59

پاکستان نےبنگلہ دیش کو شکست دے دی

Spread the love

لارڈز(سپورٹس رپورٹر) نوجوان فاسٹ بولر شاہین آفریدی کی طوفانی بولنگ نے

بنگلادیشی بیٹنگ لائن کے پرخچے اڑا دیے، پاکستان کے 316 رنز کے جواب میں

بنگلادیش کی پوری ٹیم 221 رنز پر ڈھیر ہوگئی۔ فتح کے ساتھ گرین شرٹس کا

مشن ورلڈکپ اختتام پذیر ہوگیا، قومی ٹیم کو سیمی فائنل تک رسائی کے لیے 311

رنز سے فتح درکار تھی تاہم گرین شرٹس کا یہ خواب لارڈز کے تاریخی میدان میں

پورا نہ ہوسکا۔پاکستانی بولرز کی عمدہ گیند بازی کے سامنے شکیب الحسن کے

سوا کوئی بیٹسمین ٹک کر نہ کھیل سکا، ورلڈکپ میں دوسرےسب سےزیادہ اسکور

بنانے والے بیٹسمین شکیب الحسن نے 64 رنز کی باری کھیلی جس میں 6 چوکے

بھی شامل تھے۔سومیا سرکار اور تمیم اقبال پر مشتمل اوپننگ جوڑی نے ہدف کے

تعاقب میں اننگز کا آغاز کیا تو 26 کے مجموعی سکور پر محمد عامر نے سومیا

سرکار کوآوٹ کردیا، وہ 22 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے، بنگلادیش کی دوسری وکٹ 48

رنز پر تمیم اقبال کی صورت میں گری جو 8 رنز بنا کر شاہین آفریدی کی گیند پر

بولڈ ہوگئے، 30 رنز کے اضافے کے بعد تجربہ کار مشفیق الرحیم کو وہاب ریاض

نے شکار کرلیا۔ چوتھی وکٹ پر لٹن داس اور شکیب الحسن کے مابین 58 رنز کی

پارٹنرشپ قائم ہوئی تاہم شاہین آفریدی نے لٹن داس اور شکیب الحسن کو آؤٹ کر

کے خطرہ ٹال دیا۔قومی ٹیم کو سیمی فائنل تک رسائی کے لیے 311 رنز سے فتح

درکار تھی تاہم گرین شرٹس کا یہ خواب لارڈز کے تاریخی میدان میں چکنا چور ہو

چکا ہے۔ورلڈ کپ کے 43 ویں میچ میں آج پاکستان اور بنگلا دیش مد مقابل ہیں،

پاکستان نے بنگلا دیش کے خلاف ٹاس جیت کربیٹنگ کا فیصلہ کیا تو پاکستان کی

جانب سے اننگز کا آغاز فخرزمان اور امام الحق نے کیا تاہم صرف 23 کے

مجموعی اسکور پر فخرزمان 13 رنز بناکر آؤٹ ہوگئے۔ون ڈاؤن آنے والے بابر

اعظم نے امام الحق کے ساتھ مل کر ٹیم کا اسکور آگے بڑھایا، دونوں نے 157 رنز

کی شراکت قائم کی تاہم بابر اعظم 96 رنز بناکر ایل بی ڈبلیو ہوگئے۔ اوپنر امام

الحق نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور سنچری اسکور کی تاہم اگلی ہی گیند

پر وہ ہٹ وکٹ ہوگئے جب کہ کچھ ہی دیر بعد محمد حفیظ بھی آؤٹ ہوگئے۔میچ

کے دوران اماد وسیم نے زوردار شارٹ مارا تاہم گیند کپتان سرفراز احمد کے ہاتھ

پر جالگی جس کے باعث سرفراز احمد زخمی ہوکر ریٹائرڈ ہرٹ ہوگئے، سرفراز

کے زخمی ہونے کے بعد اماد وسیم نے جارحانہ انداز اپنایا اور 25 گیندوں پر 43

رنز بنائے جس کی بدولت قومی ٹیم مقررہ 50 اوورز میں9 وکٹوں کے نقصان پر

315 رنز ہی بناسکی۔کپتان سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ ایک میچ کا فرق رہ گیا جس

پر بہت افسوس ہے، میچ جیتنے کی کوشش کریں گے تاکہ ورلڈ کپ کا اچھا اختتام

ہو، ہم جانتے ہیں بہت ہی بڑے فرق سے جیتنا ہوگا۔پاکستان کی جانب سے میچ کے

لئے پلینگ الیون میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے جب کہ ٹیم انتظامیہ نے شعیب

ملک کو الوداعی ون ڈے میچ نہ دینے کا فیصلہ کرتے ہوئے بنگلادیش کے خلاف

میچ کے اسکواڈ میں شامل نہیں کیا۔