75

اب بھارت سے مذاکرات کا امکان نہیں،عمران خان

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارت سے مزید

مذاکرات کے کوئی امکان نہیں اور اب اس کا کوئی فائدہ نہیں۔امریکی اخبار

نیویارک ٹائمز کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ بھارت

سے مزید بات چیت کا کوئی فائدہ نہیں ہے، پاکستان اور بھارت ایٹمی طاقت ہیں اور

دونوں آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر کھڑے ہیں۔وزیراعظم کا کہناتھا کہ خدشہ ہے کہ

یہ کشیدگی اور بڑھے گی اور دوایٹمی طاقتوں کے درمیان یہ تناؤ دنیا کے لیے بھی

باعث فکر ہونا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ خطے میں کشیدگی بڑھنے کا امکان ہے

اور کچھ بھی ہوسکتا ہے لہذا امریکی صدرٹرمپ کو انتہائی تباہ کن صورتحال کے

خدشے سے آگاہ کردیا ہے۔ عمران خان نے واضح کیا کہ پاکستان بھارت سے بات

چیت کے لیے بہت کچھ کر چکا ہے اب مزید کچھ نہیں کر سکتا،بھارت نے پاکستان

کی امن مذاکرات کی پیشکش کو کمزوری سمجھا، اگرحملہ ہوا تو پاکستان بھارت

کو بھرپورجواب دینے پرمجبور ہوگا، 2 جوہری قوتوں کے درمیان جنگ ہوتی ہے

تو کچھ بھی ہوسکتا ہے، کشیدگی بڑھنے کا خطرہ ہے، دنیا کو اس صورتحال سے

خبردار رہنا چاہیے،انہوں نے کہا کہ اس وقت نئی دہلی میں جو حکومت ہے وہ

نازی جرمنی جیسی ہی ہے۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اس وقت 2 ایٹمی

طاقتیں ایک دوسرے کی آنکھ میں آنکھ ڈالے ہوئے ہیں، کچھ بھی ہوسکتا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں 80 لاکھ کشمیریوں کی زندگیوں کو

خطرات لاحق ہیں جبکہ خدشہ ہے کہ وادی میں نسل کشی ہونے والی ہے۔انٹرویو

میں انہوں نے باور کروایا کہ اپنے دورہ امریکا کے دوران انہوں نے امریکی

صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو خطے کی انتہائی تباہ کن صورتحال کے خدشے سے آگاہ

کردیا۔بھارت کی ہٹ دھرمی سے متعلق بات کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان

نے کہا کہ بدقسمتی سے بھارت نے میری باتوں کو محض اطمینان کے لیے لیا،

پاکستان بھارت سے بات چیت کے لیے بہت کچھ کر چکا ہے اب مزید کچھ نہیں

کرسکتا۔دونوں ممالک کے درمیان حالیہ کشیدگی مقبوضہ وادی میں بھارتی

حکومت کے یکطرفہ اقدام، لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر بھارتی فوج کی بلا

اشتعال فائرنگ کی صورتحال کے پیش نظر وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ بھارت

سے مذاکرات کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں مسلم

اکثریتی علاقوں میں ہندوں کو آباد کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔وزیراعظم

عمران خان نے کہا کہ ہمیں خدشہ ہے بھارت، پاکستان کے خلاف جنگ کے بہانے

ڈھونڈے گا، وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آج دنیا میں مذہب و عقائد کی

بنیاد پر تشدد سے متاثرہ افراد کا دن ہے ، دنیا کی توجہ بھارتی جارحیت کا شکار

کشمیریوں کی جانب سے مبذول کرانا چاہتا ہوں،عالمی براداری کو مقبوضہ کشمیر

میں بھارتی بربریت کا نوٹس لینا چاہئے ٹویٹر پر اپنے بیان میں انھوں نے کہا

ہے کہ آج دنیا میں مذہب و عقائد کی بنیاد پر تشدد سے متاثرہ افراد کا دن ہے ، دنیا

کی توجہ بھارتی جارحیت کا شکار کشمیریوں کی جانب سے مبذول کرانا چاہتا

ہوں،عالمی براداری کو مقبوضہ کشمیر میں بھارتی بربریت کا نوٹس لینا چاہئے ،

آج کشمیری تمام بنیادی حقوق اور آزادی سے محروم ہیں ،بھارت نے مقبوضہ

کشمیر پر ناجائز قبضہ کیا ہوا ہے، بھارتی قابض افواج نے کشمیریوں سے عبادت

کا حق بھی چھین لیا ہے، عید الاضحیٰ میں کشمیریوں کو نماز پڑھنے کی اجازت

نہیں دی گئی ، آج دنیا مذہبی بنیاد پر تشدد کا شکار افراد سے اظہار ہمدردی کر

رہی ہے، دنیا کشمیریوں کی نسل کشی کے خلاف ٹھوس لائحہ عمل دے۔