78

افغان صوبہ غزنی، اہل تشیع کی مسجد میں دھماکہ، 2 نمازی شہید، 20 زخمی

Spread the love

کابل(جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک)

افغانستان کے صوبہ غزنی کی ایک مسجد میں نماز ظہر کے دوران بم دھماکے

میں 2 نمازی شہید اور 20 زخمی ہوگئے، داعش نے دھماکے کی ذمہ داری

قبول کرلی۔ افغان میڈیا کے مطابق دھماکا خودکش تھا جو صوبہ غزنی میں واقع

اہل تشیع مکتبہ فکر کی محمدیہ مسجد میں نماز ظہر کے دوران کیا گیا،

زخمیوں میں سے 3 کی حالت نازک بتائی جاتی ہے، حملے کے نوعیت کے

حوالے سے متضاد دعوے کیے جارہے ہیں، افغان فوج کا کہنا ہے یہ خود کش

حملہ تھا تاہم پولیس کا اصرار ہے دھماکا ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کے ذریعے

کیا گیا۔ عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق دھماکے کی ذمہ داری داعش نے

قبول کرلی، غزنی میں افغان سکیورٹی فورسز اور طالبان جنگجوئوں کے

درمیان گھمسان کی جھڑپیں جاری ہیں اور دونوں جانب سے ایک دوسرے کا

یہ بھی پڑھیں: قندوز میں بمباری ، ہلمند دھماکوں سے لرز اٹھا، 23 افغان شہری جاں بحق

بھاری نقصان کرنے کا دعویٰ کیا جاتا ہے تاہم دیہ یاک ضلع میں سکیورٹی

فورسز نے جنگجوئو ں کو پسپا کردیا ہے۔ واضح رہے دوحہ میں طالبان وفد

اور امریکہ کے درمیان افغان امن مذاکرات کا ڈرافٹ دوبارہ تیار کیا جا رہا

ہے، دو سر ی جانب جرمنی کی کاوش سے آل افغان پیس کانفرنس کا انعقاد

بھی ہو رہا ہے تاہم اس کے باوجود افغانستان میں حملوں کا سلسلہ تھم نہیں سکا۔

جھڑپ اور فضائی حملے، طالبان چیف کمانڈر ملاغیاث سمیت 34 ہلاک

افغانستان میں سکیورٹی فورسز کیساتھ جھڑپ اور فضائی حملے میں نو

سکیورٹی اہلکاروں اور اہم جنگجو کمانڈر سمیت34، افراد ہلا ک جبکہ متعدد

زخمی ہو گئے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق صوبہ ہرات کے ضلع

کارخ میں سکیورٹی فورسز اور طالبان جنگجوؤں کے درمیان جھڑپ میں نو

سکیورٹی اہلکار، طالبان کے چیف کمانڈر ملا غیاث الدین اور جنگجو ہلاک ہو

گئے۔ صوبائی پولیس کے سربراہ امین االلہ عا مر خل نے بتایا طالبان کمانڈر

ملا غیا ث الدین کی قیادت میں طالبان جنگجوؤں نے ضلع کا رخ کے ملومہ

مزید پڑھیں: افغان افواج کی کارروائیاں، 15 طالبان، 2 داعشی دہشتگرد ہلاک

علاقے میں سکیورٹی فورسز کی چوکیوں پر حملہ کیا، یہ جھڑپ کئی گھنٹوں

تک جاری رہی جس میں سکیورٹی فورس کے 9جوانوں کی بھی موت ہو گئی

اور خطرناک طالبان کمانڈر سمیت 10 جنگجو مارے گئے۔ سرکاری ذرائع کے

مطابق جھڑپ میں 15 سے زائد جنگجو اور چھ سکیورٹی اہلکار زخمی بھی

ہوئے ۔ ہرات پولیس کے سربراہ نے بتایا سکیورٹی فورس کی جانب سے

صوبے کے دیگر مقامات میں جنگجوؤں کیخلاف آپریشن جاری ہیں ۔ دریں اثنا

جنوبی قندھار صوبہ کے معروف ضلع میں طالبان کے کمین گاہ پر فضائیہ کے

حملے میں مجموعی طور سے 25 طالبان ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔