101

موجودہ حکومت کا اسلامی فلاحی ریاست کے تصور کو عملی جامہ پہنانے کا پختہ عزم ہے،عمران خان

Spread the love

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) موجودہ حکومت نے اسلامی فلاحی ریاست کے تصور

کو عملی جامہ پہنانے کے پختہ عزم کے ساتھ عوامی آراء کے حصول کیلئے

تاریخی ’’احساس‘‘ حکمت عملی دستاویز کا اجراء کرتے ہوئے ملک میں شفافیت

کا نیا کلچر متعارف کرایا ہے جو غربت کے خاتمہ اور پسماندہ طبقات کی بہبود

کیلئے وزیراعظم کے احساس پروگرام پر عملدرآمدکے سلسلہ میں ایک ٹھوس قدم

ہے، کثیر الشعبہ جاتی اور کثیر الجہتی احساس حکمت عملی ایک تاریخی دستاویز

ہے جو نہایت فصیح و بلیغ انداز میں حکمت عملی کو پیش کرتا ہے۔ منگل کو

جاری حکمت عملی دستاویز میں وزیراعظم عمران خان نے اپنے پیغام میں کہا کہ

حکومت پاکستان کو اسلامی نظریہ کے اصولوں کی بنیاد پر فلاحی ریاست بنانے کا

تصور رکھتی ہے جو حضرت محمدؐ نے مدینہ میں قائم کی۔ انہوں نے کہا کہ ہم

ایسی فلاحی ریاست قائم کرنے کا عزم رکھتے ہیں جہاں قانون کی حکمرانی، میرٹ

کی بالادستی اور طرز حکمرانی میں شفافیت ہو، جہاں سب کیلئے برابر مواقع

دستیاب ہوں اور جہاں ضرورت مند کو سماجی تحفظ حاصل ہو۔ یہاں یہ امر قابل

ذکر ہے کہ یہ ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ ایک سرکاری حکمت

عملی دستاویز کو بیک وقت سرکاری اداروں اور عوام کے ساتھ شیئر کیا گیا ہے۔

یہ وزیراعظم کے فلاحی ریاست کے وژن کی وضاحت کرتا ہے۔ 57 صفحات پر

مشتمل ’’احساس حکمت عملی‘‘ پروگرام کی ضرورت اور پس منظر، وژن،

مقاصد، اہداف، اصولوں، عملدرآمد کا تفصیلی احاطہ کیا گیا ہے۔ وزیراعظم کی

معاون خصوصی برائے سماجی تحفظ اور تخفیف غربت ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے اپنے

ایک ٹویٹ میںاحساس حکمت عملی کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ اس دستاویز

کو عوامی مشاورت کیلئے پیش کرنے کا مقصد ایک ایسے نئے شفاف وکشادہ کلچر

کو فروغ دینا ہے جس میں حکومت اپنے ملک کے بہترین اور روشن دماغوں کی

مشاورت سے کام کرنا چاہتی ہے۔ انہوں نے feedback@pass.gov.pk پر عوام

کو اپنی آراء دینے کی درخواست کی۔ یہ دستاویزخاتمہ غربت اور معاشی تحفظ

وژن کی ویب سائٹ پر موجود ہے۔ احساس حکمت عملی کرپشن کا خاتمہ اور

گورننس کی بہتری، سماجی تحفظ، غریبوں کیلئے ذریعہ معاش کی فراہمی اور

افرادی قوت کی تشکیل کے چار ستونوں پر استوار ہے۔ دستاویز کے مطابق

’’احساس حکمت عملی، حکومت کے اس وژن کا خاکہ پیش کرتی ہے جو احساس

کی بنیاد ہے، وہ اصول جو احساس کی محرک قوت ہیں، وہ سیاق و سباق جس کے

پس منظر میں احساس تشکیل دیا گیا ہے، نظریہ تبدیلی، جو احساس کے تصور کی

تائید کرتا ہے اور وہ چار ستون جن کی بنیاد پر احساس کے اہداف، مقاصد،

پالیسیوں، پروگراموں اور اقدامات کو تشکیل دیا گیا ہے۔ یہ دستاویز ان تفصیلات

کی وضاحت بھی کرتی ہے جس پر 21ویں صدی کی فلاحی ریاست کا تصور اور

اس کی تشکیل کے ذرائع پر بحث کی گئی ہے۔ حکمت عملی میں احساس کے

مقاصد، اہداف اور پروگرام کی وضاحت کرتے ہوئے بتایا گیا کہ حکومت اس

حقیقت کا ادارک رکھتی ہے کہ بڑے پیمانے پر غربت میں کمی اور غریبوں کی

زندگیوں میں نمایاں تبدیلی مضبوط اور مسلسل معاشی گروتھ اور حکومت کی اس

گروتھ کے فوائد تمام آبادی تک یکساں طور پر بہم پہنچانے کی صلاحیت سے

جڑی ہوئی ہے۔ علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان نے خزانہ، منصوبہ بندی،

تجارت ڈویژنوں اور سرمایہ کاری بورڈ کو ہدایت کی ہے کہ وہ سرمایہ کاروں کو

بہترین سہولیات اور مراعات پیش کرنے کیلئے علاقائی ممالک کے کامیاب سرمایہ

کاری ماڈلز کی پیروی کریں جبکہ متوقع سرمایہ کاروں کیلئے سرمایہ کاری اور

صنعتوں کے قیام میں آسانی پیدا کرنے کیلئے خصوصی اقتصادی علاقوں (ایس ای

زیز) کو بجلی، گیس اور رابطہ سڑکوں جیسی سہولیات کی فراہمی کے عمل کو

بھی تیز کیا جائے۔ انہوں نے یہ ہدایات منگل کو اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت

کرتے دیں جو صنعتی شعبوں میں سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے ساتھ ساتھ

کسی اور مقام سے پاکستان میں یونٹوں کے قیام کیلئے پیش کی جانے والی مراعات

کا جائزہ لینے کیلئے منعقد ہوا۔ اجلاس میں وفاقی وزیر اقتصادی امور محمد حماد

اظہر، وزیر منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار، وزیر توانائی عمر ایوب خان،

مشیر تجارت عبدالرزاق دائود، وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ سیّد زبیر حیدر گیلانی،

سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری خارجہ امور، سیکرٹری منصوبہ بندی، ممبر پالیسی

ایف بی آر اور سینئر حکام نے شرکت کی۔