153

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو برقرار، انسانی المیے کا خطرہ، ایک اور حریت رہنما گرفتار

Spread the love

سرینگر،نئی دہلی (جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) مقبوضہ کشمیر کرفیو

نام نہاد سیکولر بھارت کی مودی سرکار نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی

پامالی کی انتہا کر دی آج مسلسل 11 ویں روز بھی وادی بھر میں کرفیو برقرار ہے

جس کے باعث کشمیری پہلے عیدالضحیٰ قیدیوں کی طرح گزارنے پر مجبور رہے

عید کے بعد بھی وہی صورتحال درپیش ہے حالانکہ کٹھ پتلی ریاستی گورنر اور

دیگر انتظامیہ کے اعلیٰ حکام نے کرفیو میں نرمی کا عندیہ دیا تھا جو محض ہوائی

بیانات ثابت ہوئے۔ کرفیو اور جگہ جگہ پر لگے بھارتی سکیورٹی فورسز کے

ناکوں کے باعث سڑکیں سنسان، مرکزی بازاروں اور شاہراوں پر بھارتی فورسز

کا سخت پہرہ ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم بدستور جاری ہیں جبکہ جنت

نظیر وادی کشمیریوں کیلئے قید خانے میں تبدیل ہوگئی ہے، مقبوضہ کشمیر میں

اب اشیائے خورو نوش کا اسٹاک بھی ختم ہوگیا ہے جبکہ مریض دواوں سے بھی

محروم ہیں- ٹیلی فون، انٹرنیٹ اور موبائل فون سروسز بھی بدستور معطل ہیں اور

وادی کا بیرونی دنیا رابطہ منقطع ہے، عالمی میڈیا ذرائع نے موجودہ صورتحال کو

انتہائی سنگین قرار دیتے ہوئے انسانی المیہ کے خدشات کا اظہار کرنا بھی شروع

کر دیا ہے-

پڑھیں: کشمیریوں پر بھارتی مظالم کیخلاف احتجاج، سندیپ پانڈے اور اہلیہ نظربند

دوسری طرف بھارت نے دہلی ائیر پورٹ سے ایک اور کشمیری رہنما شاہ فیصل

کو بیرون ملک روانہ ہونے سے قبل گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا

ہے، یہ بھی اطلاعات ہیں کہ شاہ فیصل کو گرفتار کرکے واپس سرینگر بھجوا کر

انہیں ان کی رہائشگاہ پر نظر بند کر دیا۔ وہ استنبول روانہ ہونے کیلئے دہلی ائیر

پورٹ پہنچے تھے کہ بھارتی پولیس کے اہلکاروں نے حراست میں لے لیا۔ ذرائع

نے انکی گرفتاری کی وجہ بھارت سرکار کیخلاف سچ بولنا بتائی ہے-

مقبوضہ کشمیر کرفیو