76

وزیر اعظم نے چیف الیکشن کمشنر کیلئے تین نام تجویز کر دیئے

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) چیف الیکشن کمشنر سردار رضا گزشتہ روز اپنے عہدے کی مدت پوری

کرکے ریٹائر ہو گئے دوسری طرف وزیر اعظم عمران خان نے چیف الیکشن کمشنر کے لئے تین نام

تجویز کر دیئے ہیں ۔حکومت کی جانب سے موجود سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب فتح محمد کا

نام دیا گیا، اس کے علاوہ چیف الیکشن کمشنر کے لئے فضل عباس میکن اور عارف خان کے نام بھی

تجویز کئے گئے ہیں یا۔ الیکشن کمیشن کے بلوچستان اور سندھ سے ارکان تاحال تعینات نہیں ہو سکے۔

اس سے پہلے قائد حزب اختلاف شہباز شریف چیف الیکشن کمشنر کے لیے پہلے ہی تین نام تجویز کر

چکے ہیں چیف الیکشن کمشنر اور ممبران کی تعیناتی کے لیے پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس 9 دسمبر کو

طلب کرلیاگیا،اجلاس کی صدارت چیئرپرسن شیریں مزاری کریں گی۔ اجلاس پارلیمنٹ ہاوس میں

ڈھائی بجے ہو گا،اجلاس میں نئے چیف الیکشن کمشنر کے لیے 6 ناموں کا جائزہ لیا جائے گا،یہ 6 نام

وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر نے تجویز کیے ہیں،پارلیمانی کمیٹی سندھ اور بلوچستان سے 2 اراکین

کے تقرر کے لیے 12 اراکین کے ناموں پر بھی غور کرے گیدریں اثنا اسلام آباد ہائی کورٹ نے

حکومت کو الیکشن کمیشن اراکین کے تقرر کا معاملہ 10 روز میں حل کرنے کی ہدایت کر دی۔ اسلام

آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے الیکشن کمیشن کے دو ممبران کی تعیناتی کے خلاف

درخواست پر سماعت کی۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے استدعا کی پارلیمانی کمیٹی کا ساتواں اجلاس

گزشتہ روز ہوا، معاملے کے حل کے لیے مزید وقت دیا جائے۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے

ریمارکس دیئے کہ سب کچھ منتخب نمائندوں کے ہاتھ میں % ے %C%ثھ 8C9%D ں8%C ۈ%م858%D7ل %9%دAA8Մ ٍی
%0A
%9%کBABԈ%%D ًا 928с %8B%6%D94ڈی %DCٹ %4%D93وا %D7%8%بׯ DB1%A8%8%D99ىر ن ڪہ ީ %B8%C%Cمنٹ کو مضبوط دیکھنا چاہتے،

چیف الیکشن کمشنر بہت اہم عہدہ ہے، حکومت اور اپوزیشن دونوں کو معاملہ حل کرنا چاہیے، یہاں پر

ماضی میں کچھ چیزیں ٹھیک نہیں ہوئیں جو ہمارے سامنے ہیں، وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کی ذمہ

داری ہے کہ پارلیمنٹ کی بالادستی قائم کریں، جس کے بعد مقدمے کی مزید سماعت 17 دسمبر تک

ملتوی کر دی گئی۔دوسری طرف قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے وزیراعظم عمران خان کو ایک

اور خط بھیجا ہے جس میں انہوں نے چیف الیکشن کمشنر کی جلد از جلد تقرری پر زور دیا ہے۔

شہبازشریف نے خط میں کہا گیا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر کی 5 سال کی آئینی مدت گزشتہ روز

مکمل ہو چکی ہے، چیف الیکشن کمشنر، ایک یا زائد ارکان کا تقرر نہ ہوا تو الیکشن کمشن غیرفعال

ہوجائے گا جب کہ آئین کے آرٹیکل 213 ٹو اے کا تقاضا ہے کہ وزیراعظم اپوزیشن لیڈر سے

مشاورت کرے۔شہبازشریف نے وزیراعظم عمران خان کو لکھے گئے خط میں کہا کہ میری دانست

میں آئین کے تحت آپ کو مشاورت کا یہ عمل بہت عرصہ قبل شروع ہونا چاہیے تھا تاہم الیکشن کمشن

جیسے آئینی ادارے کو غیرفعال ہونے سے بچانے کی کوشش میں دوبارہ مشاورت کا عمل شروع

کررہا ہوں، امید ہے کہ ان افراد کی اہلیت کی آپ پذیرائی کریں گے اور قانون کے مطابق زیرغور

لائیں گے، مزید وضاحت یا معلومات درکار ہوں تو آپ کو فراہم کردی جائیں گی۔

چیف الیکشن کمشنر

Leave a Reply