53

بھارت کشمیر پراپنا موقف منوانے میں نامراد، چین نے یکطرفہ اقدام مسترد کر دیا

Spread the love

بیجنگ (جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت نامراد

برادر ہمسایہ ملک چین نے مقبوضہ کشمیر میں ہندوستان کے یکطرفہ اقدام کو ایک

بار پھر مسترد کردیا۔ میڈیا کے مطابق بھارتی وزیر خارجہ سبرامنیم جے شنکر

مقبوضہ وادی کی بھارتی آئین میں خصوصی حیثیت کے خاتمے کے اقدام پر

گزشتہ روز چین کی حمایت کے حصول اور اپنا موقف پیش کرنے کیلئے میں

بیجنگ پہنچے اور چینی وزیر خارجہ وانگ ای سے ملاقات کی جس میں چینی

وزیر خارجہ نے مقبوضہ کمشیر پر میں بھارتی موقف کو یکسر مسترد کرتے

ہوئے کشمیر سے متعلق چین کی واضح اور دو ٹوک پالیسی سے آگاہ کیا اور امید

ظاہر کی کہ بھارت تخریبی نہیں بلکہ خطے کے امن و استحکام کیلئے تعمیری

کردار ادا کرئیگا۔ جبکہ بھارتی وزیر خارجہ نے وضاحت کی کہ انڈیا تحمل کا

مظاہرہ اور پاکستان کیساتھ تعلقات بہتر بنانے کا خواہاں ہے۔ بھارت سرحد پر امن

برقرار رکھنے کیلئے چین سے طے شدہ مفاہمت پر بھی کاربند رہے گا اور تمام

سرحدی تنازعات کو مذاکرات کی میز پر حل کرنے کیلئے چین سے ملکر کام

کرنے پر تیار ہے۔ بھارتی وزیر خارجہ کا یہ بھی کہنا تھا انکا ملک اس معاملے

میں چینی صدر اور بھارتی وزیراعظم مودی کے مابین غیر رسمی ملاقات کا

مطمنی اور اسے کامیاب بنانے کا خواہاں ہے۔ تاہم بھارت نامراد رہا،

بھارتی اقدام نے ہماری خود مختاری کو نقصان پہنچایا، چینی وزارت خارجہ

دوسری طرف چینی وزارت خارجہ کی ترجمان ہوا چوینگ نے پاکستان اور بھارت

کے درمیان لائن آف کنٹرول پرکشیدگی اور آرٹیکل 370 کو ختم کرنے سے متعلق

سوالات پر تحریری جواب میں کہا ہے کہ چین کشمیر کی موجودہ صورتحال پر

شدید تشویش میں مبتلا ہے کیونکہ چین نے سرحدی علاقے میں بھارتی مداخلت کی

ہمیشہ مخالفت کی ہے اور اس حوالے سے ہمارا مؤقف واضح اور مستقل ہے۔انڈیا

نے متنازع سرحدی علاقوں سے متعلق اپنا قانون یکطرفہ تبدیل کرکے نہ صرف

ہماری خودمختاری کو نقصان پہنچایا بلکہ خطے کو مزید عدم استحکام کی جانب

دھکیل دیا ہے، ایسے اقدامات ناقابل قبول ہیں اور یہ کبھی قابل عمل نہیں ہوسکتے۔

بھارت سرحدی معاملات پر بیان اور عمل میں ہوشمندی کا مظاہرہ کرے، چین سے

کیے سمجھوتوں کی پاسداری یقینی بنائے اور ایسے کسی بھی عمل سے اجتناب

برتے جس سے سرحدی امور مزید مشکل بن جائیں۔

یہ بھی پڑھیں: تنازع کشمیر، چین سلامتی کونسل میں پاکستان کی حمایت پر آمادہ

یاد رہے کچھ روز قبل بھی چینی وزیر خارجہ و سٹیٹ قونصلر وانگژی کا کہنا تھا

چین یقین رکھتا ہے کشمیر سے متعلق یکطرفہ اقدامات صورتحال کو مزید پیچیدہ

بنا دیں گے، ہمیں بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر بھارت میں ضم کرنے کے

حوالے سے اقدامات کے بعد بڑھتی ہوئی کشیدگی پر تشویش ہے، مسئلہ کشمیر

دیرینہ تنازعہ ہے جو نوآبادیاتی تاریخ سے ابھی تک حل نہیں ہوا۔ چینی وزیر

خارجہ نے کہا مسئلہ کشمیر کو پرامن اور موزوں انداز سے اقوام متحدہ کے

چارٹر، سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں اور دوطرفہ معاہدے کے تحت حل کیا

جائے۔ چین اور پاکستان ہمیشہ ایک دوسرے سے اہم معاملات پر تعاون کرتے ہیں۔

چین پاکستان کے جائز حقوق، مفادات کے تحفظ اور عالمی سطح پر پاکستان کے

ایشوز کے منصفانہ حل پر تعاون جاری رکھے گا۔ وانگ ژی نے کہا پاکستان اور

بھارت دونوں ممالک چین کے ہمسایہ ہیں اور اہم ترقی پذیر ممالک میں شامل ہیں،

ہم دونوں ممالک سے مطالبہ کرتے ہیں وہ اپنی قومی ترقی اور جنوبی ایشیا میں

امن میں پیشرفت کریں، تمام تاریخی مسائل حل اور یکطرفہ اقدامات سے گریز

کریں۔

بھارت نامراد