Watermelon jtnonline 94

چین میں پیپینو “تربوز” کی کاشت غربت میں کمی کا باعث بن گئی

Spread the love

کنمنگ (جتن آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک)
چین کے جنوب مغربی علاقے یننان کے ایک پتھریلے صحرائی علاقے کے گائوں لوہوا میں ہر طرف پیپینو “تربوز” پھیلے ہوئے ہیں، یہ سخت موسم کے خلاف مقامی لوگوں کی جدوجہد اور بہتر زندگی کی طرف کامیابی کا ایک نتیجہ ہے۔ اس پتھریلے صحرائی لوہوا گائوں میں ماضی میں فضل اگانا بہت مشکل تھا۔ لوگوں نے یہاں پیپینو”تربوز” کی کاشت کا انتخاب کیا جو اس زمین کیلئے موزوں ہے اور یہ اچھی قیمت پر فروخت ہو سکتا ہے۔ لیکن جنوبی افریقہ کا پیپینو تربوز چینی صارفین کیلئے نامعلوم(اجنبی) تھا۔ کسی نے بھی کاشت کے بعد یہ پھل نہیں خریدا- مزید پڑھیں

پھل جو شہد اور کھیرے کے ذائقے کا مجموعہ

اچھی خبر آئی اور 2015 کے اختتام سے صورتحال تبدیل ہو گئی۔ اسے غربت میں کمی کی مہم کے حصے کے طور پر فروغ دیا گیا اس سے پیپینو “تربوز” کی مقبولیت اور فروخت بڑھانے میں مدد ملی۔ یہ پھل جو شہد اور کھیرے کے ذائقے کا مجموعہ ہے، غذائیت کے لحاظ سے بھر پور ہے اور اسے چینیوں نے بتدریج قبول کر لیا جنہوں نے اپنی خوراک کیلئے اس پر توجہ کی۔

صنعت سے 40 سو سے زیادہ خاندان وابستہ

اس وقت تک ڑی جے کو قصبے میں پیپینو “تربوز” کی کاشت 48 سو ہیکٹر رقبے تک پہنچ چکی ہے۔ اس صنعت میں 40 سو سے زیادہ خاندان ملوث ہیں۔ پیپینو “تربوز” کی کاشت کی صنعت نے ڑانگ کے خاندان اور اس کے دیگر ساتھیوں کو غربت سے نجات میں مدد کی ہے۔ ڑانگ کے خاندان کی رواں سال 2019 کے آخرتک متوقع آمدن 1 لاکھ یوآن (14215 ڈالر) تک پہنچ جائے گی۔

Leave a Reply