60

پاکستانی روپے کی قدر مستحکم، غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافے کی نوید

Spread the love

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستانی روپے

آئی ایم ایف نے کہا ہے پاکستانی روپے کی قدر اب مستحکم ہو چکی ہے۔ خلیج

ٹائمز کے مطابق بیرونی زرِمبادلہ آنے اور مارکیٹ کی جانب سے خود ڈالر کا

ریٹ متعین کیے جانے کے باعث پاکستانی روپے کی قدر بہتر ہوئی ہے۔ آئی ایم

ایف نے اپنے تازہ نوٹ میں کہا ہے اگرچہ حکام کا معاشی اصلاحات کا پروگرام

ابھی ابتدائی مراحل میں ہے، لیکن کچھ اہم شعبوں میں ترقی ہوئی ہے۔ مارکیٹ سے

طے شدہ تبادلے کی شرح میں منتقلی نے بیرونی توازن پر مثبت نتائج کی فراہمی

شروع کردی ہے۔ شرح تبادلہ میں اتار چڑھاؤ کم ہوا ہے، مالیاتی پالیسی مہنگائی پر

قابو پانے میں مدد فراہم کررہی ہے اور سٹیٹ بینک نے اپنے زرمبادلہ کے تبادلے

کو بہتر بنایا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: سٹیٹ بینک آف پاکستان کی “بد” اور “خوش” خبریاں

دوسری طرف ایشیائی ترقیاتی بنک نے ایشین ڈویلپمنٹ آؤٹ لک کے نام سے

جاری رپورٹ میں کہا ہے کہ معیشت کے استحکام کیلئے آئی ایم ایف پروگرام

اوراصلاحات کے پروگرام کے نتیجے میں غیرملکی سرمایہ کاروں کا پاکستان

پراعتماد بحال ہواہے، اس پروگرام کے نتیجے میں کثیرالجہتی اداروں اوربین

الاقوامی شراکت داروں کی جانب سے پاکستان میں براہ راست غیرملکی سرمایہ

کاری میں اضافہ متوقع ہے۔ رپورٹ کے مطابق گوادر میں سعودی آئل ریفائنری

کے پراجیکٹ کو فعال کرنے اوراس ضمن میں جاری مالی سال کے دوران ایک

ارب ڈالر مالیت کی سرمایہ کاری سے پاکستان کی معیشت کو فائدہ ہوگا، اس سے

مالی سال 2020ء کے اختتام تک سٹیٹ بنک کے پاس زرمبادلہ کے ذخائر10 ارب

ڈالر سے تجاوز کرجائیں گے۔ حکومتی اقدامات کے نتیجے میں ملکی معیشت کی

بحالی کا عمل شروع ہوچکا، جاری مالی سال میں پاکستان کی اقتصادی بڑھوتری

2.8 فیصد تک رہنے کی توقع ظاہرکی گئی ہے۔

پاکستانی روپے