112

اسرائیل پر وائٹ ہائوس کی جاسوسی کا شبہ، ٹرمپ کا ماننے سے انکار

Spread the love

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) اسرائیل جاسوسی شبہ

امریکہ میں وائٹ ہائوس سمیت دیگر حساس مقامات کے قریب سے جاسوسی کے

آلات برآمد کیے گئے ہیں، جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے اسرائیل کی

جانب سے جاسوسی کیے جانے کے امکان پر یقین کرنا مشکل ہے۔ غیر ملکی خبر

ایجنسی کے مطابق جاسوسی کے آلات میں اسٹنگ ریز موبائل ڈیوائس بھی شامل

ہے جو کسی کی بھی موجودگی کے مقام اور شناخت کی معلومات فراہم کرتی ہے۔

ذرائع کے مطابق اسٹنگ ریز کا مقصد ممکنہ طور پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ

کی جاسوسی کرنا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: امریکی ریاست ٹیکساس کی عدالت کا اسرائیل کو بڑا جھٹکا

سابق امریکی اہلکار نے دعویٰ کیا ہے کہ ایف بی آئی اور دیگر ایجنسیوں نے

جاسوسی کے آلات کا تجزیہ کیا ہے اور انکا کہنا ہے کہ جاسوسی کے ان آلات

کے پیچھے اسرائیل کا ہاتھ ہوسکتا ہے، معلوم نہیں ایسا کرنیوالے اپنے مقصد میں

کامیاب ہوئے یا نہیں، تاہم اس معاملے پر امریکی صدر کا کہنا ہے کہ وہ نہیں

سمجھتے کہ اسرائیل نے ہماری جاسوسی کی تھی کیونکہ اسرائیل کی جانب سے

جاسوسی پر یقین کرنا مشکل ہے۔

مزید پڑھیں: امریکہ کا جدید ترین میزائل ڈیفنس سسٹم”تھاڈ”اسرائیل میں نصیب

دوسری جانب اسرائیل نے بھی اس معاملے پر اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا ہے

کہ ہم نے امریکی صدر کے دفتر کی جاسوسی نہیں کی، خبر بے بنیاد اور جھوٹا

پراپیگنڈہ ہے۔ اسرائیلی وزیراعظم نے بھی اس واقعے کی تردید کی کرتے ہوئے

بتایا کہ میری واضح ہدایت ہے کہ امریکہ میں کوئی خفیہ رابطہ یا کسی بھی قسم

کی کوئی جاسوسی نہیں ہوگی۔

اسرائیل جاسوسی شبہ