15

اتحادی احتساب کی زد میں آئے تو وزیراعظم بلیک میلنگ پر اتر آئے،بلاول

Spread the love

لاڑکانہ ،رتو ڈیرو(جنرل رپورٹر)چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے لاڑکانہ میں

تعلقہ اسپتال رتوڈیرو کا دورہ کر کے ایچ آئی وی سے متاثرہ بچوں سے ملاقات

کی۔انہوں نے تعلقہ اسپتال رتوڈیرو کا دورہ کیا۔بلاول بھٹو کو ڈاکٹروں کی جانب

سے بریفنگ دی گئی، دریں اثنا بلاول بھٹو نے ایچ آئی وی اسکریننگ کیمپ میں

مریضوں سے ملاقات کی، انھوں نے ایچ آئی وی سے متاثرہ بچوں کے نئے قائم

وارڈ کا بھی دورہ کیا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو

نے کہا کہ ایڈز اور ایچ آئی وی میں فرق ہے، جدید ٹیکنالوجی سے ایچ آئی وی کا

علاج ممکن ہے، ایچ آئی وی سے متاثرہ افراد کو تنہا نہیں چھوڑیں گے، اس

حوالے سے آگاہی مہم چلانی ہو گی۔ ایچ آئی وی کے علاج کیلئے وزیر اعلیٰ سندھ

کو انڈومنٹ فنڈ بنانے کی ہدایت کی ہے، بیماری کی زد میں آنے والوں کو علاج

کی سہولیات پہنچائیں گے تا کہ یہ مرض پھیل نہ سکے۔سندھ واحد صوبہ ہے جس

میں صحت کا بہتر نظا م موجود ہے، ہم مل کر ایچ آئی وی کا مقابلہ کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب کی ویڈیو لیک کیے جانے کو وزیراعظم کا بلیک

میلنگ کا حربہ قرار دیا ہے۔رتو ڈیرو میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین

پیپلزپارٹی نے کہا کہ جب بات پرویز خٹک اور اتحادیوں پر آئی تو وزیراعظم بلیک

میلنگ پر اتر آئے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے دو معاونین خصوصی کے

ذریعے ویڈیو کا میڈیا پر آنا محض اتفاق نہیں ہوسکتا، ہم ویڈیو لیک کرنے پر

وزیراعظم اور ان کے معاونین خصوصی کی مذمت کرتے ہیں۔بلاول بھٹو کا کہنا

تھا کہ پیپلزپارٹی نے کبھی ذاتیات کی سیاست نہیں کی، ہمیں صرف چیئرمین نیب

کے انٹرویو پر اعتراض ہے۔ انٹرویو سے عدالتی حکم کی خلاف ورزی ہوئی ہے،

کسی فرشتے کو بھی چیئرمین نیب بنا دیا جائے تو فرق نہیں پڑے گا کیونکہ آمر کا

بنایا گیا نیب کا قانون ایک کالا قانون ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply