113

سینئر صحافی ادریس بختیار مختصر علالت کے بعد انتقال کرگئے

Spread the love

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک )پاکستان کے سینئر صحافی ادریس بختیار مختصر علالت

کے بعد انتقال کرگئے۔ملکی صحافت کا ایک اور روشن ستارہ ٹوٹ گیا، صحافت

کی شان اور رپورٹنگ کا اعتبار بڑھانے والے سینئر صحافی ادریس بختیار

مختصر علالت کے بعد کراچی میں انتقال کرگئے۔وہ گزشتہ دنوں کراچی یونین آف

جرنلسٹ کی افطار پارٹی میں شرکت کیلئے پریس کلب آئے تھے جہاں سے واپسی

پر انہیں دل میں تکلیف کی شکایت پر قومی ادارہ برائے امراض قلب لے جایا گیا

جہاں وہ تین دن تک تشویشناک حالت میں زیر علاج رہے اور گزشتہ رات سوا 8

بجے خالق حقیقی سے جاملے۔ان کی نماز جنازہ بعد نماز فجر گلشن اقبال وسیم باغ

میں ادا کی جائے گی۔ ادریس بختیار کے انتقال پر ملک بھر کی صحافتی برا د ری

میں سوگ طاری ہوگیا ہے۔انہوں نے اپنے صحافتی کیرئیر کا آغاز حیدرآباد سے

کیا، اس کے بعد کراچی آگئے جہاں کچھ عرصہ مقامی خبر رساں ایجنسی میں

بطور رپورٹر کام کیا اور پھر پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا۔طویل رپورٹنگ کیریئر میں

وہ کئی مقامی روزناموں سے وابستہ رہے، ڈان گروپ کے تحت شائع ہونیوالے

جریدے ہیرالڈ کے چیف رپورٹر بھی رہے۔مرحوم مقامی روزناموں کے علاوہ بی

بی سی، وائس آف امریکہ ، ٹیلی گراف کلکتہ اور عرب نیوز سے بھی وابستہ رہے۔

پیشہ ورانہ زندگی کا آخری اور سنہری دور انہوں نے جنگ اور جیو گروپ کیساتھ

گزارا۔ وہ روزنامہ جنگ میں باقاعدگی سے کالم لکھنے کے علاوہ جیو نیوز کی

ایڈیٹوریل کمیٹی کے سربراہ بھی تھے۔صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی، وزیر

اعظم عمران خان ، ملک کی تمام سیاسی جماعتوں کی قیادت ، صحافتی برادری

اور دیگر نے سینئر صحافی ادریس بختیار کے انتقال پر افسو س کا اظہار کرتے

ہوئے مرحوم کے درجات کی بلند ی اور سوگواراہل خانہ کو صدمہ برداشت کرنے

کی طاقت عطا کرنے کی بارگاہ الہٰی میں دعا کی اور کہامرحوم کی صحافتی

خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائینگی ۔