65

احتساب ہو تو ایسا، نظام ہو تو ایسا؟ ۔۔ جانیئے اور پھر فیصلہ خود کریں

Spread the love

لسبن (جتن آن لائن ویب رپورٹ) احتساب ہو تو ایسا

یوں تو وطن عزیز میں عوام کیلئے صحت کی سہولیات کے حوالے سے ہم سب آگاہ ہیں کہ ہمارے سرکاری و نجی ہسپتال علاج گاہیں کم اور پیسہ کمانے کے اڈے دکھی انسانیت کی خدمت گاہیں نہیں انسانیت سوز سلوک کی آماجگا ہیں زیادہ ہیں-

وطن عزیز میں صحت کی سہولیات کے بھاشن اور اندوہناک خبریں

ارباب اختیار کے عوام کو بہتر سے بہتر طبی سہولیات کی فراہمی کے دعوے اور بھاشن اپنی جگہ ہیں، جبکہ آئے روز ہمیں ایسی اندوہناک خبریں سننے کو ملتی ہیں کہ پاﺅں تلے سے زمین نکل جاتی ہے، سوائے رب تعالیٰ کے دوسرا کوئی یاد ہی نہیں رہتا اور بے اختیار دل سے دعا نکلتی ہے میرے اللہ ” دشمن کو بھی ہسپتال جانے سے اپنی حفظ وامان میں رکھنا”۔

شکایات کے کئی ہمالیہ …. کارروائی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا

ڈاکٹروں، نرسوں کے ناروا رویے، جعلی ادویات کیساتھ ساتھ مہنگاعلاج معالجہ ہمارے ملک کا خاصہ بن چکا ہے، احتساب سب کیلئے، محض ایک نعرہ ہے، مسیحا اور دیگر طبی عملہ کیخلاف شکایات کے کئی ہمالیہ موجود ہیں مگر کسی کیخلاف کارروائی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

اشرافیہ کے سوا باقی عوام کا کڑھ کڑھ کر جینا مقدر

وطن عزیز کی اشرافیہ سوا باقی ملک کے عوام کڑھ کڑھ کر زندگی بسر کرنے پر مجبور ہیں، کیونکہ ناانصافی، اقرباءپروری، کریشن، بدعنوانی، بدمعاشی سمیت جس کی لاٹھی اس کی بھینس کا دور دورہ ہے۔

لیکن —– پرتگال سے خبر آئی ہے

وطن عزیز سے کئی درجے گئے گزرے ملک پرتگال میں ایک خاتون کے ہاں ایسا بچہ پیدا ہوا ہے جس کا چہرہ ہی نہیں، اس طرح بچے کی پید ائش کے واقعہ کے بعد متعلقہ حکام نے خاتون کا علاج معالجہ کرنیوالے ڈاکٹر کو خاتون کے بطن میں بچے میں موجود خرابی کے بارے میں پتا نہ لگا سکنے اور علاج میں غفلت برتنے پر کام سے روک دیا ہے۔

پرتگال کی عدلیہ نے بھی کارروائی کا آغاز کر دیا

میڈیا رپورٹ کے مطابق پرتگال کی میڈیکل ایسوسی ایشن کی انضباطی کمیٹی کے متفقہ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ڈاکٹر کو چھ ماہ کیلئے معطل کیے جا نے کیساتھ اس کیخلاف چھ دیگر شکایات کے تحت بھی قانونی کارروائی کی جارہی ہے۔ ان میں ایک شکایت 2013 کی ہے۔ کمیٹی نے بغیر چہرے بچے کی پیدائش کا معاملہ میڈیا میں آنے کے بعد اسکی تحقیقات کھولنے کا فیصلہ کیا۔ پرتگال کی عدلیہ بھی بچے کے والدین کی شکایت پر مذکورہ ڈاکٹر کیخلاف قانونی کارروائی کر رہی ہے۔

غفلت کے مرتکب ڈاکٹر کو کڑی سزا دینا ضروری، صدر میڈیکل ایسوسی ایشن

جنوبی پرتگال کی میڈیکل ایسوسی ایشن کی صدر الیکژنڈر ویلینٹیم لورینزو نے کہا ہے ڈاکٹر آرٹور کاروالہو کی جانب سے غفلت برتنے کے ثبوت ملے ہیں، انہیں اس کی کڑی سزا ہوسکتی ہے۔ اس کیس میں ڈاکٹر کا معطل کرنا ضروری تھا کیونکہ اس کے نتیجے میں حاملہ خاتون کی شکایت کا الزالہ کرنا اور دیگر ڈاکٹروں کی ساکھ کو بچانا ہے۔ (احتساب ہو تو ایسا)

افسوسناک واقعہ 7 اکتوبر کو سابرنارڈو ہسپتال میں رونما ہوا

مقامی میڈیا کے مطابق رواں ماہ 7 اکتوبرکو دارالحکومت سے 40 کلو میٹر دور
سا برنارڈو ہسپتال میں ایک آپریشن کے دوران خاتون نے ایک بچے کو جنم دیا۔ اس بچے کی آنکھیں، ناک اور دماغ کا کچھ حصہ نہیں تھا۔ اس کے علاوہ کئی دیگر نقائص بھی موجود تھے۔ خاتون کے حمل کے دوران دیکھ بحال کرنیوالے ڈاکٹر نے پیٹ میں موجود بچے کے نقائص کے بارے میں کسی قسم کی جان کاری حاصل نہیں کی جس کی بنا پر اسے کام سے روک دیا گیا۔ ( احتساب ہو تو ایسا )

واقعہ نے پورے پرتگال کو ہلا کر رکھ دیا: میڈیا

والدین کا کہنا تھا حمل کے چھ ماہ کے بعد جب ڈاکٹر سے کہا گیا وہ بچے کے بارے میں تفصیلی جان کاری کرے تو اس نے بغیر کسی علاج معالجے یا دیکھ بحال کے انہیں بچے کے تندرست ہونے کی یقین دہانی کرائی تھی۔ واقعے نے پورے ملک کو ہلا کررکھ دیا۔ ( احتساب ہو تو ایسا )

کیا ہم پرتگال جیسا ہی نظام رائج نہیں کرسکتے؟

کیا ہمارے ملک جسے ہم بڑے فخر سے ارض پاک کہتے ہیں جس میں کوئی شک بھی نہیں کہ یہ واقعی پاک دھرتی ہے لیکن ہم سب کی من حیث القوم بد عمالیوں کی وجہ سے آج ایسے دوہراہے پر کھڑی ہے کہ الامان الاحفیظ ۔۔۔ کیا ہم کم از کم پرتگال جیسا نظام بھی وطن عزیز میں رائج نہیں کر سکتے ۔۔۔؟دعا ہے اللہ تعالیٰ ہم سب کو رشدوہدایت عطا فرمائے ۔۔۔الٰہی آمین

احتساب ہو تو ایسا