imran khan 143

کشمیر پر غیرقانونی قبضہ مسلم مخالف بڑی حکمت عملی کا حصہ،عمران خان

Spread the love

اسلام آباد (جے ٹی آین آن لائن سٹاف رپورٹر) کشمیر غیرقانونی قبضہ

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارت میں مسلمانوں کی نسل کشی سے

متعلق عالمی میڈیا پر رپورٹس تشویشناک ہیں، دنیا سنگین معاملے کو خطرے کی

گھنٹی سمجھے، مقبوضہ وادی پر غاصبانہ قبضہ بھی مسلمانوں کے خلاف اسی

بڑے منصوبے کا حصہ ہے جبکہ بھارت نے اپنی ہی ریاست اسام میں عشروں

سے مقیم ہزاروں مسلمانوں کو غیر قانونی تارکین وطن قرار دے کر مزید جلتی پر

تیل ڈالنے کا اقدام اٹھا کر مقبوضہ جموں و کشمیر کو آئین میں حاصل خصوصی

حیثیت ختم کرکے عالمی قوانین کی عدم پاسداری کی تصدیق بھی کر دی ہے-

یہ بھی پڑھیں: کشمیر پالیسی کا فیصلہ کن وقت آگیا، وزیراعظم عمران خان

بھارتی حکومت نے شہریت سے متعلق رجسٹریشن لسٹ جاری کرتے ہوئے 19

لاکھ 6 ہزار 657 افراد کو بھارتی شہریت سے محروم کر دیا، ان افراد میں بیشتر

بنگلہ دیشی مسلمان ہیں جنہیں اب زمینیں، ووٹ ڈالنے کا حق اورآزادی چھین کر

حراستی مرکز یا ملک بدر کر دیا جائے گا۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا مودی سرکار نے اپنے غیرقانونی و غیرآئینی

اقدام کیخلاف ردعمل سے بچنے کیلئے ریاست اسام میں 80 ہزار سیکورٹی اہلکار

تعینات کرکے دفعہ 144 جبکہ اس سے قبل مقبوضہ جموں و کشمیر میں 5 اگست

2019 سے آج تک حریت پسند کشمیری مسلم عوام کے غیض و غضب سے بھی

خود کو کبوتر کی طرح بلی سے بچنے کیلئے آنکھیں بند کرکے آج تک کرفیو نافذ

کر رکھا ہے۔

ریاست اسام میں اقدام انتہا پسند ہندؤں کے متعصبانہ مطالبات کا نتیجہ، میڈیا

میڈیا رپورٹ کے مطابق فہرست آسام میں انتہا پسندوں کے مطالبات کے بعد تیار

کی گئی جو ریاست میں مسلمان تارکین وطن کی آمد سے ہندو اکثریت کے اقلیت میں

تبدیلی کے امکان سے خائف تھے۔

کشمیر غیرقانونی قبضہ

Leave a Reply