Imran Khan Prim minister Pakistan 56

ریلوے کی اراضی فروخت کرکے اسے خسارے سے نکالیں گے،عمران خان

Spread the love

نوشہرہ ،پشاور(سٹاف رپورٹر ) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ موجودہ

حکومت کیلئے سب سے بڑا چیلنج پاکستان کو فلاحی ریاست بنانا ہے۔ میری

حکومت کوئی سفارشی نظام نہیں لائے گی۔ پاکستان سیٹزن پورٹل پر کرپشن سے

متعلق شکایت کریں، میرا کام ہے اسے دیکھنا۔نوشہرہ میں ڈرائی پورٹ کی افتتاحی

تقریب سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ احساس پروگرام کے تحت ہم نچلے طبقے

کیلئے کارڈ بنا رہے ہیں، اس کے ذریعے انھیں پیسے بھی ملیں گے اور وہ اشیائے

ضروریہ بھی خرید سکیں گے۔ اس کے علاوہ پورے پاکستان کے غریب گھرانوں

کو صحت انصاف کارڈ ملے گا۔ وزیر اعظم نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت عوام

کی فلاح وبہود ملک خداداد کی ترقی وفلاح کیلئے ہرممکن اقدامات اٹھارہی ہے،

2020 پاکستان کیلئے بہت اہم ہے ،اسی سال 50لاکھ گھر بناکر پاکستان کے چھت

سے محروم عوام کو آسان اقساط پر اپنی چھت فراہم کریں گے ،نوشہرہ اضاخیل

ڈرائی پورٹ سے تجارت بڑھے گی ،ملک کے نوجوانوں کو نوکریاں ملیں گی جس

سے بیروزگاری کے خاتمے میں بھی مدد ملے گی، پاکستان کی 70سالہ تاریخ میں

ریلوے کی ترقی کیلئے وہ اقدامات نہیں اٹھائے گئے جس کی ضرورت تھی ،یہی

وجہ تھی کہ ریلوے کوسالانہ اربوں روپے کے خسارے کا سامنا پڑتاتھا ،ریلوے

کے خسارے کی اصل وجہ سابقہ حکومتوں کی لوٹ مار کرپشن تھا جس سے

ریلوے نے سالانہ اربوں روپے کانقصان اٹھانا پڑا ۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے

خطاب میں کہا کہ موجودہ حکومت عوام کی فلاح وبہود ملک خداداد کی ترقی

وفلاح کیلئے ہرممکن اقدامات اٹھارہی ہے اور اب وہ وقت آچکا ہے کہ پاکستان کو

ایک فلاحی ریاست بنانے کیلئے یک سوہواجائے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ

حکومت نے 190ارب روپے احساس پروگرام پرخرچ کردئیے جس میں پچاس ہزار

نوجوانوں کو اعلیٰ تعلیم کے حصول کیلئے سکالرشپس دئیے جائیں گے ۔انہوں نے

مزید کہا کہ سابقہ حکومتوں نے ریلوے کی اراضی قبضہ مافیا سے واگزار کرانے

کیلئے کوئی خاطرخواہ اقدامات نہیں کئے تھے لیکن موجودہ حکومت نے ریلوے

کی کئی ایکڑ اراضی قبضہ مافیا سے واگزار کرائی اور یہی اراضی آنے والے

وقتوں میں کمرشل مقاصد کیلئے استعمال کی جائے گی جس سے نہ صرف ریلوے

کی آمدنی میں اضافہ ہوگا بلکہ ریلوے کو خسارے سے بھی نکالاجائے گا۔انہوں

نے کہا کہ محکمہ ریلوے کی ترقی کیلئے ریلوے پرتوجہ دی جارہی ہے کیونکہ

بین الاقوامی سطح پرتجارت کا ذریعہ ریلوے ہے اسی لئے بیرون ممالک کی

سڑکیں زیادہ عرصہ صحیح سلامت رہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوشہرہ اضاخیل

ڈرائی پورٹ کے قیام سے پشاو رتاکراچی کا 1872 کلومیٹرکافاصلہ صرف 8

گھنٹوں میں طے ہوگا اور یہ منصوبہ موجودہ حکومت کی کاوشوں سے 50کروڑ

70لاکھ روپے کی رقم سے انتہائی قلیل ایک سال کے عرصہ میں مکمل کردیاگیا

جو کہ موجودہ وفاقی حکومت کی بہترین کارکردگی کا جیتا جاگتا ثبوت ہے ۔

وزیراعظم نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پچھلی حکومتوں میں فیصلے

ایک خاص مخصوص طبقے کیلئے کئے جاتے تھے جس میں تعلیم اور صحت

جیسی بنیادی سہولیات عام آدمی کی دسترس سے باہر عدالتوں میں طاقتور کیلئے

الگ اور کمزور طبقے کیلئے الگ قانون ہواکرتاتھا لیکن موجودہ حکومت نے یہ

تمام تفرقات ختم کردئیے عوام اپنی شکایات پاکستان سیٹزن پورٹل سیل کے ذریعے

اجاگر کریں انہی شکایات پر میں ازخود ایکشن لے کرکاروائیاں کرتاہوں انہوں نے

کہا کہ صحت ہرشہری کا حق ہے اور یہی صحت کارڈ پاکستان کے ہرغریب

گھرانے کو دیاجائے گا تاکہ وہ اپنے اہل وعیال کو بہتر سے بہتر طبی سہولیات

فراہم کریں۔ انہوں نے کہا کہ 2020 پاکستان کیلئے بہت اہم ہے اور اسی سال

50لاکھ گھر بناکر پاکستان کے چھت سے محروم عوام کو آسان اقساط پر اپنی چھت

فراہم کریں گے وزیر اعظم عمران خان نے اضاخیل ڈرائی پورٹ کا افتتاح کر دیا

منصوبہ پاکستان ریلویز نے 50 کروڑ 70 لاکھ روپے کی لاگت سے ایک سال میں

مکمل کیا ۔، وزیر دفاع پرویز خٹک ‘ وزیر ریلوے شیخ رشید احمد اور وزیر اعلیٰ

خیبر پختونخوا بھی وزیر اعظم عمران خان کے ہمراہ تھے ۔ ڈرائی پورٹ پر

سامان کی لوڈنگ اور ان لوڈنگ کی جدید سہولیات دستیاب ہیں۔ ڈرائی پورٹ

نوشہرہ شہر سے 8 کلو میٹر دور مین جی ٹی روڈ پر واقع ہے ‘ رنگ روڈ پشاور

سے براستہ سڑک بھی ڈرائی پورٹ تک رسائی حاصل ہوگی۔ حکومت کی

لاجسٹیکس کو فروغ دینے کی پالیسی کے مطابق پورٹ معیشت میں نمایاں کردار

ادا کرے گی ‘ کراچی بندرگاہ سے فریٹ کی نقل و حمل اور سامان کی براستہ

سڑک افغانستان منتقلی کی جا سکے گی۔

عمران خان

Leave a Reply