171

انسداد پولیو مہم،وفاق اور صوبائی حکومتیں موذی مرض کے خاتمے کیلئے موثر مہم چلائیں، عمران خان

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیراعظم عمران خان نے پولیو کے نئے کیسز سامنے

آنے پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا پولیو کا خاتمہ حکومت کی سب سے اہم ترجیح

ہے، پولیو آئندہ آنیوالی نسلوں کو متاثر کرتا ہے، وفاقی و صوبائی حکام انسداد پولیو

کیلئے موثر آگاہی کے اقدامات اٹھائیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز

اپنی زیر صدارت پولیو کی صورتحال پر اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے

ہوئے کیا ، اجلاس میں فوکل پرسن برائے انسداد پولیو پروگرام بابر بن عطا نے

وزیر اعظم عمران خان اور دیگر شرکاء کو بریفنگ دی اور کہا عالمی مانیٹرنگ

بورڈ نے 2017-18 میں انسداد پولیو مہم میں خامیوں کی نشاندہی کی، بر وقت

خامیاں دور نہ کرنے سے رواں برس پولیو کیسز کی تعداد میں اضافہ ہوا، پولیو

کے خاتمے کیلئے چار جہتی نئی حکمت عملی بنائی ہے،بابر بن عطا نے پولیو

ویکسین سے متعلق من گھڑت افواہوں کے خاتمے کیلئے بھی اقدامات سے آگاہ کیا

اور کہا پولیو ویکسی نیشن کیخلاف پراپیگنڈے کے خاتمے کیلئے میڈیا پر آگاہی

مہم چلا رہے ہیں۔ انسداد پولیو سے متعلق جائزہ اجلاس میں خیبر پختونخوا اور

بلوچستان کے وزرائے اعلیٰ ، کے پی کے ،پنجا ب اور سندھ کے چیف

سیکریٹریز، معاون خصوصی نیشنل ہیلتھ ڈاکٹر ظفر مرزا، وزیر صحت خیبر

پختونخوا ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان، پاکستان میں کینیڈا کی ہائی کمشنر ونڈی گلمور،

بل اینڈ ملینڈا گیٹس ایسوسی ایشن کے ڈاکٹرٹم پیٹرسن، عالمی ادارہ صحت کی ڈاکٹر

پلیتھا گنرستھناما ہیپا لاکی اور یونیسیف کے نمائندہ ڈاکٹر جان اگبر نے شرکت کی۔

اجلاس میں پاک فوج کی معاونت سے ملک کے دور دراز علاقوں تک رسائی اور

بچوں کو انسداد پولیو کے قطرے پلانے کا بھی فیصلہ کیا گیا جبکہ بل گیٹس کی

جانب سے لکھا گیا خط بھی پیش کیا گیا، جس میں بل گیٹس نے کہا وہ

خیبرپختونخوا میں پولیو کیسز کے بڑھنے پر اجلاس طلب کرنے پر وزیراعظم کے

مشکور ہیں، پاکستان میں پولیو کے بڑھتے واقعات باعث تشویش ہیں بل اینڈ ملینڈا

گیٹس فاؤنڈیشن کے پاکستان سے اشتراک کا فروغ دیکھ رہا ہوں، انسداد پولیو

کیلئے پاکستان سے تعاون جاری رہے گا، پاکستان کی صورتحال انسداد پولیو کی

کوششوں کیلئے خطرہ ہے، خطرناک پولیو وائرس پاکستان بھر میں پھیل رہا ہے،

خیبرپختونخوا میں پولیو کیسزوائرس پھیلنے کا ثبوت ہے، ہمیشہ کی طرح پولیو

کے خاتمے کیلئے پاکستان سے تعاون کیلئے پرعزم ہیں۔پولیو کو ختم کرنے کیلئے

والدین کے ذہنوں سے شکوک نکالنا ضروری ہیں، حفاظتی ٹیکہ جات کے پروگرام

پر حکومت کی خصوصی توجہ درکار ہے، نیز ثانیہ نشتر کیساتھ تخفیف غربت

سے متعلق جون میں ملاقات ہوئی، پاکستان میں تخفیف غربت سے متعلق طویل

المدتی کام کرنا چاہتے ہیں، احساس پروگرام کیلئے ڈیلیوری یونٹ قائم کرنا چاہتے

ہیں۔بعد ازاں وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت خیبر پختونخوا کی اہم

سرکاری عمارات اور ریسٹ ہاؤسز کو عوام کیلئے کھولنے اور برؤے کار لانے

کے حوالے سے پیش رفت پر جائزہ اجلاس ہوا جس میں وزیر اعلیٰ محمود خان،

وزیر سیاحت عاطف خان، چیف سیکرٹری کے پی محمد سلیم، سیکرٹری سیاحت

کامران رحمان اور دیگر سینئر افسران شریک ہوئے ،اس موقع پر وزیر اعظم کو

بتایاگیا مالاکنڈ اور ہزارہ ڈویژن میں واقع 49 ریسٹ ہاؤسز ستمبرسے عوام کو

دستیاب ہونگے، وزیر اعظم کو پانچ اہم سرکاری عمارات بشمول گورنر ہاؤس،

کرناک ہاؤس، وزیرِ اعلیٰ ہاؤس، سپیکر ہاؤس اور آئی جی ہاؤس کو عوام کیلئے

دستیابی کے حوالے سے پیش رفت جبکہ صوبہ کے دیگر 169ریسٹ ہاؤسز کے

انتظام کے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی ۔دریں اثنا وزیراعظم عمران خان نے

کہا ہے درآمدات کم کرنے اور برآمدات بڑھانے کے مثبت نتائج آ رہے ہیں کرنٹ

اکاؤنٹ خسارے میں کمی حکومت کی بڑی کامیابی ہے۔ سماجی رابطوں کی ویب

سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک پیغام میں عمران خان نے کہا حکومت کی توجہ بیرونی

ادا ئیگیوں کے توازن پر مرکوز ہے درآمدات میں کمی اور برآمدات بڑھانے کے

مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں، گزشتہ سال کی مثبت اس سال کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 6

ارب ڈالر کم ہوا جولائی2018ء کے مقابلے میں جولائی 2019میں کرنٹ اکاؤنٹ

خسارہ میں73 فیصد کمی آئی اور خسارہ ڈیڑھ ارب ڈالر کم ہوا جو بڑی کامیابی

ہے۔