198

سٹاک مارکیٹ میں تیزی، 33200 پوائنٹس کی نفسیاتی حد بحال، سرمایہ کاری میں 25 ارب روپے کا اضافہ

Spread the love

کراچی (جے ٹی این آن لائن اکنامک رپورٹر)

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروباری ہفتے کے پہلے روز پیرکواتارچڑھائو کے

بعد تیزی رہی اور کے ایس ای 100 انڈیکس کی 33200 کی نفسیاتی حد بحال ہو

گئیں، تیزی کے نتیجے میں سرمایہ کاری مالیت میں 24 ارب 87 کروڑروپے سے

زائد کا اضافہ، کاروباری حجم 3.11فیصد زائد جبکہ 60.34 فیصد حصص کی

قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

ملکی کرنسی مار کیٹو ں میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی روپے کی بے

قدری، فروخت کے دبائواور پرافٹ ٹیکنگ کے سبب کاروبار کا آغاز 800 پو ا

ئنٹس کی مندی سے ہوا ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای 100 انڈیکس

32354 پوائنٹس کی نچلی سطح پر بھی ریکارڈ کیا گیا تاہم بعدازاں حکومتی مالیاتی

اداروں و مقامی بروکریج ہائوسزسمیت دیگر انسٹی ٹیوشنز کی جانب سے توانائی،

فوڈز، کیمیکلز، سیمنٹ اور دیگرمنافع بخش سیکٹرکی نچلی سطح پر آئی ہوئی

قیمتوں پر خریداری کے باعث مندی کے اثرات زائل ہو گئے اور کے ایس ای 100

انڈیکس دوران ٹریڈنگ ایک موقع پر 33322 پوائنٹس کی سطح پر بھی دیکھا گیا

تاہم اتارچڑھائوکے باعث کے ایس ای 100 انڈیکس مذکورہ سطح پر برقرار نہ رہ

سکا، ما رکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس 83.92 پوائنٹس اضافے

سے 33250.54 پوائنٹس پر بند ہوا،

مجموعی طور پر343 کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا، جن میں سے207

کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں اضافہ، 122 کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں

کمی جبکہ 14 کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔ سرمایہ کاری مالیت

میں 24 ارب 87 کروڑ 12 لاکھ 22ہزار315 روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا،جس

کے نتیجے میں سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت بڑھ کر68 کھرب 36 ارب 14

کروڑ 90 لاکھ 47 ہزار256 روپے ہو گئی۔

پیرکومجموعی طور پر16 کروڑ 54 لاکھ 85 ہزار 500 شیئرز کا کاروبار ہوا جو

جمعہ کی نسبت 7 کروڑ51 لاکھ 12 ہزار 230 شیئرز زائد ہیں۔