77

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ معاشی دہشتگردی،عیدالفطر کے بعد احتجاج کرینگے،اپوزیشن

Spread the love

اسلام آباد/لاہور/حیدرآباد(جنرل رپورٹر) قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز

شریف نے عیدالفطر پر عوام کو ریلیف دینے کی بجائے حکومت کی طرف سے

پٹرول بم گرانے کو معاشی دہشتگردی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ملک کو آئی ایم ایف

میں گروی رکھنے کے اثرات عوام کے سامنے آ رہے ہیں ۔پترولیم مصنوعات کی

قیمتوں میں اضافے پر ردعمل دیتے ہوئے ایک بیان میںانہوں نے کہا کہ دنیا بھر

میں پٹرول سستا ہو رہا ہے لیکن پاکستان میں نااہل نیازی کی وجہ سے پٹرول مہنگا

ہو رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت عملاً ناکام ہو چکی ہے ، عمران خان کا نیا

پاکستان معاشی اور اقتصادی تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا ہے اور اب اپوزیشن

جماعتیں معاشی دہشتگردی کے خلاف بھرپور احتجاج کریں گی ۔شاہد خاقان عباسی

نے کہا ہے کہ ملک میں مہنگائی کا طوفان آگیا، پٹرول کی قیمتیں عالمی منڈی میں

کم ہوئیں لیکن پاکستان میں مسلسل بڑھائی جا رہی ہیں۔ اسلام آباد میں پریس

کانفرنس کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں روپے

کی قدر میں اتنی کمی نہیں ہوئی جتنی موجودہ حکومت میں ہوئی ہے جبکہ بجلی

کی قیمت میں اضافہ کی مثال ملکی تاریخ میں نہیں ملتی۔انہوں نے کہا کہ ہمارے

ملک کا یہ پہلا وزیر اعظم ہے جسے سچ بولنے کی عادت نہیں اور ہمیں اس سے

سچ کی توقع بھی نہیں ہے۔مریم اورنگزیب نے اپنے ردعمل میں کہا کہ جب سے

نالائق اور ووٹ چور حکومت عوام پہ مسلط ہے ہر روز بری خبر سننے کو ملتی

ہے۔ عید سے کچھ دن پہلے پیٹرول کی قیمت میں اضافہ عوام کے ساتھ دشمنی کے

مترادف ہے۔پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ عید سے

پہلے پٹرول کی قیمتوں میں اضافے سے عمران نیازی نے عوام سے خوشیاں چھین

لی ہیں۔پیپلز پارٹی کی رہنما نفیسہ شاہ نے کہا ہے کہ پیٹرول کی قیمت میں اضافہ

رات کی تاریکی میں نہ صرف ڈا کہ ہے بلکہ عوام پر شب خون مارا گیا،جب ادھار

پر پیٹرول مل رہا ہے تو عوام کو ریلیف کیوں نہیں ملتا؟،ریاست کے ہر ستون کے

ساتھ حکومت تصادم کا راستہ اختیار کر رہی ہے، عید کے بعد ہم سڑکوں پر آ

جائیں گے ۔ حیدرآباد میں عاجز دھامرہ کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے

نفیسی شاہ نے کہا کہ پارلیمینٹ میں ہمیں جگہ نہیں دی جا رہی ۔انہوں نے کہا کہ

فاٹا میں سول ملٹری تعلقات بگاڑنے میں حکومت کا بڑا ہاتھ ہے، حکومت نے تیسرا

تصادم میڈیا کے ساتھ کیا ہے، میڈیا سینسر شپ عروج پر ہے۔نفیسہ شاہ نے کہا کہ

حکومت نے عدلیہ سے تصادم کا بھی شوق پورا کر لیا ہے، ایسا تاثر دیا جا رہا ہے

کہ احتساب صرف پیپلز پارٹی کا ہو رہا ہے۔پیپلزپارٹی کی سینئر سینیٹر شیریں

رحمان نے کہا ہے کہ ناکام انقلابی سرکار نے 9 ماہ میں پٹرولیم مصنوعات میں

20 فیصد اضافہ کر کے غریب عوام کی کمر توڑ دی ۔ایک بیان میں انہوں نے کہا

کہ ناکام حکومت نے 9 ماہ میں مہنگائی و بیروزگاری کے علاوہ عوام کو کچھ نہیں

دیا لیکن سونے پہ سہاگہ یہ ہے کہ انقلابی سرکار نے 9 ماہ میں پٹرولیم مصنوعات

کی قیمتوں میں 20 فیصد اضافہ کر کے غریب عوام کی کمر توڑ دی ۔ حالانکہ

عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 3 فیصد کمی ہوئی ہے ۔

سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی نیئر حسین بخاری نے کہا ہے کہ حکمران شہریوں کے

لئے مہنگائی بمبار بن چکے ہیں ،عید الفطر کے موقع پر پٹرولیم مصنوعات کی

قیمتوں میں ہوش ربا اضافہ ’’نئے پاکستان ‘‘میں ہی ممکن ہے۔ نیئر حسین بخاری

نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے

کہا کہ پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ بجٹ سے قبل منی بجٹ ہے۔