125

مقبوضہ کشمیر میں 2 شہداء کی نماز جنازہ ادا، بھارتی کرنل سمیت 3 اہلکاروں کی خود کشی

Spread the love

سرینگر(جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک)

مقبوضہ کشمیر کے ضلع شوپیاں میں 2 شہید کشمیری نوجوانوں کی نمازجنازہ ادا،

آبائی قبرستانوں میں سپرد خاک کر دیا گیا، جموں کے علاقہ نگروٹا میں بھارتی

فوجی کرنل نے نامعلوم وجوہات کی بناء پر درخت سے لٹک کر خود کشی کر لی۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے ضلع شوپیاں میں بھارتی فوجیوں کے

ہاتھوں شہید ہونے والے نوجوانوں عابد منظور ماگرے اوربلال احمد بٹ کی میتیں

ان کے آبائی علاقوں نوپورہ پائین اورآرمولہ لاسی پورہ میں پہنچیں توہزاروں لوگ

جمع ہوگئے اور ان کی نمازجنازہ میں شرکت کی۔ دونوں نوجوانوں کو بھارتی

فوجیوں نے درہگڈ میں دس گھنٹے طویل محاصرے اور تلاشی کی ایک کارروائی

کے دوران شہید کرنے کے بعد دعویٰ کیا تھا دونوں مجاہدین تھے اورایک جھڑپ

میں مارے گئے۔ فوجیوں نے آپریشن کے دوران ایک اورشہری جاسم احمد شاہ کو

بھی شہید کیا تھا۔ لوگوں کی بڑی تعداد میں آمد کے باعث نوجوانوں کی نماز جنازہ

کئی بار ادا کی گئی جس کے بعد انہیں اپنے آبائی قبرستانوں میں سپرد خاک کیا گیا۔

شہید نوجوانوں کے اہلخانہ سے اظہار یکجہتی کے لیے لوگوں کی بڑی تعداد میں

ان کے گھر آمد کا سلسلہ جاری ہے۔ دریں اثناء مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی

فوج کے ایک اور اہلکار نے گلے میں پھندا لگا کر خودکشی کرلی اس طرح ایک

ہفتے کے دوران اپنے ہی ہاتھوں اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے والے بھارتی فوج کے

اہلکاروں کی تعداد 3 ہوگئی ہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق جموں کے علاقے

نگروٹا ایریا میں بھارتی فوج کے 16 ویں دستے میں تعینات 27 سالہ یوگیش سنگھ

نے درخت سے لٹک کر خودکشی کرلی۔ جموں پولیس اور بھارتی فوج نے واقعے

کی تحقیقات کے لیے انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی۔ 2 روز قبل بھارتی فوج کے

ایک کرنل روہت شرما نے لیہ ضلع میں خود کو گولی مار کر خودکشی کرلی تھی،

اسی طرح 26 مئی کو بھی ضلع بارہ مولا میں انجینیئرنگ ریجمنٹ-22 کے سپاہی

تیروپتی رائونے سرکاری رائفل سے خود کو گولی مار کر خودکشی کرلی تھی۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی پست ہمتی اور ذہنی دبائو کے باعث خودکشی

اور معمولی جھگڑے پر ساتھی اہلکاروں کو قتل کرنے کے واقعات میں اضافہ ہوتا

جا رہا ہے، 2017 سے تاحال 428 اہلکار خودکشی اورآپس کے جھگڑے میں ہلاک

ہوچکے ہیں۔