53

پاکستان سمیت دنیا بھر میں کشمیر پر بھارتی تسلط کیخلاف یوم سیاہ

Spread the love

اسلام آباد،سرینگر،پیرس،لندن(جتن آن لائن سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک) یوم سیاہ

پاکستان سمیت دنیا بھر میں موجود پاکستانی و کشمیری شہریوں نے 27 اکتوبر 1947 کو کشمیر پر بھارتی غاصبانہ قبضے کیخلاف یوم سیاہ منایا، ملک بھر میں کاروباری مراکز بند رہے، کشمیریوں کے حق میں جلسے، جلوس، مظاہرے کیے گئے، ریلیاں نکالی گئیں، سفارتخانوں کو وادی کی تازہ ترین صورتحال پر بریفنگ دی گئی اور دنیا کو پیغام دیا گیا کشمیر پر بھارتی قبضے کو مسترد کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: وزیراعظم عمران خان کا بھارتی ہم منصب کو بڑا چیلنج، مودی کی بولتی بند

اتوار کو کنٹرول لائن کے دونوں جانب اور دنیا بھر میں مقیم کشمیریوں نے یوم سیاہ منایا جس کا مقصد دنیا کی توجہ اس بات کی طرف مبذول کرانا تھی کہ انہوں نے مادروطن پر بھارت کا غیر قانونی تسلط مسترد کردیا ہے جو اس نے27 اکتوبر 1947 کے دن قائم کیا تھا۔ یہ وہ دن تھا جب بھارتی فوج مقبوضہ جموں و کشمیر میں داخل ہوئی اور کشمیریوں کی امنگوں اوربرصغیر کی تقسیم کے منصوبے کیخلاف ورزی کرتے ہوئے وہاں اپنا تسلط قائم کرلیا۔

عالمی برادری کشمیریوں سے حق خودارادیت کا کیا وعدہ پوار کرے، دفتر خارجہ

دفترخارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا عالمی برادری بھارت سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ کشمیریوں کو حق خودارادیت دینے سے متعلق اپنے وعدے پورے کرے۔ مقبوضہ کشمیرکے عوام کیساتھ اظہار یکجہتی کیلئے ملک بھر میں ریلیوں اور سیمینارز کے انعقاد سمیت متعدد پروگرام ترتیب دئیے گئے۔

بیرون مملک پاکستانی مشنوں میں خصوصی تقاریب کا اہتمام

بیرون ملک پاکستانی مشنوں نے بھی اس دن کی اہمیت اجاگر کرنے کیلئے پروگرام منعقد کیے،اوورسیزپاکستانیوں، مقامی ارکان پارلیمنٹ، تھنک ٹینکس اور دوسری شخصیات کو ان پروگراموں میں مدعو کیا ۔ اس دن کی مناسبت سے ریڈیو پاکستان، پاکستان ٹیلی ویژن اور نجی ٹی وی چینلز نے بھی خصوصی پروگراموں کا اہتمام کیا۔ مظلوم کشمیریوں کی حالت زار اجاگر کی اور بھارتی انسانیت سوز مظالم کےخلاف آواز حق بلند کی جبکہ عالمی برادری کے سوئے ضمیر کو جگانے کی سعی کی۔

اسلام آباد میں بھارتی ہائی کمیشن کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بھارتی سفارتخانے کے باہر مقبوضہ کشمیر پر بھارتی جبری قبضہ کیخلاف آل پارٹیز حریت کانفرنس نے احتجاجی مظاہرہ کیا- احتجاجی مظاہرے کی قیادت غلام محمد صفی اور عبد الحمید لون کر رہے تھے۔اس موقع پر مقررین کا کہنا تھا ضرورت ہے کہ پاکستان بھی مہاتیر محمد کی طرز پر ایک ٹھوس موقف اختیار کرے۔ کشمیری اپنے خون سے جدوجہد جاری رکھے ہوے ہیں۔ پاکستان کو فعال کردار ادا کرنا ہو گا۔ 27 اکتوبر1947 کو بھارت نے کشمیر میں اپنی جارحیت کا آغاز کیا۔ 5 اگست 2019 کو بھارت نے اس جارحیت اور غاصبانہ قبضے کو مزید آگے بڑھایا۔

دنیا کی بے حسی بتا رہی ہے کشمیر پر پاک بھارت جنگ یقینی، مقررین

آج کا دن سیاہ نہیں سیاہ ترین ہے، کوئی کشمیریوں کی آہ و بکا کو نہیں سن رہا کیونکہ وہ مسلمان ہیں۔ آج اسی لاکھ کشمیری محصور ہیں تاہم کسی کو پرواہ نہیں، ہمیں سمجھ لینا چائیے ہم کو یہ جنگ اکیلے ہی لڑنا ہے۔ عمران خان نے حوصلہ افزاء تقریر کی لیکن وہ مزید اپنے قدم آگے بڑھائیں ہم ان کیساتھ ہیں- جلد یا بدیر جنگ ہو کے رہے گی۔

آزاد کشمیر میں جلسے، جلوس، ریلیاں، بھارتی قبضے کی شدید مذمت

آزاد کشمیر میں کشمیر لبریشن سیل، حریت اور مذہبی تنظیموں کے زیر اہتمام ریاست کے تمام چھوٹے اور بڑے شہروں میں ریلیاں احتجاج اور مظاہرے کئے گے۔ آزاد کشمیر کے وزیراعظم کی ہدایت پر اضلاع اور تحصیل انتظامیہ کی طرف سے یوم سیاہ منانے کیلئے تقریبات کا اہتمام کیا گیا۔ یوم سیاہ کے حوالے سے بڑی تقریب دارلحکومت مظفرآباد میں ہوئی جس کی صدارت وزیراعظم راجہ فاروق حیدرخان نے کی- تقریب کے اختتام پر ریلی نکالی گئی۔ آزاد کشمیر کے تینوں ریڈیو سٹیشنز نے یوم سیاہ کے سلسلے میں خصوصی پروگرام نشر کیے۔

مقبوضہ وادی میں کرفیواور پابندیوں کے باوجود مظاہرے، سارا دن کشمیر بنے گا پاکستان کے نعرے گونجتے رہے، بھارتی فوج پریشان

مقبوضہ کشمیر میں یوم سیاہ کے سلسلے میں مکمل ہڑتال رہی جہاں پہلے ہی گزشتہ 85 روز سے مکمل ہڑتال ہے۔ وادی کے بازار اور مارکیٹیں بند رہیں جس کے سبب غذائی بحران مزید سنگین ہو گیا۔ کرفیو کے باوجود جگہ جگہ احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ شرکا کشمیر بنے گا پاکستان کے نعرے لگاتے رہے۔ بھارتی فوج جگہ جگہ مظاہروں سے بوکھلاہٹ کا شکار رہی-

فرانس اور برطانیہ میں بھی کشمیر پر بھارتی تسلط کیخلاف مظاہرے

کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے فرانس کے درالحکومت پیرس کے اہم مقام ایفل ٹاور کے سامنے، برطانیہ کے دارالحکومت لندن بھرپور احتجاجی مظاہرہ کئے گئے۔ جن میں کشمیری قائدین، مقامی پارلیمنٹرینز اور عوام کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ مظاہرین سردی کے باوجود گھنٹوں انڈیا، مودی کیخلاف شدید نعرے بازی کرتے رہے، مظاہرین نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پربھارتی افواج کے مقبوضہ کشمیرمیں مظالم، بربریت کا نشانہ بننے والوں کی تصاویر آویزاں تھیں- مظاہرین نے عالمی برادری سے کشمیر پر بھارتی تسلط ختم، کشمیریوں سے حق خودارادیت کا کیا وعدہ جلد ایفا کرنے کا مطالبہ کیا-

بنگلہ دیش میں کشمیر پر بھارتی قبضے کیخلاف یوم سیاہ

بنگلہ دیش میں بھی کشمیر پر بھارتی غاصبانہ قبضے کے دن کو یوم سیاہ کے طور پر منایا گیا۔ دارالحکومت ڈھاکہ میں پریس کلب کے سامنے سول سوسائٹی کے زیر اہتمام پر امن احتجاج ہوا، مقررین نے کشمیریوں پر بھارتی ریاستی ظلم اور بربریت کی شدید مذمت کی۔ کشمیری مسلمان بھائیوں کیساتھ بھرپور یکجہتی کا مظاہرہ کیا- بھارت سے کشمیریوں کو ان کا بنیادی حق خود ارادیت دینے کا مطالبہ کیا۔
یوم سیاہ