141

خیبرپختونخوا حکومت کے 5 معاون خصوصی اور مشیروں کی تعیناتی معطل

Spread the love

پشاور(عمران علی نمائندہ جے ٹی این آن لائن،مانیٹرنگ ڈیسک)

پشاورہائیکورٹ نے خیبرپختونخوا کے صوبائی معاونین خصوصی اور مشیروں

کی تعیناتی معطل کرنے کے احکامات جاری کردئیے۔ پشاور ہائی کورٹ میں

جسٹس اکرام اللہ اور جسٹس روح الامین پر مبنی 2 رکنی بینچ نے خیبرپختونخوا

سے عوامی نیشنل پارٹی کے رکن اسمبلی خوشدل خان کی دائر کردہ رٹ کی

سماعت کی اوراجمل وزیر، ضیابنگش عبدالکریم، حمایت اللہ اور کامران بنگش کو

معطل کرنے کے احکامات جاری کردئیے۔ اے این پی کے رکن اسمبلی خوشدل

خان نے اپنی رٹ میں موقف اختیار کیا تھا کہ معاونین کی تعیناتی غیر قانونی ہے

حالانکہ کابینہ مکمل ہے۔

پشاور ہائیکورٹ کا فیصلہ چیلنج کرینگے، شوکت یوسف زئی

صوبائی وزیراطلاعات شوکت یوسفزئی کا کہنا تھا فیصلے کو چیلنج کریں گے

کیونکہ آئین میں مشیروں ومعاونین خصوصی کی تقرری کا اختیارحکومت کو

حاصل ہے، آئین میں پانچ مشیر رکھنے کی گنجائش ہے، ہم نے تین مشیر مقرر

کئے، حکومتی معاملات چلانے کیلئے مشیروں اور معاونین خصوصی کا تقرر

ضروری ہوتا ہے۔ فیصلے کا میڈیا کے ذریعے پتا چلا جس پر غور کررہے ہیں،

اس سے پہلے عدالت کی جانب سے کوئی نوٹس جاری نہیں ہوا۔ میڈیا کے ذریعے

معلوم ہوا معاون خصوصی اور مشیروں کی تعیناتی کو غیر آئینی و غیر قانونی

قرار دیا گیا ہے جبکہ ایسی کوئی بات نہیں ہے، آئین میں پانچ سے زائد مشیر

رکھنے کی اجازت ہے۔ عدالت کا بہت بڑا فیصلہ ہے، ملک کے دیگر صوبوں میں

بھی یہ پریکٹس رہی ہے کہ حکومت چلانے کے لیے مشیر اور معاون خصوصی

کی ضرورت ہوتی ہے۔