134

سرینگر، جلوس عزا پر بھارتی فوج کی شیلنگ، فائرنگ، متعدد زخمی

Spread the love

سرینگر(جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) سرینگر جلوس عزا

مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے کرفیو اور پابندیوں کو 34 روز ہو گئے،

ہزاروں کشمیریوں کے پابندیوں کے باوجود بھارت کیخلاف مظاہرے جاری ہیں

جبکہ قابض بھارتی سکیورٹی فورسز کی جانب سے مظاہرین پر آنسو گیس اور

پیلٹ گنز کی فائرنگ سے متعدد کشمیری مظاہرین کے زخمی ہونے کی اطلاعات

ہیں۔ وادی بھر میں ٹیلی فون، انٹرنیٹ سروسز بدستور بند ہیں، اخبارات بھی شائع

نہیں ہورہے۔ قابض بھارتی انتظامیہ نے کشمیر کو چھاؤنی میں تبدیل کررکھا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: مقبوضہ کشمیر میں بھارتی دہشتگردی، نظام زندگی مفلوج

ادھر بھارتی فورسز نے ہفتہ کے روز وادی کے دارالحکومت سرینگر کے علاقے

حسن آباد رعنا واری میں محرم الحرام کے جلوس پر طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا

جس کے نتیجے میں چار صحافیوں سمیت متعدد افراد زخمی ہو گئے۔ کشمیرمیڈیا

سروس کے مطابق بھارتی فورسز نے جلوس کے شرکاء پر پیلٹ فائر کئے، آنسو

گیس کے گولے داغے اور لاٹھی چارج کیا۔ بھارتی فورسز نے جلوس کی عکس بند

ی کرنے والے صحافیوں کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا جس سے چار صحافی بھی

زخمی ہوگئے۔ بھارتی فورسز نے تین صحافیوں شاہد خان، مدثر ڈار اور بلا ل بٹ

کو پکڑ کر لاٹھیوں اور بندوق کے بٹوں سے تشدد کا نشانہ بنا کر زخمی کیا جبکہ

بھارتی فورسز کے اہلکاروں کی پیلٹ فائرنگ سے بھی ایک فوٹو جرنلسٹ زخمی

ہوگیا۔ بھارتی فورسز نے ایک فوٹوجرنلسٹ کا کیمرہ بھی توڑ دیا۔

مزید پڑھیں: امریکہ کا مقبوضہ کشمیرمیں عائد پابندیاں ہٹانے کا مطالبہ

واضح رہے مودی سرکار کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی آئین میں خصوصی

حیثیت کے خاتمے کے بعد سے پوری وادی میں مسلسل کرفیو نافذ ہے جس کی

وجہ سے اشیائے خورو نوش اور ادویات کی بھی شدید قلت ہے، عالمی برادری اور

انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کی جانب سے بھارت سرکار کو وادی سے کرفیو

ہٹانے کے مطالبے کے باوجود نئی دہلی سرکار ہٹ درہمی کا مظاہرہ جاری رکھے

ہوئے ہے جس کی وجہ سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی المیہ کا شدید خطرہ ہے-

سرینگر جلوس عزا