108

عالمی کرکٹ میلہ، اہم ترین میچ کے انتظار کی گھڑیاں ختم، روایتی حریف پاکستان بھارت آمنے سامنے

Spread the love

مانچسٹر (جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک)

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی ) کے زیر اہتمام عالمی کپ کرکٹ ٹورنامنٹ

میں پاکستان اور بھارت آج 16 جون کو مانچسٹر میں ایک دوسرے کے مد مقابل

ہیں، میچ پاکستانی وقت کے مطابق ڈھائی بجے شروع ہوگا تاہم محکمہ موسمیات

کے مطابق مانچسٹر میں بارش کا امکان ہے جس کے باعث میچ متاثر ہونے کا

خدشہ ہے۔

پاک بھارت ورلڈکپ میچ کیلئے سخت سیکیورٹی انتظامات کئے گئے ہیں ،مسلح

پولیس اہلکاروں کو بھی تعینات کیا گیا ہے۔ مقامی میڈیا کے مطابق میچ میں کسی

گڑبڑ کی کوئی انٹیلی جنس رپورٹ تو موجود نہیں مگر پھر بھی حکام سیکیورٹی

میں کوئی کسر نہیں چھوڑنا چاہتے، انگلینڈ میں عموماً ایسا ہوتا تو نہیں البتہ پاک

بھارت مقابلے کے دوران مسلح پولیس اہلکار سٹیڈیم کے اطراف اور سٹی سینٹر

میں گشت کریں گے۔ ٹکٹس سے محروم رہ جانے والے شائقین کو وینیو نہ آنے کی

ہدایت دی گئی ہے، جو خوش نصیب ٹکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے ان سے

کہا گیا ہے تلاشی وغیرہ میں وقت لگے گا لہذا پہلے ہی سٹیڈیم پہنچ جائیں۔ ٹیم ہوٹل

میں بھی سخت سیکیورٹی ہے اورسادہ لباس اہلکار آنے جانے والوں پر گہری نظر

رکھے ہوئے ہیں۔ یاد رہے میچ ٹکٹس کیلئے آئی سی سی کو 5 لاکھ سے زائد

درخواستیں موصول ہوئی تھیں، گرائونڈ میں محض 25 ہزار شائقین کی گنجائش

ہے، مقامی ویب سائٹس پر ڈھائی ہزار پائونڈ (تقریباً5 لاکھ پاکستانی روپے) تک

میں بھی ٹکٹیں فروخت ہو رہی ہے۔ ورلڈکپ کیلئے مانچسٹر میں ’’فین ولیج‘‘ بھی

بنایا گیا جس میں ساڑھے تین ہزار افراد کی گنجائش ہے، وہاں جمعے کو

سائوتھمپٹن میں ہونے والا انگلینڈ اور ویسٹ انڈیز کا میچ بھی بڑی اسکرین پر

دکھایا گیا۔

آئی سی سی ورلڈکپ 2019 کے سب سے بڑے ٹاکرے پاک بھارت میچ کا شائقین

کو بے صبری سے انتظار ہے اور اس کیلئے مانچسٹر شہر میں کرکٹ کا تین روزہ

میلہ سجایا گیا ۔مانچسٹر میں منعقد کیے جانے والے میلے میں شہریوں کے لیے

بڑی اسکرینز پر مفت میچ دیکھنے کی سہولت ہوگی ۔اسکرینز کے ساتھ ساتھ بچوں

اور بڑوں کے لیے کرکٹ سے متعلق گیمز اور اشیاء کی خریداری کے لیے اسٹالز

بھی لگائے گئے ہیں۔یاد رہے کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان میچ 16 جون کو

مانچسٹر کے اولڈ ٹریفورڈ گراونڈ میں کھیلا جائے گا۔

شیڈول کے مطابق پاکستان ٹیم اپنا چھٹا میچ 23 جون کو جنوبی افریقہ کے خلاف

لارڈز، ساتواں میچ 26 جون کو نیوزی لینڈ کے خلاف برمنگھم ، آٹھواں میچ 29

جون کو افغانستان اور نواں میچ بنگلہ دیش کے خلاف 5 جولائی کو لارڈز کے مقام

پر کھیلے گی۔ دوسری جانب ورلڈ کپ کرکٹ ٹورنامنٹ میں ابتدائی چار میں سے

دوسرا میچ ہارنے کے بعد پاکستان ٹیم کا سفر مزید مشکل ہوگیا ہے تاہم سیمی فائنل

کھیلنے کیلئے گرین شرٹس کو اگلے پانچ میچوں میں اچھی کارکردگی دکھانا ہوگی۔

ماہرین کے مطابق بقیہ میچز میں پاکستان کے پاس غلطی کی گنجائش بھی نہیں

ہے، کپتان سرفراز احمد نے بھی اعتراف کیا کہ اگر ہم نے بڑی ٹیموں کو ہرانا ہے

تو کم سے کم غلطیاں کرنا ہوں گی۔ ماہرین کے مطابق اگلے میچز میں اچھے رن

ریٹ کے ساتھ فتح ہی پاکستانی کشتی کو کنارے لگا سکتی ہے،

ورلڈ کپ میں پاکستانی بیٹنگ چار میں سے دو میچوں میں مایوس کن کارکردگی

دکھائی، ویسٹ انڈیز کے خلاف پاکستان 105 کے معمولی اسکور پر آؤٹ ہوا جبکہ

آسٹریلیا کے خلاف میچ میں صف اول کے بیٹسمین سیٹ ہو کر غیر ذمے داری

سے اسٹروکس کھیل کر آؤٹ ہوتے رہے۔ کسی نے ذمہ داری لے کر میچ کو اختتام

تک لے جانے کی کوشش نہیں کی، تجربہ کار بیٹسمین شعیب ملک کی کارکردگی

بھی اْن کے معیار سے کم تر ہے۔ گزشتہ ایک سال کے دوران شعیب ملک کی

بیٹنگ اوسط 29 رنز فی اننگز ہے جبکہ انگلش سرزمین پر انہیں 14 کی معمولی

بیٹنگ اوسط کے باوجود ٹیم کا حصہ بنایا گیا۔ حارث سہیل کو گیارہ رکنی ٹیم میں

شامل نہیں کیا جارہا حالانکہ ان کی گزشتہ ایک سال کی اوسط 49 کی ہے جس میں

دو سنچریاں بھی شامل ہیں۔