96

بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناحٌ کی یادگارعیدالاضحی، شاہ محمود کا انتباہ

Spread the love

کراچی (جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) بانی پاکستان

بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناحٌ نے ملک آزاد ہونے کے بعد اپنی زندگی کی

آخری عیدالاضحی پاکستان وجود میں آنے کے 72 ویں روز، ہفتہ 25 اکتوبر 1947

کو کراچی میں منائی۔ عالم اسلام کے ہمراہ آج پیر 12 اگست 2019 کو وطن عزیز

پاکستان میں پورے مذہبی احترام کے ساتھ عیدالاضحی منائی جارہی ہے۔ اس موقع

پر تمام مسلمان جوش و خروش کیساتھ سنت ابراہیمی کا اہتمام کررہے ہیں-

پڑھیں: عید الضحیٰ ، ذبح عظیم، عہد حاضر اور ہماری ذمہ داریاں

اس حوالے سے ہم پاکستانی اللہ تعالی کا جتنا شکر کریں وہ کم ہے۔ آزادی کے بعد

یہ 73 ویں عید العضحی ہے، جو حسن اتفاق سے آزادی کے مہینے میں منائی

جارہی ہے۔ آزاد پاکستان میں جب عیدالضحیٰ پہلی مرتبہ منائی گئی گزشتہ صدی

کے وسط میں جب 14 اگست 1947 کو پاکستان وجود میں آیا تو اس کے 72 ویں

روز، ہفتہ 25 اکتوبر1947 وہ پہلا موقع تھا جب عید قرباں پہلی مرتبہ منائی گئی۔

قوم کو یہ موقع پہلی و آخری مرتبہ ملا جب بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناحٌ

آزاد وطن میں تمام پاکستانیوں کے درمیان موجود تھے۔ دوسری طرف تاریخ میں یہ

آخری موقع تھا جب پاکستان اور ہندوستان کے 20 ہزار حجاج مشترکہ طور پر 20

جہازوں میں حج کی سعادت حاصل کرنے گئے تھے۔ پاکستان قائم ہوئے زیادہ وقت

نہیں گزرا تھا، ہندوستان میں مسلمانوں کیساتھ ناروا سلوک کے زخم تازہ تھے-

مزید پرھیں: انصاف پسند عالمی برادری کیلئے مسئلہ کشمیرحل کرنے کا موقع

کشمیر سمیت متعدد مقامات سے مسلمانوں پر ظلم و زیادتی اور قبضے کی خبریں

مسلسل سامنے آرہی تھیں۔ اس موقع پر عید قرباں اور ہندو برادری کا تہوار دسہرہ

ایک ہی تاریخ کو آرہا تھا، صورتحال کی نزاکت کو دیکھتے ہوئے حکومت وقت

چوکس تھی۔ اس موقع پر مذہبی ہم آہنگی کو برقرار رکھنے کے لیے اہم اقدامات

کئے گئے۔ اس وقت کے دارلخلافہ کراچی میں ایک روز قبل امن قائم رکھنے کی

اپیل پر مبنی پمفلٹ بذریعہ ہوائی جہاز شہر بھر میں گرائے گئے۔ دونوں تہواروں

کو پر امن اور خو ش اسلوبی سے منانے کے لیے ہندو مسلم کمیٹی تشکیل دی گئی

تھی، جبکہ ملک بھر میں تین روز عام تعطیل تھی اور دو روز اخبارات شائع نہیں

کئے گئے، سرکاری طور پر اعلان کیا گیا تھا کہ عید سے تیسرے روز تک کراچی

میں موجود تمام مہاجرین کو کھانا مفت ملے گا اس وقت شہر میں ساڑھے چار ہزار

مہاجر موجود تھے۔

Karachi , Qaid e Azam Muhammad Ali Jinnah Praying Nimaz e Eid u Zuha in 23th October 1947.

ہفتہ 25 اکتوبر1947 کو پہلی عید قرباں کے موقع پربانی پاکستان قائد اعظم بہت

پرجوش تھے، وہ نماز عید سے قبل انتظامات دیکھنے کیلیے ساڑھے8 بجے اپنے

سٹاف کے ہمراہ عید گاہ میدان میں تشریف لائے۔ میدان میں ایک نہایت خوبصورت

شامیانہ لگایا گیا تھا جبکہ شہر بھر میں پولیس کو چوکس رکھا گیا تھا، عید گاہ

میدان بندر روڈ پر ٹھیک 10 بجے نماز عید کا اہتمام کیا گیا۔ عیدالاضحی کے روز

بانی پاکستان قائد اعظمٌ کے ہمراہ وفاقی اور صوبہ سندھ سے تعلق رکھنے والے

وزرا نماز میں شریک ہوئے، بعد نماز عید بانی پاکستان قائد اعظمٌ نے عید گاہ میدان

میں پاک فوج سے سلامی لی، اس تقریب کے لیے خاص تیاری کی گئی تھی، اس

موقع پر وفاقی و صوبہ سندھ کے وزرا اور گورنر سندھ شیخ غلام حسین ہدایت اللہ

بھی موجود تھے، سلامی کے موقع پر فوج کے آگے 22 طیارہ شکن توپوں کا

دستہ تھا۔ جب کوئی فوجی دستہ بانی پاکستان قائداعظم کے سامنے سے گزرتا تو

عید گاہ میدان نعرہ ہائے تحسین سے گونج اٹھتا تھا، فضا میں پاکستان فضائیہ کے

طیارے پرواز کررہے تھے جنہوں نے قیام امن کی اپیلیں بھی برسائی، فوج کی

سلامی کے بعد گورنر سندھ نے پولیس کی سلامی لی۔

Muzfar Abad , FM Shah Mehmood Qurashi,Chairman Peoples Party,PM AKJ Raja Farouqe Haider Praying Nimaz e Eid ul Azha in 12th August 2019,

مختصراََ یہ کہ 25 اکتوبر 1947 کا دن وطن عزیز کے قیام کا 72 واں اور انتہائی

تاریخی دن تھا جس روز آزاد فضا میں مسلمانان ہند عید قربان منا کر جذبہ ایثار اور

قربانی کے عہد کی تجدید کر رہے تھے- آج اگر دیکھا جائے تو وطن عزیز کو اپنی

شہ رگ کشمیر سے متعلق ایسی سنگین صورتحال کا سامنا ہے کہ جو ناگفتہ بہ ہے

اور اسی لئے موجودہ حکومت نے عیدالضحیٰ کو انتہائی سادگی سے منانے کے

ساتھ ساتھ کل 73 ویں یوم آزادی 14 اگست 2019 کو یوم یکجہتی کشمیر اور 15

اگست 2019 کو بھارت یوم آزادی کو یوم سیاہ منانے کا اعلان کیا، اس ضمن میں

عیدالضحیٰ کے روز وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سمیت حکومت کے دیگر

اعلیٰ عہدیداروں سمیت اپوزیشن کی قیادت نے اپنے کشمیری بھائی بہنوں سے

اظہار یکجہتی کیلئے آزادی وادی کے دارالحکومت مظفر آباد گئے جہاں انہوں نے

آزاد کشمیر کی سیاسی قیادت کے ہمراہ نماز عید الضحیٰ ادا کی اور بعدازاں

مشترکہ پریس کانفرنس میں وزیر خزانہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے جس طرح

قوم کو مخاطب کرتے ہوئے وطن عزیز کی عالمی برادری میں پوزیشن، امہ امہ

کی رٹ لگانے والے مسلم ممالک کے مفادات اور دنیا کی بے حسی سے آگاہ کیا

اور کہا کہ ہمیں احمقوں کی جنت میں نہیں رہنا چاہیے کہ سلامتی کونسل میں

بھارت کے مقبوضہ کشمیر کو ملک کا ایک حصہ قرار دینے کے غیر قانونی اور

غیر اخلاقی اقدام کےخلاف تمام رکن ممالک ہمارے لئے گلے میں ہار ڈالنے کیلئے

کھڑے ہونگے-

Muzfar Abad , FM Shah-Mehmood-Qureshi-address to Press Conference with President of AJK Masood-Khan-in 12th august 2019.

ہم وطنو! اس ساری تمہید اور تحریر کا مقصد صرف یہ ہے کہ ہمیں خود اپنے

حقوق کے تحفظ کیلئے اٹھ کھڑا ہونا ہوگا، حقائق کا ادراک کرتے ہوئے اپنی تمام

کمزوریوں کو یکسر ختم کرنا ہوگا ورنہ سوائے رسوائی اور تباہی کے ہمارا دوسرا

کوئی مقدر نہیں ہوگا-