51

حکومتی مذاکرات ناکام ،نا بینا افرادکا احتجاج جاری

Spread the love

لاہور( کرائم رپورٹر)ایوان وزیر اعلیٰ اور پنجاب اسمبلی کے سامنے مال روڈ پر ا

حتجاج اور دھرنوں کے باعث ٹریفک کا نظام درہم برہم رہا جس کی وجہ سے

شہریوں کو شدیدذہنی اذیت کا سامنا کرنا پڑا،نا بیناافراد اور حکومت کے درمیان

مذاکرات ہوئے جو کامیاب نہ ہو سکے جس کی وجہ سے مظاہرین کا کلب چوک

مال روڈ پر دھرنا جاری ہے ۔ تفصیلات کے مطابق نا بینا افراد کا ایوان وزیر اعلیٰ

کے سامنے مال روڈ پر کئی روز سے دھرنا جاری ہے جس کی وجہ سے ملحقہ

شاہراہوں پر ٹریفک کا شدید دبائو ہے ۔ پارلیمانی سیکرٹری نذیر چوہان او

رکمشنرلاہورڈویژن آصف بلال لودھی 85نا بینا افراد کو مستقل کرنے کے آرڈر

لے کر دھرنے میں پہنچے تاہم مظاہرین نے آرڈر وصول کرنے سے انکار کرتے

ہوئے کہا کہ تمام نا بینا افراد کو مستقل کرنے اورنوکری دینے کے آرڈرز جاری

ہونے تک احتجاج جاری رکھیں گے ۔نا بینا افراد کا کہنا ہے کہ تمام نابینا افراد کو

ان کی تعلیم کے مطابق نوکریاں دی جائیں اور بھرتیوں کا عمل مکمل ہونے تک

یہاں سے کہیں نہیں جائیں گے ۔نذیر چوہان نے کہاکہ نا بینا افراد کی مستقلی کے

لیٹر لے کر ان کے پاس گئے ،تمام 511 کے لیٹرز قانونی تقاضے پورے کرکے

30 نومبر تک جاری کردیں گے لیکن نا بینا افرادنے مطالبات میں اضافہ کردیا ہے

۔