55

ایک ساتھ کئی خوشخبریاں

Spread the love

کراچی،اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن سٹاف رپورٹرز،مانیٹرنگ ڈیسک)

سعودی عرب 3ارب 20 کروڑ مالیت کا ادھار تیل دینے پر تیار

پاکستان کی مشکل معاشی صورتحال میں برادر اسلامی ملک سعودی عرب ایک

بار پھر اہم کردار ادا کرنے کےلئے تیار ہوگیا، ذرائع نے بتا یا ہے سعودی عرب

نے دونوں ممالک کے مابین پہلے سے طے معاہدہ کے تحت پاکستان کو 3 ارب 20

کروڑ ڈالر مالیت کے تیل کی جولائی 2019 سے ادھار پر ترسیل شروع کرنے کی

حامی بھر لی، ادھار تیل ملنے سے روپے کی قدر میں استحکام، ڈالر کی قدر میں

کمی آئے گی، تیل کی بڑھتی قیمتوں کے باعث درآمدی بل میں غیر معمولی اضافہ

بھی قابو میں رہے گا، یہ بات مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے سماجی رابطے

کی ایک ویب سائٹ پر اپنے پیغام جاری پیغام میں بتائی اور اس امر پر سعودی ولی

عہد محمد بن سلمان کا شکریہ بھی ادا کیا۔ مشیر خزانہ کا مزید کہنا تھا برادر ملک

سعودی عرب کے اس اقدام سے پاکستان کی ادائیگیوں کے توازن کی پوزیشن بہتر

ہوگی۔

ڈالر ایک روپیہ سستا، سونے کی قیمت میں بھی 800 روپے تولہ کمی

دوسری طرف گزشتہ روزانٹربینک میں ڈالر کی قدر میں تین پیسے اضافہ ہوا جس

کے بعد ڈالر 151 روپے 95 پیسے پر بند ہوا جبکہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر ایک

روپیہ سستا ہو کر 153 روپے کا ہوگیا۔ انٹربینک میں کاروبار کے آغاز پر ڈالر 8

پیسے مہنگا ہوکر 152 روپے کا ہوگیا تاہم کچھ دیر بعد اس کی قدر میں کمی واقع

ہونا شروع ہوگئی اور ڈالر 2 پیسے کی کمی سے 151 روپے 90 پیسے کا ہوگیا۔

فاریکس ڈیلرز کے مطابق کاروبار کے دوران ڈالر کی قدر میں مزید کمی ہوئی،

انٹربینک میں ڈالر کی قدر میں اتار چڑھاؤ کے بعد اوپن مارکیٹ میں ڈالر ایک

روپیہ سستا ہو کر 153 روپے کا ہوگیا، جبکہ سونے کی قیمت میں بھی گزشتہ روز

800 روپے تولہ کمی آئی،

سٹاک مارکیٹ میں زبردست تیزی، 12 نفسیاتی حدیں بحال، سرمایہ کاری میں 1

کھرب 97 ارب 19 کروڑ روپے سے زائد کا اضافہ

ادھر وفاقی وزارت خزانہ کے اقدامات سے پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں بہتری

آنے لگی ہے اور کاروباری ہفتے کے تیسرے روز بدھ کو مارکیٹ میں زبردست

تیزی رہی، کے ایس ای 100 انڈیکس کی 33500 تا 34600 تک کی 12 نفسیاتی

حدیں بحال ہوگئیں،تیزی کے نتیجے میں سرمایہ کاری مالیت میں 1 کھرب 97 ارب

19 کروڑ روپے سے زائد کا اضافہ، کاروباری حجم گذشتہ روز کی نسبت 32.54

فیصد زائد جبکہ 84.16 فیصد حصص کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔ بدھ

کو مارکیٹ کا آغاز ملے جلے رجحان سے ہوا تاہم بعدازاں حکومتی مالیاتی اداروں

اور مقامی بروکریج ہائوسزسمیت دیگرانسٹی ٹیوشنز کی جانب سے بینکنگ، ٹیلی

کام، توانائی، فوڈز، کیمیکلزاور دیگرمنافع بخش سیکٹرکی نچلی سطح پر آئی ہوئی

قیمتوں پر خریداری کے باعث کے ایس ای 100 انڈیکس دوران ٹریڈنگ 34698

پوائنٹس کی سطح پر بھی دیکھا گیا تاہم اتارچڑھائوکے باعث کے ایس ای 100

انڈیکس مذکورہ سطح پر برقرار نہ رہ سکا، مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای

100 انڈیکس 1195.04 پوائنٹس اضافے سے 34637.14 پوائنٹس پر بند ہوا۔

مجموعی طور پر360 کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا،جن میں سے 303

کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں اضافہ، 50کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں

کمی جبکہ 7 کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔ سرمایہ کاری مالیت

میں 1 کھرب 97 ارب 19 کروڑ 99 لاکھ 40 ہزار 227 روپے کا اضافہ ریکارڈ

کیا گیا، جس کے نتیجے میں سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت بڑھ کر70 کھرب

73 ارب 56 کروڑ 67 لاکھ 54 ہزار 76 روپے ہو گئی۔ بدھ کومجموعی طور پر

20 کروڑ 33 لاکھ 98 ہزار 120 شیئرز کا کاروبار ہوا جو منگل کی نسبت 4 کروڑ

99 لاکھ 71 ہزار 520 شیئرز زائد رہا۔ کے ایس ای 30 انڈیکس 631.19 پوائنٹس

اضافے سے 16512.21 پوائنٹس، کے ایم آئی 30 انڈیکس 2673.88 پوائنٹس

اضافے سے 55866.34 پوائنٹس جبکہ کے ایس ای آل شیئر انڈیکس 711.17

پوائنٹس اضافے سے 25529.10 پوائنٹس پربند ہوا ۔

کویتی کمپنی پاکستان میں تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کے لیے 98 لاکھ

ڈالرز کی سرمایہ کاری کی خواہاں ، معاہدہ طے

ادھر کویتی کمپنی پاکستان میں تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کے لیے 98 لاکھ

ڈالرز کی سرمایہ کاری کرے گی۔ پیٹرولیم ڈویڑن کی جانب سے جاری اعلامیہ

کے مطابق کویتی کمپنی کی ذیلی کمپنی پنجاب اور خیبرپختونخوا میں تیل و گیس

تلاش کرے گی، اس ضمن میں دونوں ممالک کے درمیان تیل و گیس کے ذخائر کی

تلاش کے لائسنس اجراء معاہدے پر دستخط بھی ہو گئے ہیں۔ وزارت پیٹرولیم کے

مطابق ملک میں تیل و گیس کی تلاش پر محنت ضرور رنگ لائے گی، معاہدے کو

عملی جامہ پہنانے سے غیر ملکی سرمایہ کاری کو وسعت ملے گی۔ قبل ازیں وزیر

اعظم عمران خان سے کویت پیٹرولیم کے سی ای او نے وفد کی صورت میں

ملاقات کی اور پاکستان میں کاروباری سرگرمیاں بڑھانے کی خواہش کا اظہار کیا

کرنے سمیت پا کستا ن میں تیل و گیس کی تلاش کے منصوبے سے آگاہ کیا۔وزیر

اعظم عمران خان نے کویت پیٹرولیم کے سربراہ اور وفد کا خیرمقدم کیا اور کہا

حکومت کویت پیٹرولیم کی کاروباری آ پر یشنز میں معاونت جاری رکھے گی۔

حکومت تیل و گیس کے شعبے کے لیے نئی پیٹرولیم پالیسی پر کام کر رہی ہے،

جس میں غیر ملکی کمپنیوں کو مراعات دینے سمیت سرمایہ کاری کی راہ میں

رکاوٹیں دور کی جا رہی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply