Pakistan China Friendship, Shaking Hands 58

چین پاکستان کا ہمنوا، تنازع کشمیر پرسلامتی کونسل میں حمایت کا اعلان

Spread the love

بیجنگ،اسلام آباد( جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) چین پاکستان ہمنوا

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کے معاملے پر

سیکیورٹی کونسل میں چین پاکستان کی حمایت کرے گا۔ مقبوضہ کشمیر میں کشیدہ

صورتحال پر چینی حکومت کو پاکستان کے خدشات اور تحفظات سے آگاہ کرنے

کے لیے وزیر خارجہ شاہ محمود بیجنگ میں موجود ہیں جو گزشتہ روز ہنگامی

دورے پر چینی ہم منصب سے ملاقات کیلئے اسٹیٹ گیسٹ ہاؤس پہنچے تو ان کے

وفد کا پرتپاک استقبال کیا گیا اور پاک چین دوستی زندہ باد کے نعرے لگائے گئے۔

پڑھیں: پاکستان چین کا کثیرالجہتی سٹرٹیجک تعلقات مزید مستحکم کرنے کا اعادہ

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے چینی ہم منصب وانگژی سے ملاقات کی جس

میں انہوں نے بھارت کے غیر آئینی اقدامات پر تحفظات سے آگاہ کیا۔ دونوں

رہنماؤں کے درمیان ڈھائی گھنٹے طویل ملاقات ہوئی۔ ملاقات کے بعد میڈیا سے

گفتگو میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا پاکستان نے بھارتی اقدام کے

خلاف سیکیورٹی کونسل جانے کا فیصلہ کیا ہے اور چین پاکستان کی مکمل حمایت

کی یقین دہانی کرادی ہے۔ چین پاکستان کیساتھ مکمل تعاون رکھے گا، چین اور

پاکستان کی وزارتیں اور مشنز آپس میں روابط جاری رکھیں گے۔ شاہ محمود

قریشی کے مطابق چین نے ایک مرتبہ پھر ثابت کیا وہ پاکستان کا بااعتماد دوست

ہے اس پر جتنا فخر کیا جائے کم ہے۔ چینی وزیرخارجہ نے پاکستان کے مؤقف کی

مکمل تائید کی اور اتفاق کیا کہ بھارتی اقدام یکطرفہ ہیں، ان اقدام سے مقبوضہ

جموں و کشمیر کے اسٹیٹس اور ہیئت میں تبدیلی واقع ہوئی ہے، انہوں نے اتفاق کیا

کہ بھارتی اقدامات سے خطے کے امن و استحکام کو خطرات لاحق ہو سکتے ہیں۔

وزیرخارجہ نے کہا چینی وزیرخارجہ نے اتفاق کیا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر

ایک متنازع مسئلہ تھا اور ہے، مسئلہ کشمیر کا حل بھی اقوام متحدہ کی قراردادوں

کی روشنی میں ہونا چاہیے، چین مسئلے کا پر امن حل چاہتا ہے تاکہ کشیدگی میں

اضافہ نہ ہو،چینی حکام کو بتایا بھارت پلوامہ جیسی حرکت دوبارہ کرسکتا ہے۔

مزید پڑھیں: امن کیلئے پاکستان عالمی ثالثی کا حامی، بھارت گریزاں کیوں؟ چین

چین کے وزیر خارجہ اورسٹیٹ قونصلر وانگ ژی کا اس موقع پر کہنا تھا چین یہ

یقین رکھتا ہے کشمیر کے حوالے سے یکطرفہ اقدامات صورتحال کو مزید پیچیدہ

بنا دیں گے، ہمیں بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر بھارت میں ضم کرنے کے

حوالے سے اقدامات کے بعد بڑھتی ہوئی کشیدگی پر تشویش ہے، مسئلہ کشمیر

دیرینہ تنازعہ ہے جو نوآبادیاتی تاریخ سے ابھی تک حل نہیں ہوا۔ چینی وزیر

خارجہ نے کہا مسئلہ کشمیر کو پرامن اور موزوں انداز سے اقوام متحدہ کے

چارٹر، سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں اور دوطرفہ معاہدے کے تحت حل کیا

جائے۔ چین اور پاکستان ہمیشہ ایک دوسرے سے اہم معاملات پر تعاون کرتے ہیں۔

چین پاکستان کے جائز حقوق، مفادات کے تحفظ اور عالمی سطح پر پاکستان کے

ایشوز کے منصفانہ حل پر تعاون جاری رکھے گا۔ وانگ ژی نے کہا پاکستان اور

بھارت دونوں ممالک چین کے ہمسایہ ہیں اور اہم ترقی پذیر ممالک میں شامل ہیں،

ہم دونوں ممالک سے مطالبہ کرتے ہیں وہ اپنی قومی ترقی اور جنوبی ایشیا میں

امن میں پیشرفت کریں، تمام تاریخی مسائل حل اور یکطرفہ اقدامات سے گریز

کریں۔

یہ بھی پڑھیں: کشمیر کی حیثیت تبدیل کرنے سے منفی اثرات مرتب ہونگے،چین

اسلام آباد دفتر خارجہ کے سفارتی ذرائع نے کہا ہے یہ پہلا موقع ہے جب چین کی

جانب سے کشمیر سے متعلق پاکستان کے مؤقف کی دوٹوک انداز میں تائید کی

گئی اور تاریخ میں پہلی مرتبہ چین نے یہ تسلیم کیا ہے کہ کشمیر کو اقوام متحدہ

کی متعلقہ قراردادوں کے تحت حق دیا جائے،جو پاکستان کی بڑی سفارتی کامیابی

ہے، جب بھارت کشمیر کا یکطرفہ طور پر سٹیٹس تبدیل کرنے کیلئے اقدامات کر

رہا ہے۔ قبل ازیں گزشتہ روز معمول کی پریس بریفنگ کے دوران چینی وزارت

خارجہ کی ترجمان ہواچھن اینگ کا کہنا تھا بھارت خطے کے استحکام اور قیام امن

کیلئے کشمیر کی خصوصی حیثیت بحال کرے، چین مسئلہ کشمیر سے متعلقہ

پاکستانی بیان کو دیکھ رہا ہے، فریقین کشمیر کی خصوصی حیثیت کے حوالے

سے باہمی تعلقات کو تبدیل مت کریں۔ چین چاہتا ہے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے

فریقین باہمی تعلقات کو خراب نہ کریں، چین کی خواہش ہے پاکستان بھارت

مسئلے کو مشترکہ طور پر خطے میں بحالی امن اور استحکام کیلئے نئے باہمی

مشاورت اور مذاکرات کے ذریعے حل کریں، اس سے پہلے اسلام آباد میں چینی

سفیر یائوجنگ نے کہا بھارت کی جانب سے کشمیر کی خصوصی حیثیت میں

تبدیلی نے خطے میں امن و استحکام کو زک پہنچائی ہے، بھارتی حکومت کشمیر

کی خصوصی حیثیت کو تنہا ختم نہیں کر سکتی اور یہ تبدیلی خطے میں عدم

استحکام کا باعث ہو گی، ہم اس مسئلے پر نظر رکھے ہوئے ہیں-