47

مولانا نے آئین شکنی نہیں کی، بلاول بھٹو، دھرنا میں شرکت کا عندیہ

Spread the love

بہاول پور(جتن آن لائن بیورورپورٹ) چیئرمین پیپلزپارٹی

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے جے یو آئی (ف) کے دھرنے میں شرکت کا اشارہ دیدیا۔ بہاولپور میں میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہم نے شروع دن سے آزادی مارچ کی حمایت کی اور پہلے دن سے پیپلز پارٹی کا موقف رہا ہے ہم دھرنے میں شریک نہیں ہونگے لیکن اگر پیپلز پارٹی کی کور کمیٹی نے فیصلے پر نظرثانی کی تو ہم دھرنے میں شرکت کر سکتے ہیں۔

سانحہ تیز گام کی تحقیقات تک شیخ رشید وزارت دے مستعفی ہوں
رحیم یار خان ٹرین حادثے سے متعلق بات کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا سب سے زیادہ ٹرین حادثے شیخ رشید کے دور میں ہوئے ہیں-انہیں واقعے کی تحقیقات تک مستعفی ہونا چاہیے۔ وزیراعظم سانحے کی تحقیقات کرائیں، جاں بحق افراد کے خاندانوں کی دیکھ بھال حکومت کی ذمہ داری ہے۔ سلیکٹڈ حکومت معیشت اور سیاست سمیت ہر محاذ پر ناکام ہو چکی، سلیکٹڈ حکومت نہیں منتخب حکومت ہی عوام کا خیال رکھ سکتی ہے-

موجودہ حکومت کسی طور آئینی نہیں

عمران خان کشمیر کا سفیر بنتے ہیں اور کرتاپور راہداری کھول رہے ہیں۔ فضل الرحمان نے نہیں کہا وہ خود وزیراعظم ہاؤس جا کر وزیراعظم کو گھسیٹیں گے، مولانا صاحب نے کہا تھا لاکھوں لوگ وزیراعظم کو نکالیں گے۔ اگر موجودہ حکومت اپنی سمت درست نہیں کرتی تو جمہوری قوتیں بھی غیر جمہوری اقدام اٹھانے پر مجبور ہوسکتی ہیں۔ حکومت عوام نہیں کسی اور کی خواہش پر بنی ہے- موجودہ حکومت شہریوں کے سماجی اور آئینی حقوق پامال کررہی ہے، ہم ناصرف حکومت کی کارکردگی پر تنقید کرتے ہیں بلکہ اسکی آئینی حیثیت پر بھی اعتراض اٹھاتے ہیں۔

عمران خان کشمیر پر عوام کے خدشات دور کریں

تمام صوبوں کی طرح صوبہ سندھ میں بھی کمی اور کوتاہیاں ہیں لیکن بہت ضروری ہے حکومتیں آئینی ہوں۔ انہوں نے حکومت وقت کو اپنی خارجہ پالیسی پر نظرثانی کا مشورہ بھی دیا۔ عوام سمجھتے ہیں کشمیر کا سودا کرلیا گیا، تاہم وزیراعظم عمران کو عوام کے خدشات دور کرنے چاہیے۔ قبل ازیں چیئرمین پیپلز پارٹی نے تیز گام ٹرین سانحے میں ہونیوالے زخمیوں کی عیادت کی۔

چیئرمین پیپلزپارٹی