184

بی بی سی کی رپورٹ حقائق کے برعکس، جھوٹ کا پلندہ، ترجمان پاک فوج

Spread the love

راولپنڈی (جے ٹی این آن لائن سوشل میڈیا مانیٹرنگ ڈیسک)

پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے برطانوی نشریاتی ادارے (بی

بی سی) کی رپورٹ کومسترد کرتے ہوئے کہا ہے بی بی سی میں شائع خبرحقائق

کے برعکس اور پاکستان مخالف خبر جھوٹ کا پلندہ ہے۔ سماجی رابطوں کی ویب

سائٹ ٹویٹر پر جاری بیان میں ڈی جی آئی ایس پی آر کا مزید کہنا تھا بی بی سی

کی 2 جون کی خبر صحافتی اقدار کے منافی ہے، پاکستان پرانسانی حقوق کی

خلاف ورزیوں کے الزامات بے بنیاد ہیں، بی بی سی نے بغیرکسی ثبوت الزامات

عائد کیے، سٹوری پرموقف لینے کیلئے آئی ایس پی آرکوایک سوالنامہ بھیجا گیاتھا

آئی ایس پی آر کی جانب سے حقائق جاننے کیلئے ملاقات کی پیشکش کی گئی،

پڑھیئے :…. پاکستان کے قبائلی علاقوں میں حقوقِ انسانی کی پوشیدہ خلاف ورزیاں

تمام معاملے کو بی بی سی کے سامنے اٹھایا جارہاہے، بی بی سی نے پیشکش کا

جواب دیئے بغیرسٹوری شائع کی، نشریاتی ادارے نے شمالی وزیرستان واقعہ

پربھی سرکاری موقف کونظراندازکیا۔ میجر جنرل آصف غفور نے کہا بی بی سی

نے خبر شائع کرنے سے پہلے رابطہ کیا مگرموقف لیے بغیر خبر شائع کر دی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجرجنرل آصف غفور کے ٹویٹ، خبر پر پاک فوج کے جواب کے عکس
—————————————————————

اس خبر میں کی گئی اینگلنگ اور اس میں کیے گئے دعوے اس خبر کی ہی نفی

ہیں۔ آئی ایس پی آر کو ایک ایسا سوالنامہ موصول ہوا تھا جس میں پہلے سے ہی

نتائج اخذ کیے گئے تھے۔ آئی ایس پی آر کی جانب سے اس کے جواب میں حقائق

جاننے اور میٹنگ تک کی پیشکش کی گئی تھی لیکن بی بی سی کی ٹیم نے اس

حوالے سے کوئی جواب نہیں دیا۔ خبر میں جس تاریخ کو شمالی وزیرستان میں

آپریشن کی بات کی گئی ہے وہ تو ابھی تک شروع بھی نہیں ہوا۔ بی بی سی کی

خبر میں کسی بھی مصدقہ یا قابل بھروسہ ذرائع کا حوالہ نہیں دیا گیا بلکہ سنی

سنائی باتوں پر خبر گھڑی گئی۔ شائع ہونیوالی بے بنیاد خبر کے حوالے سے بی بی

سی کی انتظامیہ کے آگے یہ معاملہ اٹھایا گیا ہے۔