68

قومی اسمبلی میں اینٹی منی لانڈرنگ ترمیمی بل منظور

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) قومی اسمبلی نے اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ 2010ء میں

ترمیم کا بل کثرت رائے سے منظور کر لیا ہے۔ ترمیمی بل کے تحت منی لانڈرنگ

میں ملوث افراد کی سزائیں بڑھا دی جائیں گی۔بل کے تحت مشکوک لین دین میں

ملوث افراد کو دس سال تک سزا مل سکے گی۔ منی لانڈرنگ میں ملوث افراد کو

اب پچاس لاکھ روپے تک جرمانہ بھی ہوگا۔منی لانڈرنگ اب قابل دست اندازی جرم

ہوگا۔ منی لانڈرنگ میں ملوث شخص کو تفتیشی افسر گرفتار کرکے اس کی

گرفتاری کی وجوہات سے اگاہ کرے گا۔مالیاتی انٹیلی جنس یونٹ مشکوک

ٹرانزیکشنز کی تحقیقات کرے گا۔ بل کو فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی سفارشات

کے مطابق بنایا گیا ہے۔ اینٹی منی لانڈرنگ کے قانون کو بین الاقوامی معیارات

کے ساتھ منظم کیا جائے گا۔فارن ایکس چینج ریگولیشن ترمیمی بل 2019ء اور

اینٹی منی لانڈرنگ ترمیمی بل 2019ء، دونوں بل وزیر مملکت پارلیمانی امورعلی

محمد خان نے پیش کیے تھے۔دریں اثنا وزارت قانون نے نیب قوانین میں ترمیم کا

مسودہ تمام وزارتوں کو بھجوا دیا، وزارتوں سے نیب قانون میں ترامیم سے متعلق

تجاویز طلب کر لیں۔ نجی ٹی وی کے مطابق وزارت قانون نے اپوزیشن جماعتوں

اور میڈیا سے بھی تجاویز مانگ لیں، تجاویز ملنے کے بعد نیب قوانین میں ترمیم کا

مسودہ کابینہ میں پیش کیا جائے گا، نیب قانون میں ترمیم کے مسودہ پر اب تک 2

وزارتوں سے تجاویزموصول ہوگئیں۔