہیں، رابعہ بولی ’’نہیں میں یقین نہیں کر سکتی، ٹھیک ہے کوئی بات نہیں، ان میں سے کوئی بھی شے میں وصول نہیں کروں گی، تحفے کے طور پر بھی نہیں، میں ان باتوں سے زخمی ہوتی ہوں، کوئی یوں میرا سوچے، بس‘‘909 اس کی فطرت جان چکا تھا اس لئے بے رخی سے بولا، پیچھے چلی آئو اب تمھاری باری ہے، یہ کہہ کر وہ سامنے والی دکان میں گھس گیا- دوشیزاؤں کا استعمال

books1

’’Kama Sotra‘‘ مرد اور عورت کے ملاپ کی نیم برہنہ تصویر

یہ بک سٹور تھا پھر کیا دونوں نے کتابیں پڑھنا اور دیکھنا شروع کر دیں، 909 نے پھر اس مرتبہ درجن سے زائد مختلف اور انتہائی قیمتی کتابیں خرید لیں، اور پھر رابعہ کو اپنے فون پر گھر کے کمرے کی تصویر دکھائی جس میں بیشتر کھلونے، سپرمین ، گڑیا، ٹینک سبھی کچھ تھا اور ڈھیر ساری کتابیں موجود تھیں، 909 نے پلاننگ کے تحت آنے سے قبل ان کھلونوں کا جھنجٹ اکٹھا کیا تھا البتہ کتابیں اس کے پاس بے شمار تھیں، رابعہ تصاویر دیکھ کر دنگ رہ گئی، کتابوں کے نام تک دکھائی دے رہے تھے، 909 اسے تصاویر دکھاتا گیا، پھر ایک انتہائی رنگین کتاب کی تصویر سامنے آئی جس پر درج تھا ’’Kama Sotra‘‘اور نیچے مرد اور عورت کے ملاپ کی نیم برہنہ تصویر موجود تھی، رابعہ نے پوچھا ’’اس کا کیا مطلب ہے‘‘ 909 نے جواب دئے بغیر اگلی تصویر دکھائی تو مغل بادشاہ شاہ جہان، اس کی ملکہ ممتاز بیگم اور شالامار باغ کے باغیچوں کی تصاویر والی کتاب موجود تھی، وہ اس کا ٹائٹل بھی پڑھ کر حیران رہ گئی، 909 نے فون اس کے چہرے کے سامنے سے ہٹالیا اور پھر دونوں دکان سے باہر آ گئے۔ دوشیزاؤں کا استعمال

رابعہ کی 909 کے اپنے لئے جذبات دیکھ کر بیک وقت سوالات کی بوچھاڑ

909 نے رابعہ سے پوچھا اسے کچھ لینا ہے یا نہیں، تو وہ بولی اسے کچھ نہیں خریدنا، یہاں سے چلنا چاہئے، مجھے تم سے باتیں کرنے کا زیادہ مزہ آ رہا ہے، تم بہت دلچسپ انسان ہو، ایسا صرف فلموں یا ناولوں میں ہوتا ہے کہ کوئی شخص دوستی کیلئے کسی دوسرے کو انتی حد تک جانے اور پھر اس اظہار کرنے کیلئے اتنی دور چلا آئے، پھر وہ سب کچھ خریدے جو اس کے دوست کو پسند ہے، یہ سب سچ بھی ہے تو خالص نہیں ہو سکتا، تم مجھے پسند کرتے ہو اور شاید مجھ سے شادی کرنا چاہتے ہو اسلئے مجھے صبح سے بھگا رہے ہو اور میں تمھارے پیچھے پیچھے چلی آ رہی ہوں، یہ سب آخر کیا ہو رہا ہے‘‘وہ بولتی گئی اور909 سنتا گیا، اس دوران وہ گاڑی کے قریب پہنچ چکے تھے، 909 نے سامان گاڑی کے پیچھے رکھا اور ڈرائیونگ سیٹ پر آ کر بیٹھ گیا، رابعہ نے بھی خاموشی گاڑی میں بیٹھ کر خاموشی اختیار کر لی- 909 نے گاڑی چلا دی اور رابعہ کو مخاطب کر کے کہنے لگا کہ کسی کو سوچنا اور اس کو متاثر کرنا کیا جرم ہے ؟ کیا میں تمھاری سوچ اور آزادی کو متاثر کر سکتا ہوں اس کا فیصلہ تمھارے ذہن نے کرنا ہے، میں نے نہیں، میں تو وہ سب کچھ کر رہا ہوں جس کی مجھے آزادی ہے جیسے ہی میں اخلاقیات سے گروں گا تم میرا مستقبل تباہ کر دو گی، میں تمھارا کچھ نہیں بگاڑ سکتا، تمھیں بدل نہیں سکتا البتہ متاثر کر سکتا ہوں،اس کی وجہ شادی یا پھر محبت نہیں، میں ان کیخلاف بھی نہیں لیکن ایسا چاہتا بھی نہیں- دوشیزاؤں کا استعمال

909 کا جواب اور رابعہ کا اظہار اطمینان

تم میرے ساتھ کتابوں کی دنیامیں رہ سکتی ہو، لفظوں کیساتھ کھیل سکتی ہو، تکرار کر سکتی ہو، تمھاری تنقید میرے لئے بہت اہم ہے، چھوڑو یہ شادی اور محبت کی دقیانوسی باتیں، رابعہ لفظ ’’Ridiculous ‘‘ پر سٹپٹا گئی اور فوراً بولی ’’Marriage and Love is not Ridiculous‘‘ یہ تم کیا کہہ رہے ہو اپنے الفاظ واپس لو، 909 نے کہا’’ جس انداز میں تم نے مجھے شادی اور محبت کا الزام دیا ہے کیا یہ سوچ مضحکہ خیز نہیں‘‘میں ایسا کچھ نہیں سوچ رہا تھا، تمھاری باتوں نے مجھے زخمی کیا ہے، مجھے شاید تم سے مزید بات نہیں کرنی چاہئے، رابعہ فوراً خاموش ہو گئی اور پھر اس نے تھوڑی دیر بعد معذرت کر لی، بلکہ اس نے شرمندگی کا اظہار کیا تو909 فوراً بولا ’’نہیں اس کی ضرورت نہیں معافی مانگ لینا کافی ہے،‘البتہ میں تمھیں پروین شاکر کی وہی نظم دوبارہ سناتا ہوں پھر اس نے اسی لب و لہجہ میں اسے پروین شاکر کی وہی نظم سنائی، وہ اس میں مسحور ہو کر رہ گئی-909 نے رابعہ سے پوچھا کہ وہ اس کا مطلب جانتی ہے؟ رابعہ نے کہا کہ وہ مطلب تو جانتی ہے لیکن گہرائی نہیں جانتی، 909 نے ہنستے ہوئے اسے کہا کہ وہ جھوٹ بول رہی ہے، تو وہ زیر لب مسکرا دی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جاری۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

Agent 909 Dr,I.S introduction